Sunday , January 21 2018
Home / ہندوستان / مغربی بنگال کے وزیر کا خواتین کیخلاف توہین آمیز ریمارک

مغربی بنگال کے وزیر کا خواتین کیخلاف توہین آمیز ریمارک

بڑودہ۔/13جنوری، ( سیاست ڈاٹ کام ) مغربی بنگال کے وزیر اور ترنمول کانگریس کے سینئر لیڈر سواپن دیبناتھ نے یہ الزام عائد کرکے پھر ایک بار تنازعہ کھڑا کردیا ہے کہ بعض سی پی ایم کی خاتون کارکنوں کی یہ عادت بن گئی ہے کہ اپنا لباس خود پھار لیتے ہیں اور ٹی ایم سی کارکنوں پر دست درازی کا الزام لگاتے ہیں۔ ریاست کے وزیر افزائش مویشیان مسٹر دیبنا

بڑودہ۔/13جنوری، ( سیاست ڈاٹ کام ) مغربی بنگال کے وزیر اور ترنمول کانگریس کے سینئر لیڈر سواپن دیبناتھ نے یہ الزام عائد کرکے پھر ایک بار تنازعہ کھڑا کردیا ہے کہ بعض سی پی ایم کی خاتون کارکنوں کی یہ عادت بن گئی ہے کہ اپنا لباس خود پھار لیتے ہیں اور ٹی ایم سی کارکنوں پر دست درازی کا الزام لگاتے ہیں۔ ریاست کے وزیر افزائش مویشیان مسٹر دیبناتھ نے بدیا پور میں ٹی ایم سی کارکنوں کے اجلاس کو مخاطب کرتے ہوئے ہوئے کہا کہ سی پی ایم خاتون کارکنوں کی شعبدہ بازی سے عوام بخوبی واقف ہیں اور وہ اس طرح کے الزامات پر یقین نہیں کریں گے۔ موضع کلنا میں یکم جنوری کو سی پی ایم اور ٹی ایم سی کارکنوں میں تصادم ہوگیا۔ اسوقت سی پی ایم سے وابستہ خواتین نے الزام عائد کیا تھا کہ ٹی ایم سی کارکنوں نے تصادم کے دوران بدسلوکی کی تھی۔ ریاستی وزیر کے ریمارک پر سی پی ایم پولیٹ بیورو ممبر برندا کرت نے شدید تنقید کی ہے اور کہا کہ مغربی بنگال میں ٹی ایم سی کا زوال شروع ہوگیا ہے جہاں پر خواتین کے خلاف سب سے زیادہ جرائم ہورہے ہیں۔قبل ازیں مغربی بنگال کے ہی ایک اور وزیر نے سی پی آئی ایم کارکنوں کی خواتین کی عصمت ریزی کرنے کیلئے ترنمول کانگریس کارکنوں کو روانہ کرنے کا بیان دیتے ہوئے ایک تنازعہ پیدا کیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT