Friday , November 24 2017
Home / Top Stories / ملک میں وسط مدتی لوک سبھا انتخابات کی پیش قیاسی

ملک میں وسط مدتی لوک سبھا انتخابات کی پیش قیاسی

گورکھپور سانحہ پر وزیراعظم مودی اور قومی صدر بی جے پی امیت شاہ کے ردعمل بدبختانہ ، مایاوتی کا بیان
لکھنؤ۔ 16 اگست (سیاست ڈاٹ کام) صدر بی جے پی مایاوتی نے آج وزیراعظم نریندر مودی کو گورکھپور میں بچوں کی اموات پر ان کے تبصرے کی بنیاد پر تنقید کا نشانہ بنایا اور عوام سے اپیل کی کہ وہ بی جے پی قائدین کی ’’مسخ ذہنیت‘‘ کا اندازہ کریں۔ صدر بی ایس پی نے بی جے پی کے قومی صدر امیت شاہ کے ایک پریس کانفرنس میں بنگلورو میں بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے کہ یہ پہلی بار نہیں ہے کہ ایسا واقعہ اس وسیع ملک میں پیش آیا ہے، کہا کہ یہ دونوں بیانات حیرت انگیز اور المناک ہیں کہ وزیراعظم مودی اپنی پارٹی کے صدر امیت شاہ سے ایک قدم آگے بڑھ کر گورکھپور میں بچوں کی اموات کو جو مجرمانہ سرکاری لاپرواہی کی وجہ سے پیش آئی ہیں، آفات سماوی قرار دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک کے عوام کو اب سمجھ لینا چاہئے کہ بی جے پی قائدین کی ذہنیت کتنی مسخ شدہ اور غلط ہے۔ اپنی یوم آزادی تقریر میں کل مودی نے کہا تھا بعض اوقات آفات سماوی ایک بڑا چیلنج بن جاتی ہیں۔ اچھی بارشوں نے قوم کی خوشحالی میں زبردست حصہ ادا کیا ہے، لیکن موسم کی تبدیلی بعض اوقات آفات سماوی میں تبدیل ہوجاتی اور پریشانی لاتی ہے۔ مودی نے کہا کہ چند دن قبل ملک کے کئی حصوں میں آفات سماوی پیش آئے۔ چند دن قبل ایک ہاسپٹل میں بھی بے قصور بچے فوت ہوگئے۔ مایاوتی نے کہا کہ ہر شخص جانتا ہے کہ یہ سانحہ وسیع پیمانے پر کرپشن کا نتیجہ ہے۔

اس کے باوجود وزیراعظم نے اپنی پارٹی کی حکومت کو اس سانحہ کو آفت سماوی قرار دیتے ہوئے اپنی پارٹی کی حکومت بچانے کی کوشش کی ہے۔ اپنے وزراء اور دیگر کے خلاف کارروائی کرنے کے بجائے مودی اور شاہ اَنا کا مظاہرہ کررہے ہیں اور آمرانہ انداز میں رویہ اختیار کررہے ہیں۔ بی ایس پی سخت ترین الفاظ میں اس کی مذمت کرتی ہے۔ مودی حکومت کے سرکاری کرپشن کے خلاف جنگ کے دعوؤں کو کھوکھلا قرار دیتے ہوئے مایاوتی نے کہا کہ مرکز نے گزشتہ تین سال میں کوئی بھی لوک پال قائم نہیں کیا ہے۔ ریاستوں میں ان کی حکومت بدعنوان وزراء اور دیگر کے خلاف کارروائی سے گریز کررہی ہے۔ صدر بی ایس پی نے دعویٰ کیا کہ بی جے پی چاہتی ہے کہ لوک سبھا انتخابات آئندہ سال کے اختتام تک دیگر ریاستوں کے اسمبلی انتخابات کے ساتھ منعقد کئے جائیں کیونکہ بی جے پی زیراقتدار ریاستوں میں جہاں ہندی داں عوام کی اکثریت ہے، عوام کی فلاح و بہبود کیلئے کم از کم دیانت داری سے کام ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ شاہ نے حال ہی میں چیف منسٹر یوپی یوگی آدتیہ ناتھ کی برطرفی کا مطالبہ مسترد کردیا ہے اور کہا ہے کہ کانگریس زیراقتدار ریاستوں میں بھی گورکھپور سانحہ جیسے واقعات قبل ازیں پیش آچکے ہیں۔ اگر یہ آفت سماوی ہے تو یوگی جی سے کانگریس کا استعفیٰ کا مطالبہ کرنا شاید پہلا واقعہ ہے جو اس وسیع ملک میں پیش آیا ہے۔ ایسے واقعات کانگریس زیراقتدار کئی ریاستوں میں پیش آچکے ہیں۔ اس لئے شاید قومی صدر بی جے پی نے یوگی کے استعفیٰ کا مطالبہ مسترد کردیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT