Sunday , December 17 2017
Home / Top Stories / ملک کو کالے دھن سے پاک کرنا اولین ترجیح، سرمایہ کاری کی ترغیب

ملک کو کالے دھن سے پاک کرنا اولین ترجیح، سرمایہ کاری کی ترغیب

KUALA LUMPUR 14 DECEMBER 2016. Perdana Menteri, Datuk Seri Najib Tun Razak bersama Perdana Menteri India, Shri Narendra Modi berbual secara langsung melalui video ketika program "The Economic Times-Asian Business Leaders Conclave" di Hotel Mandarin Oriental. NSTP/SAIRIEN NAFIS

مودی کا ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ ملائیشیا کے عوام سے خطاب، وزیراعظم نجیب رزاق بھی شامل
نئی دہلی۔ 14 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) نوٹوں کی تنسیخ کے اپنے فیصلے کے پس منظر میں وزیراعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ ملک کے نظام کو کالے دھن اور کرپشن سے پاک کرنا ان کی اولین ترجیح ہے۔ وہ روزگار کے مواقع اور خودروزگار مواقع پیدا کرنے کی ضرورت پر زور دے رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ فی الحال ہندوستان معاشی انقلابی تبدیلی کے دور سے گذر رہا ہے۔ ہم ڈیجیٹل رقم کے بغیر معیشت کی سمت پیشرفت کررہے ہیں۔ وہ ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ ’’اکنامک ٹائم، ایشیائی بزنس لیڈرس چوٹی کانفرنس 2016ء‘‘ کوالالمپور سے اپنے ملائیشیائی ہم منصب نجیب رزاق کے ساتھ خطاب کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ فی الحال نظام کو کالے دھن اور کرپشن سے پاک کرنا ان کی اولین ترجیح ہے۔ وہ 8 نومبر کو اعلیٰ کرنسی نوٹوں کی تنسیخ کے اپنے فیصلے کا دفاع کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان میں معاشی عمل ایسی سرگرمیوں کی تیاری کررہا ہے جو روزگار اور خود روزگار مواقع پیدا کرنے کیلئے اہمیت رکھتے ہیں۔ وزیراعظم نے حاضرین سے کہا کہ کئی اقدامات کئے گئے ہیں تاکہ عظیم تر راست غیرملکی سرمایہ کاری کی ترغیب دی جاسکے۔ انہوں نے اس کے لئے کئے ہوئے کئی اقدامات کی ایک فہرست سنائی ۔ انہوں نے دستور میں ترمیم کا بھی حوالہ دیا جس کے ذریعہ جی ایس ٹی کی راہ ہموار ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ اس قانون سے ہندوستان میں بالواسطہ ٹیکس اندازی کے نظام کی مکمل طور پر اصلاح ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ نے اس قانون کی منظوری دے دی ہے۔ جیسا کہ توقع تھی۔ اس قانون کو 2017ء میں نافذ کیا جائے گا۔ انہوں نے ہندوستان سے باہر مقیم افراد کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان ہی واحد اچھی منزل نہیں ہے، تاہم ہندوستان میں قیام کرنے کا فیصلہ اچھا ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے راست غیرملکی سرمایہ کاری کے لئے نئے شعبہ کھول لئے ہیں۔ اعظم ترین حد میں تبدیلی کی ہے تاکہ موجودہ شعبوں میں مزید سرمایہ کاری کی جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی کوشش ہے کہ ایک بڑی راست غیرملکی سرمایہ کاری پالیسی میں اصلاحات جاری رہیں اور سرمایہ کاری کی شرائط کو تازہ بنا دیا جائے۔ مکمل راست غیرملکی سرمایہ کاری گزشتہ ڈھائی سال کے دوران 130 ارب امریکی ڈالر تک پہنچ چکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ پالیسی میں مثبت تبدیلی کا نتیجہ ہے۔ علاوہ ازیں ہندوستان نے باقاعدگی اور سرمایہ کاری کے لئے سازگار ماحول موجود ہے۔ اندرون ملک اور غیرملکی سرمایہ کاروں نے اس بات کو تسلیم کیا ہے۔ ’’میک اِن انڈیا‘‘ کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ فی الحال ہندوستان میں صنعتی سرگرمی میں اتنا اضافہ ہوگیا ہے کہ پہلے کبھی نہیں ہوا تھا۔ ہم دنیا میں چھٹویں سب سے بڑے پیداواری ملک بن گئے ہیں۔ حکومت عظیم حد تک معقولیت کا مظاہرہ کررہی ہے۔ لائسنس جاری کرنے کا نظام اور ایک ہی چھت تلے تمام مسائل کی یکسوئی کا نظام قائم کیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT