Wednesday , September 26 2018
Home / سیاسیات / مغربی بنگال میں زیرو سمجھی جانے والی بی جے پی کو حیران کن نتائج کی توقع

مغربی بنگال میں زیرو سمجھی جانے والی بی جے پی کو حیران کن نتائج کی توقع

کولکتہ ۔ 16 ۔ اپریل (سیاست ڈاٹ کام) جسطرح کرکٹ کی دنیا میں افغانستان ، نیدرلینڈ اور بنگلہ دیش کی ٹیموں کو کمزور سمجھا جاتا ہے بالکل اسی طرح سیاسی سطح پر بی جے پی کو مغربی بنگال میں نو وارد کہا جاتا ہے حالانکہ قومی سطح پر پارٹی کا کافی دبدبہ ہے اور وزارت عظمیٰ کے امیدوار نریندر مودی کا تعلق بھی اسی پارٹی سے ہے لیکن بی جے پی کو اب کی بار یہ توقع ہے کہ وہ مغربی بنگال میں انتخابی نتائج میں ’’حیرت کا عنصر‘‘ ضرور شامل کرے گی اور ساری قیاس آرائیاں دھری کی دھری رہ جائیں گی ۔ مودی لہر کے بل بوتے پر بی جے پی نے تمام 42 نشستوں پر تنہا مقابلہ کرنے کا ارادہ کیا ہے اور اپنی اسی کوشش کو بار آور

کرنے پارٹی نے کوئی کسر نہیں چھوڑی ہے جس کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ پارٹی امیدواروں کی شکل میں زندگی کے ہر شعبہ جیسے فن ، موسیقی اور جادو سے تعلق رکھنے والے امیدواروں کو شامل کیا گیا ہے ۔ خاص طور پر ایسے امیدواروں کو ترجیح دی گئی ہے جو عوام میں مقبول ہیں۔ علاوہ ازیں دیگر معمول کے سیاستدانوں کو بھی ٹکٹ د ئے گئے ہیں اور اس طرح مشہور گلوکار و موسیقار بپی لہری ، جادو گر پی سی سرکار ، گلوکار بابل سپریو ، ایکٹر جارج بیکر کو بھی انتخابی امیدواروں کی فہرست میں شامل کیا گیا ہے جبکہ معروف سیاستداں ایس ایس اہلوالیہ کو بھی اہم مقام حاصل ہے ۔ دریں اثناء ریاستی بی جے پی صدر راہول سنہا نے میڈیا کو بتایا کہ پوری ریاست میں دو لہریں ہیں۔ مودی کی تائید میں مثبت لہر ہے اور ترنمول کانگریس کے خلاف منفی لہر ہے کیونکہ ترنمول کانگریس نے ریاست میں نام نہاد ’’پریورتن لانے کے جو وعدے کئے تھے اس کی تکمیل نہیں کی۔

TOPPOPULARRECENT