Wednesday , February 21 2018
Home / Top Stories / ممبئی کے جلسہ عام میں اسد الدین اویسی پر جوتا پھینکا گیا

ممبئی کے جلسہ عام میں اسد الدین اویسی پر جوتا پھینکا گیا

AIMIM Chief Asaduddin Owaisi on way to hold a press conference in Lucknow on friday.Express photo by Vishal Srivastav 17.02.2017

ممبئی ۔ /23 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) ایک نامعلوم شخص نے کل ہند مجلس اتحادالمسلمین کے صدر اسد الدین اویسی پر آج جوتا پھینکا جبکہ وہ شمالی ممبئی کے علاقہ ناگ پاڑہ میں ایک جلسہ عام سے خطاب کررہے تھے ۔ پولیس کے بموجب رکن پارلیمنٹ اس واقعہ میں زخمی نہیں ہوئے ۔ وہ جلسہ عام میں 9.45 بجے شب جبکہ یہ واقعہ پیش آیا طلاق ثلاثہ کی مخالفت میں تقریر کررہے تھے ۔ انہوں نے نیوز ایجنسی پی ٹی آئی سے کہا کہ وہ جمہوری حقوق کیلئے اپنی جان دینے بھی تیار ہیں ۔ یہ تمام عوام کو مایوس کرنے کی کوششیں ہیں جو دیکھ نہیں سکتے کہ طلاق ثلاثہ پر حکومت کے فیصلہ کو عوام میں بحیثیت مجموعی اور مسلمانوں میں بحیثیت خصوصی قبول نہیں کیا گیاہے ۔ یہ لوگ (ان پر جوتا پھینکنے والا شخص) وہی ہیں جو مہاتما گاندھی ، گوئند پنسارے اور نریندر ڈابھولکر کے قاتلوں کے نظریہ کے پیرو ہیں ۔ اسد الدین اویسی نے دعویٰ کیا کہ ایسے واقعات ایسے لوگوں کی ایماء پر پیش آتے ہیں جو نفرت کے نظریات کے پیرو ہیں اور ان کے حوصلے ہر گزرتے دن کے ساتھ بلند ہوتے جارہے ہیں ۔ اس سے انہیں صداقت بیانی سے کوئی نہیں روک سکتا ۔ ڈی سی پی زون III وریندر مشرا نے کہا کہ پولیس سی سی ٹی وی کی جھلکیوں کا جائزہ لے رہی ہے ۔ مجلسی رکن اسمبلی امتیاز جلیل نے کہا کہ اویسی زخمی نہیں ہوئے اور اس واقعہ کے بعد بھی اپنی تقریر جاری رکھی ۔اپنے ٹوئٹر پر انہوں نے کہا کہ اسد الدین اویسی نے اپنی تقریر جاری رکھتے ہوئے کہا کہ وہ اس نوعیت کی تمام کارستانیوں کو نظرانداز کرتے ہیں ۔ وہ بالواسطہ طور پر ان پر جوتا پھینکنے کے واقعہ کا حوالہ دے رہے تھے ۔ امتیاز جلیل نے کہا کہ صدر مجلس محفوظ ہیں اور انہوں نے اس واقعہ کا کوئی اثر نہیں لیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT