Friday , November 17 2017
Home / Top Stories / مغربی بنگال میں آج دوسرے مرحلہ کی رائے دہی

مغربی بنگال میں آج دوسرے مرحلہ کی رائے دہی

اسمبلی کے 56 حلقوں میں 383 امیدوار ، سکیورٹی کے سخت انتظامات
کولکاتا ۔ 16 ۔ اپریل : ( سیاست ڈاٹ کام ) : مغربی بنگال میں 56 اسمبلی حلقوں کے لیے دوسرے مرحلہ کی رائے دہی کل اتوار کو مقرر ہے ۔ چیف منسٹر ممتا بنرجی کو الیکشن کمیشن کی نوٹس وجہ نمائی اور ٹی ایم سی لیڈر انوبرتا مونڈل پر الیکشن کمیشن کی کڑی نظر کے درمیان دوسرے مرحلہ کی رائے دہی شروع ہونے جارہی ہے جس میں 1.2 کروڑ سے زائد رائے دہی 383 امیدواروں کی سیاسی قسمت کا فیصلہ کریں گے ۔ ان میں 33 خاتون امیدوار شامل ہیں ۔ الیکشن کمیشن نے 14 اپریل کو انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی بناء ممتا بنرجی کو نوٹس وجہ نمائی جاری کی تھی ۔ اس پر فوری ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ممتا بنرجی نے الیکشن کمیشن کو ان کے خلاف کارروائی کا چیلنج کیا اور کہا کہ ریاستی عوام 19 مئی کو اس نوٹس کا جواب دیں گے ۔ واضح رہے کہ 19 مئی کو انتخابی نتائج کا اعلان کیا جائے گا ۔ اس دوران بربھوم بھی مرکز توجہ بنا ہوا ہے ، جہاں الیکشن کمیشن متنازعہ ترنمول کانگریس لیڈر انوبرتا مونڈل کو چوبیس گھنٹے سنٹرل پولیس فورس کی نگرانی میں رکھا ہے۔

ان دونوں معاملات میں کمیشن نے اپوزیشن کی شکایت پر کارروائی کی ۔ بربھوم میں سات اسمبلی حلقوں کو بائیں بازو انتہا پسندی سے متاثرہ قرار دیا گیا ہے ، جہاں 7 بجے صبح تا 4 بجے شام رائے دہی ہوگی ۔ ان علاقوں میں سیکوریٹی کے غیرمعمولی انتظامات کئے گئے ہیں ۔ دیگر حلقوں میں رائے دہندوں کو دو گھنٹے زائد یعنی 6 بجے شام تک حق رائے دہی سے استفادہ کا موقع رہے گا ۔ الیکشن کمیشن نے 13,600 کے منجملہ 2909 پولنگ اسٹیشنس کو حساس قرار دیا ہے ، جہاں غیر جانبدارانہ انتخابات کے انعقاد کو یقینی بنانے موثر اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ سب سے زیادہ حساس پولنگ بوتھس اضلاع مالڈہ اور اتردیناجپور میں واقع ہیں ۔ رائے دہندوں کی شکایات کی بنیاد پر الیکشن کمیشن نے 16,315 کی حساس رائے دہندوں کی حیثیت سے نشاندہی کی، جن میں اکثریت مالڈہ اور بربھوم اضلاع کی ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT