Tuesday , December 19 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ملک کا تعلیمی ڈھانچہ مولانا آزاد کی مرہون منت : جوائنٹ کلکٹر

ملک کا تعلیمی ڈھانچہ مولانا آزاد کی مرہون منت : جوائنٹ کلکٹر

محبوب نگر ۔12 ۔ نومبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) مولانا ابوالکلام آزاد کی زندگی پر ہندوستانی کیلئے مشعل راہ ہے۔ مختصر وقت میں ان کی حیات اور کارناموں کا تذکرہ ممکن نہیں ۔ ان خیالات کا اظہار رام کرشن جوائنٹ کلکٹر نے کل مولانا آزاد کے یوم پیدائش کے موقع پر منعقدہ یوم اقلیتی بہبود پروگرام سے مخاطب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے مولانا آزاد کو زبردست خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ ماقبل آزادی اور مابعد آزادی ان کی خدمات ہمیشہ کیلئے یاد رکھی جائیں گی انہوں نے اپنی صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے مذہبی تعلیم میں کمال پیدا کرنے کے ساتھ اپنے سیاسی تدبر سے عالمی سطح پر اپنی قابلیت کا لوہا منوالیا اور ہندوستان کے صف اول کے موجود مجاہدین آزادی میں جگہ بنائی ۔ ہندو مسلم اتحاد کے حقیقی علمبردار تھے اور ہندوستان کو سیکولر بنیادوں پر کھڑا کرنا چاہتے تھے ۔ جوائنٹ کلکٹر نے پہلے وزیر تعلیم کی حیثیت سے ان کی خدمات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ آج کا تعلیمی ڈھانچہ یونیورسٹیوں کا جال ، سائنس اور ٹکنالوجی اداروں کا قیام انہیں کی مرہون منت ہے ۔ انہوں نے طلباء و طالبات کو مشورہ دیا کہ وہ مولانا کی زندگی کا مطالعہ کریں اور ان کو اپنا آئیڈیل بنائیں ۔پروگرام کی صدارت ضلع کلکٹر سری دیوی کرنے والی تھیں جن کی عدم موجودگی میں مہمان خصوصی کی حیثیت سے شریک جوائنٹ کلکٹر رام کرشن نے صدارت سنبھالی ۔ یہ پروگرام ٹاون ہال محبوب نگر میں منعقد کیا گیا تھا ۔ سینئر ٹی آر ایس قائد جناب امتیاز اسحق نے کہا کہ ہند کے پہلے وزیر تعلیم کی یوم ولادت کے موقع پر ہمیں اپنا تعلیمی احتساب کرنا ہوگا ۔ عبدالہادی ایڈوکیٹ و کونسلر نے کہا کہ آزادی ملک کی لڑائی میں بے شمار مسلمانوں نے جانوں کی قربانی دی تقریباً سب کو بھلا دیا گیا لیکن مولانا آزاد کی یاد باقی رہ گئی ۔ انہوں نے مولانا کی خدمات کو بھرپور خراج پیش کیا ۔ پروگرام میں عوامی نمائندوں اور اعلی عہدیداروں کی عدم موجودگی باعث تشویش ہے ۔ تقی حسین تقی نے خراج پیش کرتے ہوئے کہا کہ یو جی سی کا قیام ، جدید ٹکنالوجی سے آراستہ ادارے مولانا ہی کی حکمت عملی کا نتیجہ ہیں ۔ مرزا قدوس بیگ نے کہا کہ مسلمان مجاہدین آزادی تعصب ، تنگ نظری کا شکار ہورہے ہیں ۔ محمد حنیف آرکیٹکٹ نے مطالبہ کیا کہ مدارس میں دیگر مجاہدین آزادی کے ساتھ ساتھ مولانا آزاد کی تصویر لگائی جائے ۔ محسن خان نے کہا کہ آج مسرت بھرے موقع پر اعلان کرتا ہونکہ اعلی تعلیم کے خواہشمند معاشی طورپر کمزور طلباء کی مدد کی جائیں گی ۔ بابر شیخ نے طلباء کو مشورہ دیا کہ وہ معمولی تعلیم اور معمولی عہدوں پر اکتفا نہ کریں بلکہ اعلی تعلیم اور اعلی عہدوں کیلئے محنت کریں ۔ تمام مقررین نے ایم ایل اے ، ایم پی ، ضلع کلکٹر و دیگر کی عدم موجودگی پر احتجاج کیا ۔ ساجدہ سکندر نے طلباء و طالبات کو درپیش مسائل کی طرف توجہ مبذول کروائی ۔ محمد ظہیرالدین ڈیولپمنٹ آفیسر ہینڈلوم اینڈ ٹکسٹائلز نے نظامت کے فرائض انجام دئے ۔ شہ نشین پر سید تقی الدین سکریٹری جے پی آئی ٹی سی ، آر ڈی او ہنمنت ریڈی ، گویند راجو ، معراج اللہ خان ، ڈپٹی ڈی ای اوز حافظ ادریس سراجی ، سعادت اللہ حسینی نمائندہ کونسلر ، عبدالرحیم ٹی آر عبدالقادر ، عمادالدین ، یوسف بن ناصر موجود تھے ۔ جلیل غوری نے انتظامات کئے ۔ اس موقع پر جناب صادق علی فریدی ، حلیم بابر ، رشید رہبر و دیگر معززین موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT