Wednesday , September 19 2018
Home / شہر کی خبریں / ملک بھر میں قیمتی وقف جائیدادیں تباہی و بربادی کا شکار

ملک بھر میں قیمتی وقف جائیدادیں تباہی و بربادی کا شکار

موقع پرست مسلم قائدین اور حکومت ذمہ دار، کولکتہ میں کل جماعتی وقف کنونشن،جناب سید عزیز پاشاہ و دیگر کا خطاب

موقع پرست مسلم قائدین اور حکومت ذمہ دار، کولکتہ میں کل جماعتی وقف کنونشن،جناب سید عزیز پاشاہ و دیگر کا خطاب
حیدرآباد ۔ 18 اپریل (پریس نوٹ) کولکتہ مغربی بنگال میں منعقدہ کل جماعتی وقف کنونشن سے صدارتی خطاب میں جناب سید عزیز پاشاہ سابق ایم پی (سی پی آئی) نے کہا کہ سارے ملک میں مسلمانوں کی موقوفہ قیمتی جائیدادوں کی تباہی میں حکومت کے ساتھ ساتھ موقع پرست مسلم سیاستداں بھی برابر کے شریک ہیں۔ کنونشن کا آغاز حافظ منصورکی قرأت کلام پاک سے ہوا۔ جناب سید عزیز پاشاہ نے کہا کہ خوش آئند بات ہیکہ ملک بھر میں تحفظ اوقاف کیلئے بیداری کی لہر پیدا ہورہی ہے۔ اس سلسلہ میں اردو صحافت بالخصوص مدیران روزنامے سیاست، منصف اور رہنمائے دکن کا بہت اہم رول ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ وقف املاک کو ترقی دیکر ہونے والی آمدنی سے مسلمانوں کی تعلیمی و معاشی پسماندگی کو دور کرنے کیلئے ٹھوس اقدامات کئے جائیں۔ جناب زاہد علی خاں ایڈیٹر روزنامہ سیاست کے مبارکبادی پیام کو جو کنونشن میں پڑھ کر سنایا گیا، کہا کہ سیاست تحفظ اوقاف کی تحریک کی ہمیشہ سرپرستی کرتا رہے گا اور اس نیک مقصد کیلئے ہمیشہ تعاون کیا جائے گا۔ جناب عثمان بن محمد الہاجری صدر دکن وقف پروٹیکشن سوسائٹی نے کنونشن کے داعی جناب مستقیم صدیقی اور ان کے رفقاء کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ جس جرأت اور ہمت سے اس تحریک کو عوام سے جوڑنے کیلئے کولکتہ میں کوشش کی جارہی ہے انشاء اللہ اس کے بہت اچھے نتائج سامنے آئیں گے۔ مسلمانوں کو چاہئے کہ جس طرح سے کوئی آدمی اپنی ذاتی جائیداد کو بچانے کیلئے اپنی ساری توانائیاں صرف کرنے میں کوتاہی نہیں کرتا، اسی طرح اللہ کے راستے میں وقف کردہ موقوفہ جائیدادوں کے تحفظ کیلئے کمربستہ ہوکر میدان عمل میں آنا ہوگا بصورت دیگر سیاسی سرپرستی میں پل رہے لینڈگرابرس کو روکنا بے حد مشکل ہوگا جس کی ایک زندہ مثال حیدرآباد میں واقع ٹولی مسجد کی 27 ایکڑ سے زائد وقف زمین ہے۔ دہلی سے آئے مہمان جناب شہزاد پونا والا ترجمان آل انڈیا یوتھ کانگریس نے کہا کہ ہم وطن سیکولر لوگوں کو ساتھ شامل کرتے ہوئے ہم اس مہم کو آگے بڑھائیں گے۔ جذباتی نعرے، نفرت بھری تقاریر اور تنگ نظر موقع پرست مسلم قیادت کے دعویدار اپنے شہر میں ہونے والے وقف املاک کی لوٹ میں پوری طرح ملوث ہیں۔ ان موقع پرست مفادات حاصلہ سے ملک میں نفرت کا ماحول پیدا ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج وقت ہیکہ ہم اخلاص کے ساتھ ہماری وقف جائیدادوں کو بچانے کیلئے پرامن جدوجہد کو کامیاب بنانے کیلئے کام کریں۔ انہوں نے مزید کہاکہ عنقریب دہلی میں بھی کل ہند وقف کنونشن کا انعقاد عمل میں لایا جائے گا جس میں تمام سیکولر جماعتوں کو مدعو کیا جائے گا۔ محترمہ خالدہ پروین نیشنل کنوینر ویلفیر پارٹی آف انڈیا شعبہ خواتین نے کہا کہ مسلمانوں کی غفلت و لاپرواہی سے غنڈہ گرد لینڈ گرابرس جن کو مقامی سیاسی جماعت کی مکمل سرپرستی حاصل ہے، ٹولی مسجد کی وقف زمین پر قبضہ کرتے ہوئے کئی عالیشان شادی خانے تعمیر کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ویلفیر پارٹی آف انڈیا اس جدوجہد میں حیدرآباد کے علاوہ سارے ہندوستان میں اس جدوجہد میں ہمیشہ تعاون کرتی رہے گی۔ مولانا فیروز اختر قاسمی جنرل سکریٹری مرکزی جمعیتہ العلماء نے بھرپور تائیدکا اعلان کیا۔ جناب سید تمیم الدین صدر تنظیم انصاف گریٹر حیدرآباد نے کہا کہ حیدرآباد میں جس طرح لینڈ گرابرس کا پیچھا کیا جارہا ہے اسی طرح ہم تنظیم انصاف کی طرف سے یقین دلاتے ہیں کہ وقف کے لینڈ گرابرس کو سارے ہندوستان میں بے نقاب کرتے ہوئے وقف جائیدادوں کا تحفظ کریں گے۔ جناب خالد عباداللہ چیرمین مائناریٹی ڈپارٹمنٹ کانگریس کمیٹی مغربی بنگال نے کہا کہ سیاسی وابستگی سے بالاتر ہوکر تحفظ اوقاف کے نیک مقاصد کو کامیاب کرنے میں پورا تعاون کیا جائے گا۔ جناب مطیع الرحمن ایڈوکیٹ جنرل سکریٹری مائناریٹی سیل ترنمول کانگریس نے بھی مغربی بنگال کے تمام اضلاع میں اس تحریک کو گھر گھر پہنچانے کیلئے تعاون کا پیشکش کئے۔ مولانا افضل اللہ قاسمی صدر جمعیت علمائے ہند ضلع پورلیا مغربی بنگال نے کہا کہ اس مہم کو کامیابی کیلئے ضلع پورلیا کی جمعیت کی طرف سے بھرپور حمایت حاصل رہے گی۔ جناب تحسین ضیاء ریسرچ اسکالر، جناب شبیر علی کنوینر انڈین مسلم رائٹس، جناب شیخ صابر علی کنوینر انڈین مسلم رائٹس مغربی بنگال نے بھی کنونشن سے خطاب کئے۔ جناب محمد مقیم صدیقی صدر انڈین مسلم رائٹس نے کہاکہ تحفظ اوقاف کو جو چراغ حیدرآباد میں روشن ہوا، آج اس کی روشنی مغربی بنگال پہنچ گئی۔ انہوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ اس تحریک کو سارے مسلمانوں اور سیکولر لوگوں کو ساتھ لیکر سارے ملک میں وقف جائیدادوں کے تحفظ کیلئے تحریک چلائی جائے گی۔ انہوں نے ملک کے مختلف ریاستوں سے آنے والے کل جماعتی قائدین سے اظہارتشکر کرتے ہوئے تمام مسلمانوں اور سیکولر ہم وطن بھائیوں سے اس تحریک سے وابستہ ہوجانے کی اپیل کی۔ دعا کے ساتھ کنونشن کا اختتام عمل میں آیا۔

TOPPOPULARRECENT