Saturday , June 23 2018
Home / Top Stories / ممبئی حملوں کے سازشی لکھوی کو پاکستانی عدالت کی ضمانت

ممبئی حملوں کے سازشی لکھوی کو پاکستانی عدالت کی ضمانت

اسلام آباد / نئی دہلی 18 ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک ایسے فیصلے میں جس نے ہندوستان میں برہمی کی لہر پیدا کردی ہے ،پاکستان کی عدالت نے لشکرطیبہ کے آپریشنس کمانڈر ذکی الرحمن لکھوی کو آج ضمانت منظور کردی جو ممبئی میں 2008 ء کے دہشت گردانہ حملوں کا اصل سازشی ہے ۔ واضح رہے کہ ایک دن قبل ہی وزیر اعظم نواز شریف نے کہا تھا کہ طالبان کو اچھے اور بر

اسلام آباد / نئی دہلی 18 ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک ایسے فیصلے میں جس نے ہندوستان میں برہمی کی لہر پیدا کردی ہے ،پاکستان کی عدالت نے لشکرطیبہ کے آپریشنس کمانڈر ذکی الرحمن لکھوی کو آج ضمانت منظور کردی جو ممبئی میں 2008 ء کے دہشت گردانہ حملوں کا اصل سازشی ہے ۔ واضح رہے کہ ایک دن قبل ہی وزیر اعظم نواز شریف نے کہا تھا کہ طالبان کو اچھے اور برے طالبان کے زمروں میں تقسیم نہیں کیا جاسکتا ۔عدالتی فیصلہ پر برہم ہندوستان نے پاکستان سے کہا ہے کہ لشکر طیبہ کمانڈر لکھوی کی ضمانت پر رہائی اس کیلئے ناقابل قبول ہے اور اس فیصلہ کو کالعدم کردینے کیلئے عاجلانہ اقدامات کا مطالبہ کیا ۔ راولپنڈی کی عدالت کی جانب سے اقوام متحدہ کے نامزد54 سالہ دہشت گرد کو ضمانت عطا کرنے پر شدید رد عمل میں نہیں دہلی نے اسلام آباد پر واضح کیاکہ دہشت گردی کے تئیں الگ الگ طرز عمل نہیں ہوسکتا ہے،اور زور دیا کہ اسے جان لینا چاہئے کہ دہشت گردوں سے کبھی بھی کوئی مفاہمت نہیں کی جاسکتی ہے ۔

وزارت امور خارجہ کے ترجمان سید اکبر الدین نے کہا ، ’’ہم قبول نہیں کرسکتے کہ لشکر طیبہ کا چیف آپریشن کمانڈر ذکی لکھوی جو ممبئی دہشت گردانہ حملوں کے کلیدی سازشی عناصر میں ہے، جس میں کئی بے قصور افراد ہلاک ہوگئے ،ایسا شخص جسے اقوام متحدہ سلامتی کونسل نے بین الاقوامی دہشت گرد نامزد کیا ہے ،اسے ضمانت پر رہا کیا جارہا ہے‘‘۔ اُدھر استغاثہ کے سربراہ چودھری اظہر نے بتایا کہ انسداد دہشت گردی عدالت اسلام آباد کے جج کوثر عباس زیدی نے آج لکھوی کو ضمانت فراہم کردی ہے ۔ 54 سالہ لکھوی اور چار دوسروں نے کل ہی ضمانت کی درخواست داخل کی تھی جبکہ وکلا نے پشاور اسکول قتل عام کے خلاف بطور احتجاج ہڑتال کی تھی ۔ چودھری اظہر نے کہا کہ استغاثہ کو مزید گواہوں کو عدالت میں پیش کرنا تھا ۔تاہم اس سے قبل ہی یہ فیصلہ سنادیا گیا ۔

انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ توقع کے مطابق نہیں رہا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم ایسے فیصلے کی امید نہیں کر رہے تھے کیونکہ ہم کو ابھی خاطر خواہ تعداد میں گواہوں کو عدالت میں پیش کرنا تھا ۔ ہم عدالت کے تفصیلی حکمنامہ کا انتظار کر رہے ہیں جس کے بعد ہم اس فیصلے پر مزید رد عمل کا اظہار کریں گے ۔ لکھوی کے وکیل راجہ رضوان عباسی نے بتایا کہ عدالت نے اس لئے ضمانت فراہم کی کیونکہ لکھوی کے خلاف ثبوت بہت کم ہیں۔ ہندوستانی سیاسی حلقوں میں اس فیصلے کے نتیجہ میں برہمی پیدا ہوگئی ہے اور ان جماعتوں نے پاکستان پر دہشت گردوں کو پناہ دینے کا الزام عائد کیا ہے ۔ لکھوی کو ضمانت کی فراہمی کے مسئلہ پر اسلام آباد میںہندوستانی قونصل خانہ کی جانب سے شدید رد عمل کی تیاری کی جا رہی ہے ۔ رضوان عباسی نے کہا کہ وکلائے صفائی کی جانب سے جلد ہی دوسرے ملزمین کی بھی درخواست ضمانت پیش کی جائے گی ۔ کہا گیا ہے کہ اس درخواست پر سماعت سکیوریٹی وجوہات کی بنا پر راولپنڈی کی ادیالہ جیل میں ہوئی تھی ۔ جج نے ضمانت کی منظوری کے بعد آئندہ سماعت 7 جنوری تک ملتوی کردی ہے ۔ اس دوران ہندوستان میں وزارت داخلہ نے ایک بیان میں کہا کہ یہ ایک بدبختانہ بات ہے اور خاص طور پر ایسے وقت میں جبکہ پشاور قتل عام دو روز قبل ہی ہوا ہے ۔ اس فیصلے کے خلاف پاکستان کو عدالت بالا میں اپیل کرنی چاہئے ۔ پاکستان کو ممبئی حملے کیس کو اس کے منطقی انجام تک پہنچانے کیلئے سنجیدگی کا مظاہرہ کرنے کی ضرورت ہے ۔

لکھوی کی ضمانت کیلئے پاکستان ذمہ دار :راجناتھ
اس دوران وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے پاکستان کو ممبئی دہشت گردانہ حملوں کے سرغنہ ذکی الرحمن لکھوی کو منظورہ ضمانت کیلئے پاکستان کو مورد الزام ٹہراتے ہوئے کہا کہ اس کیس کو آگے بڑھانے میںشاید استغاثہ کی طرف سے بعض کوتاہیاں ہوئی ہیں۔ لکھوی کو ضمانت کو ’’نہایت بدبختانہ‘‘ قرار دیتے ہوئے راجناتھ نے امید ظاہر کی کہ حکومت پاکستان زیریں عدالت کے حکمنامہ کے خلاف برتر عدالت سے رجوع ہوکر اس فیصلہ کی منسوخی کو یقینی بنائے گی۔وزیر داخلہ پاکستانی عدالت کے فیصلہ کے چند گھنٹوں میں طلب کردہ پریس بریفنگ سے مخاطب تھے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان نے ممبئی حملہ کیس سے مہارت سے نمٹا اور ایک دہشت گرد اجمل قصاب کو پھانسی دیتے ہوئے انصاف کی تکمیل کی۔

TOPPOPULARRECENT