Tuesday , December 12 2017
Home / سیاسیات / ممتابنرجی کی حکومت پر امیت شاہ کی تنقید

ممتابنرجی کی حکومت پر امیت شاہ کی تنقید

ووٹ بینک کی سیاست کا الزام ۔ ترنمول کانگریس کی جوابی مذمت
ہوڑہ ( مغربی بنگال ) 25 جنوری ( سیاست ڈاٹ کام ) بی جے پی کی صدارت پر اپنے از سر نو انتخاب کے بعد امیت شاہ نے آج مغربی بنگال میں ممتابنرجی کی حکومت پر ووٹ بینک کی سیاست کرنے کا الزام عائد کیا اور یہ بھی کہا کہ اس حکومت نے بنگال کو قوم مخالف عناصر اور فرضی کرنسی ریاکٹ والوں کیلئے محفوظ پناہ گاہ بنادیا ہے ۔ امیت شاہ نے اس ضمن میں شردھا اور روز ویلی چٹ فنڈ اسکامس کا تذکرہ کیا اور کہا کہ مغربی بنگال میں چٹ فنڈ انڈسٹری ہی سب سے زیادہ ترقی کر رہی ہے ۔ امیت شاہ کی تنقید پر برسر اقتدار ترنمو ل کانگریس نے بھی جوابی وار کیا ہے اور کہا کہ بی جے پی کو ریاست میں کبھی بھی ترقی نظر نہیں آسکتی کیونکہ وہ ایک کے بعد دیگرے انتخابات میں مسلسل شکست کھاتی جا رہی ہے ۔ امیت شاہ نے ریاست میں اسمبلی انتخابات کا بگل بجاتے ہوئے کہا کہ ٹی ایم سی کی ووٹ بینک کی سیاست نے بنگال کو قوم مخالف عناصر کا مرکز بنادیا ہے ۔ یہاں مسلسل بم دھماکے ہو رہے ہیں اور اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ قوم مخالف عناصر اور فرضی کرنسی ریاکٹس کیلئے ریاست محفوظ پناہ گاہ بن گئی ہے ۔ در اندازی کی حوصلہ افزائی کی جا رہی ہے تاکہ ووٹ بینک کی سیاست کو فروغ مل سکے ۔ وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کی طرح امیت شاہ نے بھی مالڈا میں پیش آئے تشدد کے واقعات کیلئے ترنمول کانگریس کی حکومت کو ہی ذمہ دار قرار دیا ۔ انہوں نے کہا کہ یہاں پیش آئے واقعات سے ترنمول حکومت صحیح طرح سے نمٹ نہیں سکی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سارا ملک مالڈا کے تعلق سے فکرمند ہے اور چیف منسٹر کہتی ہیں کہ یہ کوئی بڑا مسئلہ نہیں ہے ۔

TOPPOPULARRECENT