Wednesday , June 20 2018
Home / دنیا / ملائیشیاء ایرلائنس کے لاپتہ طیارہ کی تحقیقات کیلئے امریکی ٹیم روانہ

ملائیشیاء ایرلائنس کے لاپتہ طیارہ کی تحقیقات کیلئے امریکی ٹیم روانہ

واشنگٹن۔ 9؍مارچ (سیاست ڈاٹ کام)۔ امریکہ نے ماہرین کی ایک ٹیم ملائیشیاء روانہ کی ہے تاکہ ملائیشیائی ایرلائنس کے لاپتہ طیارہ کی تحقیقات میں مدد دے سکے جو سمجھا جاتا ہے کہ اپنے 239 افراد کے ساتھ جن میں 5 ہندوستانی اور ایک امریکی کمپنی کے 20 ملازمین شامل تھے، حادثہ کا شکار ہوگیا ہے۔ تحقیقاتی ٹیم میں دیگر عہدیداروں کے علاوہ قومی حمل و نقل ح

واشنگٹن۔ 9؍مارچ (سیاست ڈاٹ کام)۔ امریکہ نے ماہرین کی ایک ٹیم ملائیشیاء روانہ کی ہے تاکہ ملائیشیائی ایرلائنس کے لاپتہ طیارہ کی تحقیقات میں مدد دے سکے جو سمجھا جاتا ہے کہ اپنے 239 افراد کے ساتھ جن میں 5 ہندوستانی اور ایک امریکی کمپنی کے 20 ملازمین شامل تھے، حادثہ کا شکار ہوگیا ہے۔ تحقیقاتی ٹیم میں دیگر عہدیداروں کے علاوہ قومی حمل و نقل حفاظتی بورڈ بوئنگ کے عہدیدار بھی شامل ہیں۔ امریکی بحریہ نے ایک گائیڈڈ میزائل ’ڈسٹرائر‘ بھی ویتنام کے جنوبی ساحل کو روانہ کردیا ہے تاکہ تلاش کارروائی میں مدد دے سکے۔

ملائیشیاء ایرلائنس کا طیارہ MH370 میں 227 مسافر اور 12 ارکان عملہ سوار تھے۔ یہ بیجنگ جاتے ہوئے راستہ میں لاپتہ ہوگیا۔ طیارہ کے موجودہ مقام کا تعین ہونے کے بعد بین الاقوامی شہری ہوابازی تنظیم کے پروٹوکولس اس بات کا تعین کریں گے کہ کونسے ملک کو تحقیقات کی قیادت کرنی چاہئے۔ قومی حمل و نقل تحفظ بورڈ کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ چونکہ امریکہ سے سفر کی مدت کافی طویل ہے، تحقیقات کنندوں کی ایک ٹیم تکنیکی مشیروں کے ساتھ جن کا تعلق بوئنگ کمپنی اور وفاقی شہری ہوابازی انتظامیہ سے ہے، روانہ کی گئی ہے تاکہ امریکہ کی جانب سے تحقیقات میں مدد کرسکے۔ بیان کے بموجب یہ ٹیم امریکہ سے گزشتہ رات روانہ ہوچکی ہے۔ بوئنگ کمپنی نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ اس کی ٹیم امریکی ٹیم میں بحیثیت تکنیکی مشیر شامل ہوجائے گی۔ یہ ٹیم فی الحال اس علاقہ کے راستہ میں ہے۔ چنانچہ وہ لاپتہ طیارہ کے موجودہ مقام کے تعین میں مدد فراہم کرے گی۔ بوئنگ 777-200 کی پرواز MH370 میں 14 مختلف ممالک کے مسافر سوار تھے۔

ویتنامی فضائیہ کے طیاروں نے تیل کے بڑے بڑے نشانات ویتنام کے جنوبی ساحل کے قریب دیکھے ہیں۔ عہدیداروں کو شبہ ہے کہ یہ لاپتہ طیارہ کے غرق ہونے کا مقام ہے۔ ٹکساس کی ایک سیمی کنڈکٹر کمپنی نے کہا کہ اس کے 20 ملازمین لاپتہ ملائیشیائی ایرلائنس کے طیارہ میں سوار تھے جو اچانک غائب ہوگیا ہے۔ فری اسکیل سیمی کنڈکٹر کمپنی کے ملازمین بھی MH370 پرواز میں شامل تھے۔ ان میں سے 12 ملائیشیاء کے اور باقی 8 چین کے شہری تھے۔ کمپنی کے صدر اور سی ای او گریگ لو نے کہا کہ فی الحال ہماری توجہ صرف ہمارے ملازمین اور ان کے ارکان خاندان پر مرکوز ہے۔ ہم اس سانحہ میں متاثرین کے لئے دعائیں کرنے میں مصروف ہیں۔ بچاؤ کارکن اب بھی دو اِنجنوں والے اس طیارہ کا پتہ چلانے کی کوشش کررہے ہیں جو کوالالمپور سے بیجنگ جانے کے لئے 24 گھنٹے سے زیادہ وقت پہلے روانہ ہوا تھا،

لیکن راڈار کے اسکرینس سے ملائیشیاء کے مشرقی ساحل اور جنوبی ویتنام کے درمیان لاپتہ ہوگیا جس کی وجہ سے طیارہ کی تلاش کی بین الاقوامی کوشش شروع کردی گئی ہے۔ 153 چینی مسافر طیارہ میں سوار تھے جن میں ایک شیرخوار بچہ بھی ہے۔ 38 ملائیشیائی، 7 انڈونیشیائی، 6 آسٹریلیائی، 5 ہندوستانی، 4 فرانسیسی، 3 امریکی بشمول ایک شیرخوار بچہ شامل تھے۔ نیدرلینڈس کے وزیر خارجہ نے کہا کہ ایک ولندیزی مسافر بھی طیارہ میں سوار تھا۔ فری اسکیل کمپنی نے کہا کہ وہ دیگر دستیاب ماہرین سے مشاورت میں مصروف ہے اور وہ 24 گھنٹے سانحہ کے متاثرین کو مدد فراہم کرنے کے لئے تیار ہے۔ کمپنی کی مصنوعات آٹوموٹیو، صنعتی صارفین اور نیٹ ورکنگ کے بازاروں میں انتہائی مقبول ہیں۔ ان میں مائیکرو پروسیسرس، مائیکرو کنٹرولرس اور سینسرس کے علاوہ انالوگ انٹی گریٹیڈ سرکٹس شامل ہیں۔ فری اسکیل دنیا بھر میں ساخت تیار کرنے، تحقیقی کارروائیوں اور ترقی دینے کے علاوہ پیداوار اور فروخت کی کارروائیوں میں مصروف رہتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT