Wednesday , December 12 2018

مغربی بنگال اسمبلی میں ریل کرایوں میں اضافہ کیخلاف قرارداد منظور

کولکتہ ۔ 23 جون (سیاست ڈاٹ کام) مغربی بنگال اسمبلی نے آج ریل کرایوں میں اضافہ کے خلاف ایک قرارداد پیش کی اور مطالبہ کیا کہ مرکزی حکومت کرایوں میں اضافہ کے فیصلہ کو فوری واپس لے۔ قرارداد پیش کرتے ہوئے ریاستی وزیر برائے پارلیمانی امور پارتھا چٹرجی نے کہا کہ ریل کرایوں میں اس حد تک اضافہ کی توقع نہیں تھی لہٰذا ہم مرکزی حکومت کے اس فیصلہ

کولکتہ ۔ 23 جون (سیاست ڈاٹ کام) مغربی بنگال اسمبلی نے آج ریل کرایوں میں اضافہ کے خلاف ایک قرارداد پیش کی اور مطالبہ کیا کہ مرکزی حکومت کرایوں میں اضافہ کے فیصلہ کو فوری واپس لے۔ قرارداد پیش کرتے ہوئے ریاستی وزیر برائے پارلیمانی امور پارتھا چٹرجی نے کہا کہ ریل کرایوں میں اس حد تک اضافہ کی توقع نہیں تھی لہٰذا ہم مرکزی حکومت کے اس فیصلہ کی مذمت کرتے ہیں اور مطالبہ کرتے ہیں کہ اضافہ کا فیصلہ واپس لیا جائے۔ یاد رہے کہ صرف تین روز قبل مرکزی حکومت نے مسافر کرایوں میں 14.2 فیصد اور مال بردار کرایوں میں 6.5 فیصد کا بے تحاشہ اضافہ کیا تھا جس کے بعد یقینی طور پر ان کا منفی اثر اشیائے ضروریہ کی قیمتوں پر پڑے گا اور وہ مزید مہنگی ہوجائیں گی۔ اس طرح کروڑوں ہندوستانیوں کے ’’اچھے دن‘‘ برے دنوں میں تبدیل ہوجائیں گے۔ پیش کردہ قرارداد کی ترنمول کانگریس ایم ایل اے اور وزیر شہری ترقیات فرہاد حکیم، کانگریس ایم ایل اے امیت مشرا، منوج چکرورتی، ایس یو سی آئی کے ترون ناسکر اور جی جے ایم کے ہرکا بہادر چیتری نے تائید کی جبکہ ریاست کے قائد اپوزیشن اور سی پی آئی (ایم) ایم ایل اے کانتا مشرا نے بھی ریل کرایوں میں اضافہ کے خلاف پیش کی جانے والی قرارداد کی تائید کی۔ دوسری طرف سی بی آئی (ایم) ایم ایل اے انیس الرحمن کے قراردادوں میں ترمیم کرتے ہوئے ایک جملہ کا اضافہ کی تجویز پیش کی۔ ’’ریل کرایوں میں اضافہ غیرجمہوری اور غیر پارلیمانی اقدام ہے‘‘، جسے منظور کرلیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT