Tuesday , September 25 2018
Home / اضلاع کی خبریں / مقررہ وقت میں تعمیری کام انجام نہ دینے پر کارروائی

مقررہ وقت میں تعمیری کام انجام نہ دینے پر کارروائی

نظام آباد :17؍جنوری ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) حکومت کی جانب سے منظورکردہ فلاحی اسکیمات کی عمل آوری میں دلچسپی دکھاتے ہوئے تعمیری کاموں کو فروری کے اختتام تک تکمیل کرنے کی ضلع کلکٹر مسٹر پردومنیا نے آج پنچایتی راج کے انجینئرنگ عہدیداروں کو ہدایت دی ہے۔ ضلع کلکٹر مسٹر پردومنیا نے آج پرگتی بھون میں پنچایت راج انجینئروں کے ساتھ ایک جائز

نظام آباد :17؍جنوری ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) حکومت کی جانب سے منظورکردہ فلاحی اسکیمات کی عمل آوری میں دلچسپی دکھاتے ہوئے تعمیری کاموں کو فروری کے اختتام تک تکمیل کرنے کی ضلع کلکٹر مسٹر پردومنیا نے آج پنچایتی راج کے انجینئرنگ عہدیداروں کو ہدایت دی ہے۔ ضلع کلکٹر مسٹر پردومنیا نے آج پرگتی بھون میں پنچایت راج انجینئروں کے ساتھ ایک جائزہ اجلاس منعقد کیا اور ضلع کے تعمیری کام اور طمانیت روزگار اسکیم کے کاموں کا جائزہ لیا۔ انہوں نے کہاکہ معاشی سال کا اختتام ہونیوالا ہے لہٰذا زیرالتواء تمام کاموں کو تکمیل کرتے ہوئے ٹینڈر س کو طلب کریں اور جن کاموں کے ٹینڈرس کی ضرورت نہیں ہے ان کاموں کی 20؍جنوری تک رپورٹ پیش کریں۔ بالخصوص طمانیت روزگار اسکیم کے تحت انجام دینے والے کاموں کو آرڈی یو یف کے کاموں کو تکمیل کیلئے منصوبہ بندی کریں گذشتہ مارچ میں بڑے پیمانے پر طمانیت روزگار کاموں کی منظوری عمل میں لائی گئی تھی لیکن فنڈس کی قلت کی وجہہ سے کاموں کو شروع نہیں کیا گیا تھا ۔ فنڈس کی عدم موجودگی کے باوجود بھی مزدوروں کوہنگامی صورت میں کام فراہم کرنے کیلئے ضرورت پڑنے پر فنڈس کی اجرائی عمل میں لائی جائے گی۔ گذشتہ مارچ میں منظور کردہ کاموں کو شروع کرنے کے باوجود بھی تقریباً 30-40کروڑ روپئے کے کام انجام نہیں دئیے جاسکے لہٰذا ضرورت کے مطابق کاموں کو منظور کرتے ہوئے تکمیل کریں ۔

اس سال طمانیت روزگار کے تحت 150کروڑ روپئے خرچ کرنے مزید 40کروڑ روپئے مارچ تک خرچ کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔ فنڈس کے دستیابی کے بعد ایس سی، ایس ٹی کے کاموں کو سب سے پہلے اہمیت دیتے ہوئے کاموں کو تکمیل کریں ۔ کاماریڈی ڈویژن میں 574کاموں کو ڈسمبر تک تکمیل کرنے کی ضرورت تھی لیکن 62% فیصد میں356کاموں کو تکمیل کیا گیا ۔ نظام آباد ڈویژن میں 2292 کاموں میں سے 1372 کاموں کو مکمل کرتے ہوئے 60فیصد نشانہ کو تکمیل کیا گیا ۔ اسی طرح بودھن ڈویژن میں 770کاموں میں سے 449کام تکمیل کرتے ہوئے 59فیصد نشانہ کو تکمیل کیا کرنے پر ضلع کلکٹر نے ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے خاص طورسے مدارس میں بیت الخلاء ، باورچی خانوں کی تعمیر کیلئے 930کام منظور کئے گئے تھے ان میں سے 236کام تکمیل کئے گئے اور 25فیصد نشانہ کو تکمیل کیا گیا۔

وقت مقررہ پر کام نہ کرنے والے گتہ داروں کے ناموں کو بلاک لسٹ میں رکھیں اور دلچسپی کے ساتھ کام کروانے کی انجینئروں کو ہدایت دی۔ اور ان کاموںکا بنیادی طورپر جائزہ لینے کیلئے ڈپٹی ای ایز کو ہدایت دیتے ہوئے تعمیری کاموںکا جائزہ لینے کیلئے دیہاتوں کا دورہ کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔ ضلع میں 500 آنگن واڑی عمارتوں کی منظوری حاصل ہوئی ہے اور ایک ایک عمارت کیلئے 6.50لاکھ روپئے منظور ہوئے ہیں ۔ پہلے مرحلہ میں 4.50 لاکھ روپئے اجراء کئے جائیں گے۔ لہٰذا ان کاموں کی تکمیل کیلئے فوری ٹینڈرس طلب کرنے کی ہدایت دی۔ اس موقع پر ایس سی پنچایت راج شنکریا اور دیگر عہدیدار بھی موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT