Monday , November 19 2018
Home / Top Stories / ملک میں مسلم پارٹی بنانا ناقابل عمل : قاری محمد عثمان منصورپوری 

ملک میں مسلم پارٹی بنانا ناقابل عمل : قاری محمد عثمان منصورپوری 

NEW DELHI, INDIA - OCTOBER 29: President Qari Mohammad Usman Jamiat Ulama-i-Hind during the peace unity conference Aman and Ekta Sammelan organized by Jamiat Ulama-I Hind at the Indira Gandhi Indoor Stadium, on October 29, 2017 in New Delhi, India. (Photo by Sonu Mehta/Hindustan Times via Getty Images)

کانپور : ہندوستان میں مسلم پارٹی بنانا ناقابل عمل ہے ۔بابری مسجد معاملہ کو الیکشن کے قریب آنے کی وجہ سے اچھالا جارہا ہے ۔ ملک میں امتیازی سلوک کے برتاؤ میں اضافہ ہوتاجارہا ہے۔مدارس اسلامیہ کا مقصد ریسرچ کرنا اور علوم دینیہ پر عبور حاصل کرنا ہے ۔

ان خیالات کا اظہار جمعیۃ علماء ہند کے صدر مولانا قاری سید محمد عثمان قاسمی منصور پوری نے اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کیا ۔قاری عثمان صاحب نے کہا کہ ملک کو انگریزوں کی غلامی سے آزادی دلانے کیلئے سبھی طبقات و مذاہب کے لوگوں نے مشترکہ محنت کی تھی ۔ انہوں نے کہا کہ ملک اتحادی اور ہم آہنگی سے ہی ترقی کرسکتا ہے ۔ قاری صاحب نے کہا کہ ایک ایسی سیاسی پارٹی بنانا جس میں صرف مسلمانوں کا ہی رول ہو قطعی درست نہیں اور یہ کام ناقابل عمل ہے ۔ جمعیۃ علماء ہند کسی خاص پارٹی کیلئے کوئی اپیل نہیں کرتی ۔ بابری مسجد کے متعلق سوال کئے جانے پر انہوں نے کہا کہ عدالت سے باہر معاملے کو انتخابات سے قبل اٹھایا جارہا ہے تا کہ ووٹ حاصل کئے جائیں ۔

مولانا نے مدارس کے قیام پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ ہمارا مقصد دین ماہرین اور ریسرچ اسکالرس پیدا کرنا ہے ۔تحفظ ختم نبوت اور تحفظ حدیث کے حوالہ سے قاری صاحب نے کہا کہ حدیث کے بغیر دین پر عمل کرنا نا ممکن ہے ۔نئے نئے فتنوں کی

TOPPOPULARRECENT