Tuesday , January 23 2018
Home / سیاسیات / ممتا بنرجی کو مودی کیخلاف جارحانہ تنقید کرنی چاہیئے: امام

ممتا بنرجی کو مودی کیخلاف جارحانہ تنقید کرنی چاہیئے: امام

کولکتہ۔/18مارچ، ( سیاست ڈاٹ کام ) بی جے پی کے وزارت عظمیٰ کے امیدوار نریندر مودی پر زبردست تنقید کرتے ہوئے عالم دین مولانا برکت علی نے انہیں موقع پرست قرار دیا اور صدر ترنمول کانگریس ممتا بنرجی سے خواہش کی کہ اگر وہ اپنی سیکولر امیج کو ثابت کرنا چاہتی ہیں تو انہیں مودی پر زیادہ سے زیادہ تنقیدیں کرنا چاہیئے تھا۔ مولانا برکت علی شہر کی

کولکتہ۔/18مارچ، ( سیاست ڈاٹ کام ) بی جے پی کے وزارت عظمیٰ کے امیدوار نریندر مودی پر زبردست تنقید کرتے ہوئے عالم دین مولانا برکت علی نے انہیں موقع پرست قرار دیا اور صدر ترنمول کانگریس ممتا بنرجی سے خواہش کی کہ اگر وہ اپنی سیکولر امیج کو ثابت کرنا چاہتی ہیں تو انہیں مودی پر زیادہ سے زیادہ تنقیدیں کرنا چاہیئے تھا۔ مولانا برکت علی شہر کی ٹیپو سلطان مسجد میں امامت کے فرائض بھی انجام دیتے ہیں۔ انہوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہم جانتے ہیں کہ ممتا بنرجی ایک سیکولر قائد ہیں لیکن اگر وہ اپنے سیکولرازم کو ثابت کرنا چاہتی ہیں تو انہیں مودی کے تئیں ناقدانہ اور جارحانہ رویہ اختیار کرنا چاہیئے۔ جس طرح راہو گاندھی نے مودی پر تنقیدوں کا جارحانہ سلسلہ جاری رکھا ہے۔

ہم چاہتے ہیں کہ ممتا بنرجی بھی نریندر مودی کے خلاف کھلم کھلا بیانات دیں۔ امام صاحب کا یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب لوک سبھا انتخابات کے پیش نظر تمام سیاسی جماعتیں مسلمانوں کے28فیصد اقلیتی ووٹس کے حصول کیلئے انھیں ( مسلمانوں کو) راغب کرنے کوشاں ہیں کیونکہ یہ بات سبھی جانتے ہیں کہ مسلمانوں کے ووٹس ہی فیصلہ کن ثابت ہوتے ہیں۔ مولانا برکت علی نے مودی کی جانب سے مسلمانوں سے ووٹ طلب کرنے پر بھی ان پر زبردست تنقید کی اور کہا کہ نریندر مودی کو شرم آنی چاہیئے۔ وہ مسلمانوں سے آخر ووٹ کیوں طلب کررہے ہیں جبکہ مسلمانوں کی ٹوپی پہننے میں انہیں عار محسوس ہوتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT