Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / ملائم خاندان میں خلیج‘ سماج وادی پارٹی کیلئے مہنگی پڑے گی

ملائم خاندان میں خلیج‘ سماج وادی پارٹی کیلئے مہنگی پڑے گی

کئی قائدین کانگریس میں شمولیت کے خواہاں‘ چیف منسٹری کی کانگریسی امیدوار شیلاڈکشٹ کا بیان
نئی دہلی ۔16 اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) ملائم سنگھ یادو کے خاندان  میں بڑھتی ہوئی خلیج برسراقتدار سماج وادی پارٹی کو اترپردیش کے آئندہ اسمبلی انتخابات میں مہنگی پڑے گی ۔ کئی سینئر قائدین کانگریس کے ساتھ اس میں شمولیت کیلئے ربط پیدا کئے ہوئے ہیں ۔ کانگریس پارٹی کی چیف منسٹری کی امیدوار شیلا ڈکشٹ نے آج یہ دعویٰ کیا ‘ وہ تین مرتبہ ریاست دہلی کی چیف منسٹر رہ چکی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ سماج وادی پارٹی خاندان میں اختلافات سے سماج وادی پارٹی کو نقصان پہنچے گا ‘ جب کہ کانگریس کو فائدہ ہوگا ۔ جو لوگ پارٹی سے ناراض ہیں ان کے سامنے سوائے کانگریس میں شمولیت کے کوئی دوسرا راستہ نہیں ہے ۔ کانگریس کے متاثرکن مظاہرہ کا یقین ظاہر کرتے ہوئے شیلاڈکشٹ نے کہا کہ سیاسی اعتبار سے اہم ریاست کے اسمبلی انتخابات میں کانگریس 27سال تک اقتدار سے دور رہنے کے بعد دوبارہ واپس آئے گی ۔ انہوں نے کہا کہ سماج وادی پارٹی کے ارکان اسمبلی اور درمیانی درجہ کے قائدین بھی کانگریس کے ساتھ ربط برقرار رکھے ہوئے ہیں ۔ کئی افراد کانگریس میں شمولیت کے خواہاں ہے ۔ یقینی طور پر اس لئے کہ وہ بی جے پی یا بی ایس پی میں شامل نہیں ہوسکتے ‘ وہ پی ٹی آئی کو انٹرویو دے رہی تھی ۔ ان سے سوال کیا گیا کہ کیا سماج وادی پارٹی کے چند سینئر قائدین کانگریس کے ساتھ ربط رکھے ہوئے ہیں ‘ 78سالہ شیلا ڈکشٹ نے کہا کہ کانگریس میں شمولیت کے خواہاں قائدین میں سینئر ‘ درمیانی سطح کے اور مقامی قائدین بھی شامل ہیں ۔ جو لوگ سماج وادی پارٹی کی بدنامی پر مایوس ہیں

انہوں نے یقیناً متبادل کے طورپر کانگریس کا انتخاب کیا ہے  ۔ کثیر تعداد میں سماج وادی پارٹی کے ارکان اسمبلی کانگریس سے ربط رکھے ہوئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ وہ اس سے پہلے بھی پارٹی کے ساتھ  ربط رکھے تھے لیکن اب کھل کر سامنے آگئے ہیں ۔ سماج وادی پارٹی میں داخلی اختلافات ملائم سنگھ یادو کے بھائی شیوپال یادو اور ان کے فرزند چیف منسٹر اکھلیش یادو کے درمیان پیدا ہوگئے ہیں ‘ جو آئندہ سال کے اوائل میں اسمبلی انتخابات کے دوران انہیں مہنگے پڑیں گے ۔ تنازعہ کے دوران جمعہ کے دن سماج وادی پارٹی سربراہ ملائم سنگھ یادو نے کہا تھا کہ چیف منسٹری کے امیدوار ان کے فرزند اکھلیش یادو نہیں ہوں گے بلکہ نئے چیف منسٹری کے امیدوار کا انتخاب پارٹی کے منتخبہ ارکان اسمبلی کریں گے ۔ حال ہی میں اکھلیش یادو کو صدر یو پی سماج وادی پارٹی کے عہدہ سے ہٹا دیا گیا ہے ۔ ڈکشٹ نے کہا کہ سماج وادی پارٹی میں اس پھوٹ سے کانگریس کو فائدہ ہوگا‘ اس سے سماج وادی پارٹی کوئی فائدہ ہونے والا نہیں ہے ۔ کانگریس کی انتخابات کیلئے تیاریوں کے بارے میں سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عوام کی تائید میں ریاستی سطح پر اضافہ ہوچکا ہے کیونکہ وہ برسراقتدار پارٹی کی کارکردگی سے مایوس ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ حالانکہ ان کا سماج وادی پارٹی کی داخلی سیاست سے کوئی تعلق نہیں ہے لیکن وہ اتنا ضرور کہہ سکتی ہیں کہ داخلی اختلافات سے برسراقتدار پارٹی کو نقصان پہنچے گا ۔ انہوں نے کہا کہ بحیثیت چیف منسٹر دہلی انہوں نے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے چنانچہ انہیں فائدہ پہنچنے کا توقع ہے ۔

TOPPOPULARRECENT