Saturday , July 21 2018
Home / سیاسیات / ملک کی تین ریاستوںمیں انتخابی تواریخ کا اعلان

ملک کی تین ریاستوںمیں انتخابی تواریخ کا اعلان

تریپورہ 18فروری، میگھالیہ اور ناگالینڈ میں 27 فروری کو رائے دہی :چیف الیکشن کمشنر

نئی دہلی18 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) تریپورہ میں اسمبلی انتخابات 18فروری کو اور میگھالیہ اور ناگالینڈ میں 27فروری کو ہوں گے۔ جبکہ تینوں ریاستوں کے ووٹوں کی گنتی تین مارچ کو ہوگی۔ چیف الیکشن کمشنر اچل کمار جیوتی نے آج یہاں پریس کانفرنس میں یہ اعلان کیا،اس کے ساتھ ہی تینوں ریاستوں میں انتخابی ضابطہ اخلاق فوری طورپر نافذ ہوگیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ تریپورہ میں 24جنوری کو اور میگھالیہ اور ناگالینڈ میں 31جنوری کو نوٹیفکیشن جاری کیا جائے گا۔تریپورہ میں پرچہ نامزدگی داخل کرنے کی آخری تاریخ 31جنوری ہے۔ پرچہ نامزدگی کی جانچ کا کام یکم فروری کو ہوگا۔ نام واپس لینے کی آخری تاریخ 3فروری ہے۔میگھالیہ اور ناگالینڈ میں 7فروری تک پرچہ نامزدگی داخل کئے جاسکیں گے۔ ان کی جانچ کا کام اگلے دن 8فروری کو ہوگا جبکہ نام واپس لینے کی آخری تاریخ 12فروری طے کی گئی ہے۔میگھالیہ اسمبلی کی مدت 6مارچ کو،تریپورہ کی 13مارچ اور ناگالینڈ کی 14مارچ کو ختم ہورہی ہے۔ تینوں اسمبلیوں میں 60-60 سیٹیں ہیں۔الیکشن کمیشن کے مطابق ان ریاستوں میں 5مارچ سے پہلے انتخابی عمل پورا ہوجانا چاہئے۔تریپورہ میں رجسٹرڈ رائے دہندگان کی کل تعداد 25لاکھ 69ہزار ،میگھالیہ میں 18لاکھ 30ہزار اور ناگالینڈ میں 11لاکھ 89ہزار ہے۔ان ریاستوں میں الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کے ساتھ پہلی بار وی وی پیٹ مشینوں کا استعمال کیا جائیگا۔ اس بارے میں رائے دہند گان میں شعور بیداری مہم چلائی گئی ہے۔تریپورہ میں کل 3،214،میگھالیہ میں 3،082اور ناگالینڈ میں 2،187پولنگ بوتھ بنائے گئے ہیں۔ووٹروں کو ان کے پولنگ اسٹیشنوں کے بارے میں معلومات فراہم کرانے کے لئے ووٹنگ سے پہلے فوٹووالی ووٹ کی پرچی کے ساتھ ہی ووٹر ڈائرکٹری بروشرگھر گھر پہنچانے کا انتظام بھی کیا گیا ہے۔ پولنگ اسٹیشنوں کے نزدیک ان کی مدد کیلئے الگ سے امدادی مرکز بھی ہوں گے۔ خفیہ ووٹنگ کو مکمل طورپر کامیاب بنانے کیلئے ووٹ کے پیٹیوں کے آس پاس بنائے جانے والے کارڈ بورڈ کے گھیرے کی اونچائی 25انچ سے بڑھاکر 30انچ کی گئی ہے۔ تینوں ریاستوں کے پولنگ اسٹیشنوں پر نگرانی کیلئے الیکشن کمیشن کے سپروائزروں کے ساتھ ہی پورے انتخابی عمل کی ویڈیوگرافی کا انتظام بھی کیاگیا ہے۔ ووٹ کی پیٹیاں رکھے جانے والے مقامات اور امیدواروں کے ذریعہ پرچہ نامزدگی داخل کرنے اور ان کی جانچ کے عمل کی بھی ویڈیو گرافی کی جائیگی۔انتخابی خرچوں پر سخت نگرانی کا بھی انتظام کیاگیا ہے۔ تینوں ریاستوں میں ہر ایک امیدوار کے لئے انتخابی خرچ کی حد 20-20لاکھ روپے طے کی گئی ہے۔ سبھی امیدواروں کو انتخابی نتائج کا اعلان ہونے کے 30دن کے اندر اپنے انتخابی خرچوں کی تفصیل دینی ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT