Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / معین گرویزی کے مجموعہ کلام میں جنگ عظیم ، تحریک آزادی اور تلنگانہ مسلح جدوجہد کی عکاسی،مجموعہ کلام گل سرسبز اور لالہ و گل کا رسم اجراء ، پدم شری مجتبیٰ حسین ، بیگ احساس و دیگر کا خطاب

معین گرویزی کے مجموعہ کلام میں جنگ عظیم ، تحریک آزادی اور تلنگانہ مسلح جدوجہد کی عکاسی،مجموعہ کلام گل سرسبز اور لالہ و گل کا رسم اجراء ، پدم شری مجتبیٰ حسین ، بیگ احساس و دیگر کا خطاب

حیدرآباد۔15فبروری(سیاست نیوز) کاروان اُردو کے زیر اہتمام آزادی سے قبل کے اُردو شاعرمعین رفعت گردیزی مرحوم کے مجموعہ کلام گلِ سرسبز اور لالہ وگل پر تبصرے کے لئے ایک ادبی نشست کا اُردو ہال حمایت نگر میں منعقد ہوئی ۔ پروفیسر بیگ احساس نے صدارت کی ۔ جس میں مہمان ِ خصوصی کے طور پرپدم شری جناب مجتبیٰ حسین ‘ جناب سید عزیز پاشاہ سابق رکن پارلیمان ‘ماہر اقبالیات جنا ب مضطر مجاز‘ شاعر رحمن جامی ‘اور جناب حمید الظفرکے علاوہ معین رفعت گردیزی مرحوم کے فرزند ڈاکٹر عرفان معین ( مقیم امریکہ) نے حصہ لیا۔ جناب ایم ایم یوسف سابق ملازم آربی آئی‘ ڈاکٹرغوث الدین‘جناب احمد صدیقی مکیش کے علاوہ شہر حیدرآباد کی دیگر معزز شخصیتوں نے بھی شرکت کی جبکہ ممتا ز صحافی عابد صدیقی نے ادبی نشست کی کاروائی چلائی۔اس موقع پر پدم شری مجتبیٰ حسین کے ہاتھوں مذکورہ مجموعہ کلام کی رونمائی عمل میںآئی۔  صدارتی خطاب کے میں پروفیسر بیگ احساس نے کہاکہ مرحوم معین گردیزی ایسے دور کے شاعر ہیں جس دور میںشاعر ہونے پر فخر محسوس کیاجاتا ہے ۔ 40اور42کے دورمیں گفتگو بھی اشعار کے ذریعہ ہوتی تھی اور بیت بازی تو عام تھی مگر آج کے دور میں شعر کہے بغیر ہی شاعر مجموعہ کلام کی اشاعت کروالیتا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ مرحوم کی شاعری تاخیر سے ہی سہی مگر منظر عام پر آئی ۔ پدم شری مجتبیٰ حسین نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہاکہ والدین دعائیںمانگتے ہیںان کی اولاد فرمانبردار نکلے بالخصوص اُردو ادیب اور شعراء کا تو برا حال ہے ‘ نئے دور کے لوگ اُردو کااحساس بھی رکھنا نہیںچاہتے ‘ کلام کی اشاعت تو دور کی بات ہے ۔انہوں نے کہاکہ دوسری جنگ عظیم ‘ آزاد ی کی تحریک اور تلنگانہ مسلح جدوجہد کے اثرات مرحوم کے مجموعہ کلام میںصاف طور پر دیکھائی دیتے ہیں۔انہوں نے مرحوم کی شاعری کو پختہ اور پابند بھی قراردیا۔جناب مجتبیٰ حسین نے ڈاکٹر معین رفعت کو مشورہ دیا کہ وہ اپنے والد کے تمام مجموعہ کلام کو یکجا کرتے ہوئے کلیات کی شکل دیں اور اسکو عام کریں۔ جناب سید عزیز پاشاہ ، جناب مضطر مجاز اور جناب رحمن جامی نے بھی مخاطب کیا ۔

TOPPOPULARRECENT