Tuesday , April 24 2018
Home / Top Stories / ممتابنرجی سے ملاقات ‘ وفاقی محاذ کے قیام کی کوشش کا آغاز

ممتابنرجی سے ملاقات ‘ وفاقی محاذ کے قیام کی کوشش کا آغاز

ہم خیال جماعتوں سے مذاکرات ہونگے ۔ چیف منسٹر مغربی بنگال سے ملاقات کے بعد چندر شیکھر راؤ کا بیان
کولکاتہ 19 مارچ ( پی ٹی آئی ) آئندہ لوک سبھا انتخابات سے قبل ایک وفاقی محاذ قائم کرنے کے امکانات کا جائزہ لینے اقدامات کا آغاز کرتے ہوئے چیف منسٹر تلنگانہ کے چندر شیکھر راؤ نے آج اپنی مغربی بنگال کی ہم منصب ممتابنرجی سے ملاقات کی ۔ چندر شیکھر راؤ نے اس ملاقات کو اس سارے عمل کی شروعات قرار دیا ہے ۔کولکتہ سیکریٹریٹ میں ممتابنرجی سے ملاقات کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے چندر شیکھر راؤ نے کہا کہ اس ملاقات کے ساتھ ایک وفاقی محاذ کے قیام کی کوششیں شروع ہوگئی ہیں اور اب وہ ہم خیال جماعتوں سے بات چیت کرینگے ۔ ممتابنرجی سے ان کی ملاقات دو گھنٹے طویل رہی ۔ انہوں نے کہا کہ ہم ایک حقیقی وفاقی محاذ بنانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ آج کی ملاقات وفاقی محاذ کی شروعات ہے ۔ اس محاذ کے سلسلہ میں ہم نے ثمرآور بات چیت کا آغاز کیا ہے ۔ ہم قومی سطح پر کانگریس اور بی جے پی کے متبادل کی تلاش کیلئے تمام ہم خیال جماعتوں سے بات چیت کرینگے ۔ اس موقع پر ممتابنرجی بھی چندر شیکھر راؤ کے ساتھ تھیں۔ کے سی آر نے کہا کہ ملک کو کسی اچھے متبادل کی ضرورت ہے ۔ ملک کو کسی کرشمہ کی ضرورت ہے ۔ اگر بی جے پی جائے اور کانگریس آئے تو کیا یہ کوئی کرشمہ ہوگا ؟ ۔ اس سوال پر کہ اس مجوزہ محاذ کی قیادت کون کرینگے چندر شیکھر راؤ نے کہا کہ اس کی اجتماعی قیادت ہوگی اور یہ عوام کا محاذ ہوگا ۔ اس موقع پر ممتابنرجی نے کہا کہ ایک وسیع تر محاذ کے قیام کیلئے بات چیت ابھی شروع ہوئی ہے اور اس میں کوئی جلد بازی کی ضرورت نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت میں ایسی صورتحال پیدا ہوتی ہے جس میں تمام سیاسی جماعتوں کو مل کر کام کرنا پڑتا ہے ۔ ہم نہیں چاہتے کہ ایک مخصوص پارٹی ملک پر حکومت کرے اور جو وہ چاہے کرتی پھرے ۔ چیف منسٹر مغربی بنگال نے کہا کہ ہر سیاسی جماعت کی اپنی ایک شناخت ہے ۔ کسی کو بھی اپنی شناخت پر فخر نہیں ہونا چاہئے ۔ ہر سیاسی جماعت کی اپنی علاقائی طاقت ہے ۔ اس کی قومی طاقت ہے اور ہر کسی کو دوسرے کا احترام کرنا چاہئے ۔ اس سوال پر کہ آیا ان کی پارٹی بھی کانگریس سے اتحاد کرنے کی مخالف ہے ممتابنرجی نے کہا کہ صحافیوں کو اپنے الفاظ ان کے منہ میں ڈالنے کی ضرورت نہیں ہے ۔ راہول گاندھی نے جو کچھ کہا ہے وہ اس سے پوری طرح اتفاق کرتی ہیں اور انہوں نے اپنے خیالات کا اظہار کیا ہے ۔ اس میں برائی کیا ہے ؟ ۔ انہوں نے کہا کہ راہول نے اپنے خیالات کا کل اظہار کیا ہے لیکن انہوں نے یہ نہیں پوچھا ہے کہ ہماری رائے کیا ہوگی ۔ ہم اپنی رائے کا اظہار کرینگے ۔ کانگریس کے کل ختم ہوئے پلینری سشن میں ایک سیاسی قرار داد منظور کرتے ہوئے یہ کہا گیا تھا کہ کانگریس پارٹی ہم خیال جماعتوں سے تعاون کیلئے ایک جامع رول ادا کریگی اور 2019 کے انتخابات میں آر ایس ایس ۔ بی جے پی کو شکست دینے کیلئے ایک مشترکہ قابل عمل پروگرام تیار کریگی ۔ ممتابنرجی نے کہا کہ وہ وفاقی محاذ کے قیام کیلئے کے سی آر کی کوششوں کی حمایت کرتی ہیں۔ چندر شیکھر راؤ کے ساتھ کولکتہ جانے والوں میں پارٹی جنرل سکریٹری کے کیشو راؤ ‘ ارکان پارلیمنٹ جتیندر ریڈی اور کے کویتا کے علاوہ ان کے سیاسی مشیر اور دوسرے عہدیدار بھی شامل تھے ۔ قبل ازیں کولکتہ ائرپورٹ پہونچنے پر چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ کا مغربی بنگال کے وزیر نے استقبال کیا اور سیکریٹریٹ پہونچنے پر چیف منسٹر ممتابنرجی نے ان کا استقبال کیا ۔ اس موقع پر ممتابنرجی کے کیشو راؤ سے کچھ بات چیت کرتی بھی دیکھی گئیں۔

TOPPOPULARRECENT