Friday , October 19 2018
Home / Top Stories / ملک میں دو دفاعی صنعتی راہداری قائم کرنے وزیراعظم کا اعلان

ملک میں دو دفاعی صنعتی راہداری قائم کرنے وزیراعظم کا اعلان

ڈھائی لاکھ افراد کو روزگار، یو پی سرمایہ داروں کیلئے ریڈکارپٹ، سابقہ حکومتوں پر تنقید، یوگی حکومت مثبت ماحول پیدا کررہی ہے

لکھنو۔21 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے ملک میں دو دفاعی صنعتی کارڈورس قائم کرنے کا آج اعلان کیا ہے۔ انہوں نے یہاں منعقد بڑے کاروباریوں کا میلہ یوپی انوسٹرس سمٹ 2018ء میں یہ اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اس میں سے ایک اترپردیش میں قائم کیا جائے گا۔ اس کوریڈور کی تعمیر کے بعد خاص طور پر بندیل کھنڈ کو بہت فائدہ ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ آگرہ، ’علی گڑھ، لکھنؤ ، کانپور اور جھانسی ہوتے ہوئے چترکوٹ تک جانے والے اس راہداری میں 20 ہزار کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کی امید ہے ۔ اس میں ڈھائی لاکھ لوگوں کو روزگار کے مواقع ملیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پروانچل اور بندیل کھنڈ کی صنعت کاری تیزی سے ہوگی۔ ابھی تک اترپردیش میں تین ہوائی اڈے تھے ۔ اب کشی نگر او رزیور میں بھی بین الاقوامی ہوائی اڈہ بنایا جارہاہے ۔ اڑان اسکیم کے تحت ریاست کے گیارہ شہروں میں ہوائی اڈے بنائے جارہے ہیں۔ مودی نے کہا کہ میرا خواب ہے ہوائی چپل پہننے والا بھی ہوائی جہاز میں سفر کرے ۔ گزشتہ سال اترپردیش سے ہوائی سفر کرنے والوں کی تعداد میں 30 فیصد کا اضافہ ہوا ہے ۔ نئے ہوائی اڈے بن جانے سے ان میں کافی اضافہ ہوگا۔ اس ریاست میں نو ہزار کلومیٹر ریلوے نیٹ ورک ہے ۔ ایسٹرن اور ویسٹرن کوریڈور بن جانے پر اترپردیش کی معیشت کو کافی استحکام حاصل ہوگا۔ اترپردیش میں ترقی میں اضافہ ہوگا۔ مکیش امبانی، گوتم اڈانی، ادیتیہ بڑلا ، ایم چندر شیکھرن، رشیش شاہ، آنند مہندرا ، سبھاش چندرا جیسے معروف صنعت کاروں کی موجودگی میں جاری دو روزہ سمٹ کے افتتاحی اجلاس میں مودی نے کہا کہ وارنسی سے ہلدیا تک شروع ہونے والے آبی گزرگاہ سے بھی ریاست کی ترقی کو نئی بلندیوں پر لے جانے میں مدد ملے گی۔ اترپردیش کے تمام گرام پنچایتوں میں آپٹیکل فائبر سے منسلک ہوجانے پر یہاں کا ہر گاوں پوری دنیا کے رابطہ میں آجائے گا۔

انہوں نے کہاکہ یہ اسکیمیں اترپردیش کو اکیسویں صدی میں نئی بلندیوں پر لے جائیں گی۔ ٹرانسپورٹ میں سہولت سے تجارت میں آسانی ہوگی۔ ٹورزم بڑھے گا تو جاب گروتھ پر بھی اس کا اثر پڑے گا۔ مودی نے صنعت کاروں کو ہر حال میں سہولت دینے کی یقین دہانی کرتے ہوئے کہا کہ اترپردیش میں اب سرمایہ کاروں کے لئے ریڈ ٹیپ نہیں بلکہ ریڈ کارپیٹ ہوگا۔ سنگل ونڈو پورٹل کے ذریعہ صنعت کاروں کو مقررہ وقت میں آن لائن اجازت ملے گی۔ یوگی حکومت سنجیدگی سے وعدے پورا کررہی ہے ۔ تبدیلی دکھائی دے رہی ہے ۔ اتنے وسیع پیمانے پر سمٹ ہونا بہت بڑی تبدیلی ہے ۔ انہوں نے اس کے انعقاد کے لئے وزیر اعلی یوگی ادیتیہ ناتھ اور ان کی ٹیم کو مبارک باد دی۔ اپوزیشن جماعتوں کی حکومتوں کا نام لئے بغیر مودی نے کہا کہ پہلے کے حالات کسی سے پوشیدہ نہیں ہیں۔ عام لوگوں کا جینا دوبھر تھا تو صنعتوں کے بارے میں سوچنا ہی کیا۔ مڈل کلاس تو بے حال تھا۔ یوگی حکومت منفی ماحول سے ریاست کو مثبت کی طرف لے جارہی ہے ۔ امید کی کرن جگا رہی ہے ۔ سمٹ سے یوپی کی ترقی کی بنیاد تیار ہورہی ہے ۔ اس پر عظیم الشان تعمیر یقینی ہے ۔ اترپردیش کے وسائل کا ذکر کرتے ہوئے مودی نے کہا کہ یہ ریاست وسائل کے معاملے میں کافی دولت مند ہے ۔ یہاں ملیح آباد کے آم’ بھدوہی کے قالین’ بنارس کے زردوزی’ مرادآباد کا پیتل ‘ فیروز آباد کا کانچ’ آگرہ کا پیٹھا’ قنوج کا عطر’ اجودھیا میں رام کی لیلا تو متھرا میں کرشن کا را س ہے ۔ گنگا’ جمنا اور سرجو جیسی ندیاں ہیں۔ آئی آئی ٹی اور آئی آئی ایم ہیں تو بی ایچ یو بھی ہے ۔ مودی نے کہا کہ ٹکسٹائل اور سیاحت کے شعبے کی وجہ سے اترپردیش صرف مشرقی ہندوستان کا ہی نہیں بلکہ پورے ملک کا گروتھ انجن بن سکتا ہے ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ یوگی حکومت پوری سنجیدگی سے کسانوں خواتین کے ساتھ کیا گیا وعدہ پورا کررہی ہے ۔ پیداوار میں تقریباّ چالیس فیصد اضافہ ہوا ہے جس سے ملک کو بہت فائدہ ہورہا ہے ۔ یہاں کی ساٹھ فیصد عوام کام کرنے کے لائق ہے ۔ اترپردیش کو نئی بلندیوں کی طرف لے جایا جائے گا۔ اب یوپی میں سپرہٹ پرفارمنس دینے کے لئے یہاں کا بچہ بچہ تیار ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس ریاست کو دوسرے ریاست سے مسابقت کرنے کی ضرورت ہے ۔ مسابقت سے ترقی ہوگی۔ مہاراشٹر میں بھی حال ہی میں اسی طرح کا سمٹ ہوا تھا ۔ دونوں ریاستیں اگر ایک دوسرے سے مسابقت کریں تو ترقی کو کوئی نہیں روک سکے گا۔

TOPPOPULARRECENT