ملازمت کی حد عمر 60 سال کرنے کا مطالبہ

نظام آباد :19؍ مارچ(سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)ریاست کے ٹیچرس کی نمائندہ تنظیم پی آرٹی یو کے قائدین کملا کر رائو، شنکر ، خواجہ معین الدین ، سید احمد بخاری ، عارف الدین ، اسرار احمد نے بتایا ہے کہ ریاستی صدر وینکٹ ریڈی ، جنرل سکریٹری سروتم ریڈی نے ایک تفصیلی یادداشت ریاستی حکومت کو پیش کی ہے ۔ جس میں بتایا گیا ہے کہ عالمی صحت کے سروے کے مطابق ایک عام آدمی موجود ہ دور میں 60 سال کی عمر تک تمام کام بہتر انداز میں انجام دے سکتا ہے اس لئے مرکزی حکومت بھی اپنے ملازمین کی ملازمت کیلئے حد عمر کو 60 سال برقرار رکھا ہے ان قائدین نے ریاستی چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر رائو جو کہ ملازمین کے حقیقی خیر خوا ہ اور بہی خواہ ہیں پرُ زور اپیل کی کہ ریاست تلنگانہ کے ملازمین سرکار اور ٹیچرس کی ملازمت کیلئے مقررکردہ حد عمر کو بڑھا کر 60 سال کردیا جائے ۔ ریاست آندھرا پردیش کی حکومت نے بھی اپنے ملازمین کی حد عمر 58 سے بڑھاکر 60 سال کرچکی ہے ۔ یہاں اس امر کی وضاحت ضروری ہے کہ کسی بھی امیدوار کو 35 تا40 سال کی عمر میں ملازمت حاصل ہونے کے بعد وہ بہت کم عرصہ تک ملازمین کرتا ہے جس سے مالی فوائد جو حکومت کی جانب سے حاصل ہونے والے ہیں خاطر خواہ حاصل نہیں ہوسکتے ۔

TOPPOPULARRECENT