Thursday , December 13 2018

ملک میں بچوں کے حقوق سے مسلسل لا پرواہی

ہاکا بھون میں چائلڈ فرینڈلی عدالت کا قیام ۔ سپریم کورٹ جج جسٹس مدن بی لوکر کا خطاب

حیدرآباد 7 اپریل ( سیاست نیوز ) سپریم کورٹ کے جج جسٹس مدن بی لوکر نے کہا ہے کہ ہندوستان میں بچوں کے حقوق کو نظر انداز کیا جا رہا ہے اور ان حقوق کو تسلیم کرنے میں سماج کو اہم رول ادا کرنا چاہئے ۔ ہاکا بھون میں چائلڈ فرینڈلی کورٹ کی افتتاحی تقریب سے یہاں خطاب کرتے ہوئے جسٹس لوکر نے بچوں کے حقوق کی حفاظت نہ کرنے پر ملک کا جو مستقبل ہوسکتا ہے اس پر تشویش کا اظہار کیا ۔ انہوں نے کہا کہ یہ ان کا ماننا ہے کہ ایک طویل عرصہ سے بچوں کے حقوق کو نظر انداز کیا جاتا رہا ہے ۔ ہمارے پاس جوینائیل جسٹس ایکٹ 1985-86 موجود ہے لیکن اس کے تعلق سے شائد ہی کوئی جانتا ہو۔ ہمارے پاس جوینائیل جسٹس ایکٹ 2000 بھی تھا لیکن اس پر کوئی عمل آوری نہیں کی گئی ۔ جسٹس لوکر نے کہا کہ 2005 میں اس وقت کے چیف جسٹس آف انڈیا کو یہ شکایت ملی تھی کہ ملک میں بچوں کے تحفظ کیلئے قانون موجود ہے لیکن اس پر عمل آوری نہیں کی جاتی ۔ انہں نے کہا کہ صرف گذشتہ دو تین سال کے دوران ہی حالات میں تبدیلی آنی شروع ہوئی ہے ۔

جسٹس لوکر نے اس سلسلہ میں پولیس کی جانب سے کئے جانے والے اقدامات کی ستائش بھی کی ۔ انہوں نے کہا کہ پولیس اس سلسلہ میں سب سے پہلے حرکت میں آئی ہے اور انہیں عوام کے ساتھ رہنا چاہئے ۔ اس سے اعتماد بحال کرنے میں مدد مل سکتی ہے ۔ چائلڈ فرینڈلی کورٹ کسی عدالت کے کامپلکس میں نہے ہے ۔ یہاں متاثرین اور ملزمین کیلئے علیحدہ راستے بھی ہیں تاکہ انہیں ایک دوسرے کا آمنا سامنا کرنے سے بچایا جائے ۔ متاثرہ بچے کو ملزم سے رابطے سے بچانے کیلئے ایک ویڈیو لنک کی سہولت فراہم کی گئی ہے جس سے کورٹ ہال میں موجود جج متاثرہ بچے کے ساتھ آنے والے والدین یا سرپرست سے بات کرسکتے ہیں جو دوسرے روم میں موجود ہونگے ۔ متبادل کے طور پر اگر متاثرہ بچہ کورٹ ہال میں ہوگا تو ایک طرفہ آئینہ رہیگا جس سے یہ بچہ ملزم کو نہیں دیکھ سکے گا جو دوسرے روم میں ہوگا ۔ یہ کورٹ سپریم کورٹ کی ہدایات اور پاسکو ایکٹ کی مطابقت میں بنایا گیا ہے ۔ حیدرآباد ہائیکورٹ کے کارگذار چیف جسٹس جسٹس رمیش رنگاناتھن‘ ریاست کے ڈی جی پی ایم مہیندر ریڈی ‘ آئی جی ( لا اینڈ آرڈر ) سواتی لاکرا اور محکمہ بہبودی خواتین و اطفال کے سکریٹری ایم جگدیشور نے بھی تقریب سے خطاب کیا ۔

سیول جج امتحانی نتائج کا اعلان
حیدرآباد 7 اپریل ( آئی این این ) حیدرآباد ہائیکورٹ نے سیول جج ( جونئیر ڈویژن ) کے 20 عہدوں کیلئے منتخبہ امیدواروں کے ہال ٹکٹس نمبر اپنی ویب سائیٹ http://hd.tap.nic.in پر پیش کردئے ہیں۔ جملہ 23 جائیدادوں کیلئے یہ امتحان ہواتھا ۔ ان جائیدادوں پر بھرتیوں کا اعلان 28 فبروری 2017 میں ہوا تھا ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT