Saturday , November 25 2017
Home / شہر کی خبریں / ملک کی ترقی میںاساتذہ کا بھی اہم رول

ملک کی ترقی میںاساتذہ کا بھی اہم رول

پریس کلب بشیرباغ پر یوم اساتذہ تقریب، اساتذہ کا خطاب
حیدرآباد ۔ 12 ستمبر (سیاست نیوز) یہ ملک جو آج ترقی کی راہ پر گامزن ہے، دراصل اس میں اساتذہ کا بڑا اہم رول رہا ہے جنہوں نے اپنے شاگردوں کو بڑی دلجوئی کے ساتھ پڑھایا اور اس طرح تعلیم و تربیت دی کہ وہ مستقبل میں ملک کے معمار بن سکے۔ ڈاکٹر سروے پلی رادھاکرشن نے تعلیم اور اس کے اصول و ضوابط دیئے۔ اگر اساتذہ، لکچررس ان کے اصولوں پر کاربند ہوں تو یہ ملک ایک مثالی دھارے میں شامل ہوجائے گا۔ مقررین نے آج پریس کلب بشیرباغ میں ان خیالات کا اظہار کیا جو تلنگانہ سٹیزن کونسل کی جانب سے منعقد ہوا۔ اس جلسہ کی صدارت ڈاکٹر محمد اختر علی نے کی۔ اس موقع پر ڈاکٹر اور پلی رادھا کرشن کی یاد میں 20 اساتذہ، لکچررس اور پروفیسرس کو ودھیاشیرومنی ایوارڈس تالیوں کی گونج میں دیئے گئے۔ ڈاکٹر راج نارائن مدھیراج صدر تلنگانہ سٹیزن کونسل نے صدارت کی۔ پی چندرشیکھر سابق وزیر قانون نے ڈاکٹر سروے پلی رادھا کرشنن کی تعلیمی خدمات پر روشنی ڈالی اور کہا کہ ان کی زندگی کی ابتداء پیش تدریس سے وابستہ ہونے پر ہوئی جو اس میدان میں ایسا ٹھوس کام کیا کہ انہوں نے لوگوں کے درد دل کو اپناکر خدمت کی یہاں تک انہیں صدرجمہوریہ ہند کے عہدہ جلیلہ پر فائز کیاگیا۔ جسٹس وی سیتاپتی نے کہا کہ میرے نزدیک استاد کی بڑی قدر و قیمت ہے اور جو مجھے یہ مقام ملا۔ اپنے استاد کی عزت، قدر و منزلت کے بناء حاصل ہوا۔ اس لئے نئی نسل کو چاہئے کہ استاد کی ہمیشہ سے عزت، ادب و احترام کو ملحوظ رکھیں۔ جسٹس ای اسمعیل رکن ریاستی انسانی حقوق کمیشن نے کہا کہ نوجوان کیلئے ضروری ہیکہ وہ کتابوں سے اپنے آپ کو وابستہ کریں اس لئے کہان کتابوں میں ان افراد کی زندگیاں لکھی ہوئی ہیں جنہوں نے تعلیم، خدمت خلق اور ہمدردی کے انمٹ نقوش چھوڑے ہیں۔ پروفیسر سی ایچ وینکٹ رمنا دیوی ڈین فیکلٹی آف سائنس عثمانیہ یونیورسٹی، ڈاکٹر محمد عاصم، شریمتی گیتا مشرا، اختر شریف، محمد مبشر محی الدین پرسنا بنڈاری اور دوسروں نے استاد کی اہمیت، قدر و منزلت اور موجودہ دور میں جو معاملات نئی نسل اساتد کے ساتھ کررہی ہے اس پر اظہارخیال کیا۔ اس موقع پر پروفیسر جی سریش لعل، ڈاکٹر بی سدھا، ڈاکٹر محمد عبدالحمید، ڈاکٹر وملاریڈی، ایس کرن کماری، سیداحمد، سید امیر حسین، عبدالقدیر، مترا جان، محترمہ فرحین بیگم اور دوسروں کو ایوارڈس سے نوازا گیا۔ اس موقع پر ڈاکٹر روی تیجا، کیپٹن جے سدھا، محمد سلیم اور دوسروں نے انتظامات کی نگرانی کی۔ سروجنی نائیڈو، ونیتا مہاودھیالیہ اور کستوربا گاندھی ویمن ڈگری کاجلج، سینٹ ایئسن ڈگری کالج کے طالبات نے رنگارنگ کلچرل پروگرام پیش کیا۔

TOPPOPULARRECENT