Sunday , September 23 2018
Home / سیاسیات / مغربی بنگال پنچایت انتخابات پر تاحکم ثانی التواء

مغربی بنگال پنچایت انتخابات پر تاحکم ثانی التواء

دیہی انتخابات پر ہائیکورٹ کے التواء کا مغربی بنگال کی اپوزیشن پارٹیوں کی جانب سے خیرمقدم
کولکتہ ۔ 12اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) کلکتہ ہائیکورٹ نے آج تاحکم ثانی جاریہ پنچایت انتخابات کے عمل پر مغربی بنگال میں امتناع عائد کردیا ۔ انتخابی عمل پر امتناع عائد کرنے کے ساتھ جسٹس سبراتا تعلقدار نے ریاستی الیکشن کمیشن سے مغربی بنگال میں جاری پنچایت انتخابات کے عمل کے بارے میں بھی ایک جامع موقف کی رپورٹ انتخابی عمل کے بارے میں طلب کی جس میں پرچہ جات نامزدگی کی تعداد کے بارے میں تفصیلات اور دیگر معلومات طلب کیں ۔ عدالت نے کہا کہ وہ 16اپریل کو فیصلہ کو چیلنج کرنے والی درخواستوں کی سماعت کرے گی جن میں 9اپریل سے اعلامیہ سے دستبرداری کی درخواست بھی شامل ہیں ۔ اعلامیہ کے تحت پرچہ جات نامزدگی کی تاریخ میں ایک دن کی توسیع کی گئی تھی‘ جسٹس تعلقدار نے 10اپریل کو 9اپریل کے ریاستی الیکشن کمیشن کے اعلامیہ سے دستبرداری پر حکم التواء جاری کیاتھا اور کمیشن کو ہدایت دی تھی کہ اس حکم نامہ کو تنسیخ قرار دیا جائے جو ملتوی رکھی گئی ہے ۔ جسٹس تعلقدار نے 5لاکھ روپئے لاگت بی جے پی سے غلط نمائندگی کی بناء پر طلب کئے ۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے ہائیکورٹ اور سپریم کورٹ دونوں جگہ ایک ہی قسم کی درخواستیں پیش کی ہیں اور اس کا کردار ’’ فورم ہاپنگ‘‘ کی طرح ہے ۔ سپریم کورٹ نے کل بی جے پی کو ہدایت دی تھی کہ کلکتہ ہائیکورٹ سے ربط پیدا کریں اور پرچہ جات نامزدگی داخل کرنے کی تاریخ میں توسیع کے بارے میں شکایت پیش کرے ۔مغربی بنگال کی اپوزیشن پارٹیوں نے آج ہائیکورٹ کے فیصلہ کو دیہی انتخابات کیلئے حکم قرار دیتے ہوئے اس کا خیرمقدم کیا ۔

TOPPOPULARRECENT