Friday , December 15 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ملک کیلئے بزرگان ملت کی بے شمار قربانیاں

ملک کیلئے بزرگان ملت کی بے شمار قربانیاں

محبوب نگر میں جلسہ ، ڈاکٹر سید وحید شاہ اور دیگر کا خطاب
محبوب نگر /13 اگست ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) مدینہ پبلک لائبریری شیخ سالم زبیدی انسٹی ٹیوٹ آف کمپیوٹرس سائنس و اسٹیڈی سرکل بہادر یار جنگ کے زیر اہتمام 3 عنوانات پر ایک جلسہ کا انعقاد عمل میں لایا گیا ۔ جلسہ کو مخاطب کرتے ہوئے ڈاکٹر سید وحید شاہ پروفیسر نور کالج نے کہا کہ ’’ جلسہ یاد بزرگان ملت ‘‘ کا انعقاد نئی نسل کو اپنے اکابرین سے واقف کروانے کا بہترین موقع ہے ۔ بزرگان ملت ہند مولانا ابوالکلام آزاد سے ڈاکٹر عبدالکلام تک آزادی ملک ، سرحدات کی حفاظت ، تعلیم اور سائنس کے میدانوں میں بے شمار قربانیوں کی ایک تاریخ ہے ۔ رادھا امر چیرپرسن بلدیہ نے کہا کہ عبدالکلام نہ صرف صدر جمہوریہ ہند تھے بلکہ معلم ہند و سائنٹسٹ کی حیثیت سے طلباء و نوجوانوں میں تعلیمی تحریک پیدا کی ۔ اسرو کے چیف کی حیثیت سے سائنسدانوں کی رہبری کی ۔ فاروق حسین صدر تلنگانہ یونین ، انجینئیرنگ کالج کے طلباء اکبر حسین شہید زبیدی ، حسنات حیدر ، یسین یاور مراد نے مسعود علی فاروقی صدر مدینہ سوسائٹی ، عبدالکریم ، امام جامع مسجد ، امجد علی صاحب صدر تعمیر ملت ، نورالدین انجینئیر ، خواجہ بھائی ،  ظہیرالدین لکچرر ، ایاز الدین لکچرر ، سید مبشر الدین صدر مدینہ مسجد جملہ 17 مرحومین بشمول جناب خالد زبیدی اور اے پی جے عبدالکلام کو خراج عقیدت پیش کیا ۔ مولانا محمد محسن پاشاہ قادری نقشبندی نے حضرت عثمان غنیؓ کے قول’’ قبر سب سے بڑا واعظ ‘‘ پر مفصل خطاب کیا اور دعائے مغفرت فرمائی ۔ مولانا بختیار الدین نظامی نے بھی موت و حیات پر سیر حاصل خطاب کیا ۔ ڈاکٹر شیخ سالم عبداللہ زبیدی نے فتنہ داعش ، جنگ مجاز و  یمن ‘‘ کے عالم اسلام پر اثرات پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ یہودی نصاریٰ کی سازشوں کے تحت فتنہ داعش دراصل امریکہ کی قدیم پالیسی ، اسرائیل اور داعش سے عرب ممالک کو خوفزہ کرکے خود کو عالم اسلام کا محافظ ثابت کرنے کی ناکام کوشش ہے ۔ عربوں کے تیل کی دولت کو لوٹ کر ہتھیار فروخت کرنے کی کوششیں کاروبار کے سواء کچھ نہیں ۔ جنگ مجاز و یمن ایران مسلکی اختلافات کو ہوا دے  کر بندرگاہ عدن پر قبضہ کرکے سعودی عرب میں عدم استحکام پیدا کرنے کی سازش ہے ۔ آخر میں محفل نعت مجیب الرحمن کی نگرانی میں منعقد ہوئی ۔ جس میں صادق فریدی ، ظہیر ناصری ، کلیم اللہ حسینی نے کلام سنایا ۔ ہارون رشید ایڈوکیٹ معتمد مدینہ پبلک لائبریری نے خطبہ استقبالیہ دیا ۔ ندیم مجازی نے خیرمقدم کیا ۔ جلیل مشرف ، شاہد نور کے شکریہ پر جلسہ اختتام کو پہونچا ۔ عبدالہادی ایڈوکیٹ کے مکان پر ظہرانہ ترتیب دیا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT