Thursday , December 14 2017
Home / ہندوستان / ملک میں بدترین قحط سالی ، وائٹ پیپر کی اجرائی کا مطالبہ

ملک میں بدترین قحط سالی ، وائٹ پیپر کی اجرائی کا مطالبہ

صورتحال سے نمٹنے کیلئے مودی حکومت اقدامات کرنا تو بہت دور ایک بیان بھی نہیں دے سکی: سنگھوی

نئی دہلی۔ 13 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس نے ملک میں قحط کی بدترین صورتحال اور اس مسئلہ پر سپریم کورٹ کی جانب سے حکومت پر کی جانے والی سرزنش کے پس منظر میں حالات سے نمٹنے حکومت کی کوششوں سے متعلق وائٹ پیپر جاری کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ کانگریس کے ترجمان ابھیشیک مانو سنگھوی نے آج یہاں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ’’حکومت، بدترین قحط کی صورتحال سے نمٹنا تو بہت دُور کی بات ہے بلکہ تاحال اس مسئلہ پر ایک بیان تک جاری نہیں کرسکی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ’’قحط سالی کی حقیقی صورتِ حال پر کانگریس، وائیٹ پیپر کی اجرائی کا مطالبہ کرتی ہے تاکہ اس آفت سے نمٹنے حکومت کی طرف سے کئے جانے والے اقدامات کا علم ہوسکے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی وزیر زراعت خود اعتراف کرچکے ہیں کہ ملک کے کئی اضلاع میں قحط جیسی صورتحال ہے۔ ان کے بیان کے مطابق 2016ء کے دوران ہر ہفتہ اوسطاً 90 کسان خودکشی کررہے ہیں۔ سنگھوی نے مزید کہا کہ ’’مودی حکومت کی بے شرمی اس وقت پوری طرح بے نقاب ہوگئی جب خود مرکزی وزیر زراعت رادھا موہن سنگھ نے اس آفت کی سنگینی کی اہمیت گھٹانے کی کوشش کرتے ہوئے دعویٰ کیا تھا کہ میڈیا اس صورتِ حال کو بڑھا چڑھا کر پیش کررہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ صرف مہاراشٹرا ہی میں روزانہ اوسطاً 9 کسان خودکشی کررہے ہیں۔ 2015ء میں مہاراشٹرا میں 3,228 کسان خودکشی کئے تھے جو 2001ء کے بعد سب سے زیادہ تعداد ہے۔

TOPPOPULARRECENT