Saturday , November 18 2017
Home / دنیا / ملبورن کی مسجد کی آتشزنی کے ملزمین پر دہشت گردی کاالزام

ملبورن کی مسجد کی آتشزنی کے ملزمین پر دہشت گردی کاالزام

سڈنی ۔ 20اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) تین افراد پر دولت اسلامیہ کی تحریک پر ملبورن کی مسجد کو گذشتہ سال نذرآتش کرنے کا الزام عائد کیا گیا ہے ۔ دو ملزمین کی عمریں علی الترتیب 25اور 27سال ہیں ۔ وہ پہلے ہی سے گذشتہ سال کرسمس کے دن کے آس پاس دہشت گرد حملے کی مبینہ سازش کرنے کے ملزم ہیں ۔ ان پر امام علی دولت اسلامیہ مرکز میں نومبر اور ڈسمبر میں آتشزنی کی سازش کرنے کا الزام ہے ۔ تیسرا 29سالہ شخص کل گرفتار کیا گیا اسے بھی انہی الزامات کا سامنا ہے ۔ اس جرم کی اعظم ترین سزا عمر قید ہوسکتی ہے ۔ گذشتہ سال ڈسمبر میںملبورن کی مسجد کو نذرآتش کیا گیا تھا ۔ آسٹریلیا کی وفاقی پولیس کے اسسٹنٹ کمشنر آیان میک کارٹنی نے ملبورن میںایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ان کا مقصد برادری کے ایک مخصوص گروپ میں خوف پیدا کرنا اور اس پر اثرانداز ہونا تھا ۔ اسسٹنٹ کمشنر راس گینتھر وکٹوریہ اسٹیٹ پولیس کے انسداد دہشت گردی کمان کے سربراہ نے کہا کہ تحقیقات کرنے والوں کو یقین ہے کہ یہ مرکز جس میں عبادت گاہ کو دگنا کردیا ہے ۔ شیعہ سمجھ کر حملے کا نشانہ بنایا گیا ۔ یہ مرکز ایک شیعہ مرکز ہے اس لئے ان افراد نے اس پر انتہا پسند سنی نظریہ کے تحت حملہ کیا اور ان کے روابط مبینہ طور پر دولت اسلامیہ سے تحریک یافتہ حملہ کی سازشیوں سے ہیں ۔دولت اسلامیہ سنی انتہا پسند گروپ ہے جو اکثر شیعہ مسلمانوں کو حملوں کا نشانہ بناتا ہے ۔ عہدیداروں کا کہنا ہے کہ ماضی میں چند سال کے دوران کئی ایسے حملوں کی سازش ناکام بنائی جاچکی ہے ۔ تازہ ترین واقعہ دولت اسلامیہ کی ہدایت پر بم حملہ کا تھا جس کا نشانہ سڈنی جانے والی بین الاقوامی پرواز کی تازہ ترین دہشت گرد حملے حالیہ برسوں میں بشمول سڈنی کیفے کا 2014میں محاصرہ جس میں دو افراد یرغمال بنائے گئے تھے ‘ہیں۔

TOPPOPULARRECENT