Thursday , January 17 2019

معلق اسمبلی کی صورت میں مہا کوٹمی کو ایک گروپ تصور کیا جائے

ٹی آر ایس سے ایک بھی نشست اضافی ملنے پر تشکیل حکومت کا موقع دیا جائے ‘ گورنر سے نمائندگی

حیدرآباد 10 ڈسمبر ( سیاست نیوز) پیپلز فرنٹ قائدین نے راج بھون پہنچ کر گورنر نرسمہن سے ملاقات کی اور احتیاطی طورپر ایک یادداشت پیش کرکے مہاکوٹمی کو ایک پارٹی تصور کرنے کا مطالبہ کیا اور مشترکہ اقل ترین منشور بطور ثبوت پیش کیا ۔ ٹی آر ایس سے پیپلز فرنٹ کو ایک بھی زیادہ نشست ملنے پر حکومت کی تشکیل کیلئے پہلے مدعو کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے سپریم کورٹ کے فیصلے کا بھی حوالہ پیش کیا ۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی اُتم کمار ریڈی ، تلنگانہ تلگودیشم صدر ایل رمنا تلنگانہ جنا سمیتی سربراہ پروفیسر کودنڈارام سی پی آئی اسٹیٹ سکریٹری چاڈا وینکٹ ریڈی قائد اپوزیشن کونسل محمد علی شبیر ورکنگ پریسیڈنٹس پردیش کانگریس ملو بٹی وکرامارک ، محمد اظہر الدین کے علاوہ دوسرے قائدین نے گورنر سے ملاقات کی اور یادداشت پیش کی۔ بعد ازاں میڈیا سے بات کرتے ہوئے اُتم کمار ریڈی نے کہاکہ انتخابات سے قبل کانگریس ، تلگودیشم ، سی پی آئی اور ٹی جے ایس کے درمیان اتحاد ہوا ہے ۔ حلیف جماعتوں کے درمیان نہ صرف نشستوں کی تقسیم ہوئی ہے بلکہ چار جماعتوں نے مشترکہ انتخابی منشور جاری کرتے ہوئے اس کو الیکشن کمیشن کے حوالے بھی کیا ، ہمیں یقین ہے کہ ریاست میں پیپلز فرنٹ کو حکومت کی تشکیل کیلئے مکمل اکثریت حاصل ہوگی لیکن ریاست میں قیاس آرائیاں جاری ہیں کہ معلق اسمبلی بھی وجود میں اسکتی ہے جس کے پیش نظر مہاکوٹمی میں شامل تمام جماعتوں کے قائدین نے گورنر سے ملاقات کرکے بتایا کہ مہاکوٹمی میں شامل حلیف جماعتوں کا ماقبل انتخابات اتحاد ہے ۔ اگر ٹی آر ایس سے ایک بھی زائد نشست پر پیپلز فرنٹ کے اتحاد کو زیادہ کامیابی ملتی ہے تو ایسی صورت میں گورنر مہاکوٹمی کو ایک ہی تصور کریں اور تشکیل حکومت کی دعوت ، مہاکوٹمی کو ہی دیں ۔ انہوں نے انتخابی قواعد اور سپریم کورٹ کے فیصلوں کا بھی حوالہ دیا ہے ۔ اتم کمار نے کہا کہ ہم نتائج کے دن گورنر سے ملاقات کرسکتے تھے ۔ تاہم مصروفیات کے باعث گورنر کا وقت ملتا یا نہیں سوچ کر آج ملاقات کی اور ساتھ ہی کامیاب ہونے والے ارکان اسمبلی کو حفاظت فراہم کرنے کا بھی مطالبہ کرچکے ہیں ۔ گورنر نے ہماری یادداشت پر مثبت ردعمل کا اظہار کیا ہے ہمیں امید ہے گورنر غیر جانبدار رہ کر کام کریں گے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT