Wednesday , November 22 2017
Home / Top Stories / منور رانا کا ٹی وی پروگرام میںساہتیہ اکیڈیمی ایوارڈکی واپسی کا فیصلہ

منور رانا کا ٹی وی پروگرام میںساہتیہ اکیڈیمی ایوارڈکی واپسی کا فیصلہ

نئی دہلی ۔ /18 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) مقبول اُردو شاعر منور رانا نے آج ٹیلی ویژن چیانل کے راست پروگرام میں ساہتیہ اکیڈیمی ایوارڈ اس کے ساتھ دی گئی ایک لاکھ روپئے نقد انعامی رقم واپس اور مستقبل میں کوئی بھی سرکاری ایوارڈ قبول نہ کرنے کا اعلان کیا ۔ ٹیلی ویژن چیانل پر دیگر مصنفین اور سیاستدانوں کے ساتھ جاری مباحثے میں حصہ لیتے ہوئے منور رانا نے کہا کہ انہوں نے بھی ایوارڈ واپس کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے ۔ کیونکہ ملک کی موجودہ صورتحال سے وہ بے حد مایوس ہیں ۔ منور رانا کہا کہ ان کا تعلق رائے بریلی سے ہے، یہاں ان کے شہر میں سیاست کا بازار ہمیشہ گرم رہتا ہے لیکن انہوں نے اس کی کبھی پرواہ نہیں کی ۔ انہوں نے کہا کہ مصنفین اور ادیبوں کو کسی ایک یا دوسری پارٹی سے مربوط کیا جاتا ہے ۔ کسی کا تعلق کانگریس سے اور کسی کا بی جے پی سے بتایا جاتا ہے ۔ وہ چونکہ ایک مسلمان ہیں اس لئے ان پر پاکستانی کا لیبل چسپاں کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں کئی علاقے ایسے ہیں جہاں برقی کنکشن تک نہیں لیکن یہاں مسلمانوں کا تعلق داؤد ابراہیم سے ضرور رہتاہے ۔ منور رانا کو 2014 ء میں ان کی کتاب ’’شاہ دبا ‘‘ پر ساہتیہ اکیڈیمی ایوارڈ دیا گیا تھا ۔ واضح رہے کہ اب تک 34 سے زائد مصنفین بشمول نین تارا سہگل نے اپنے ایوارڈس واپس کردئے ہیں۔ اس دوران تلگو مترجم کٹیانی ودھامے نے 2013 ء میں دیا گیا کیندریا ساہتیہ اکیڈیمی ٹرانسلیشن ایوارڈ واپس کرنے کا اعلان کیا ۔ اسی طرح مشہور مصنف کاشی ناتھ سنگھ نے ایوارڈس واپس کرنے والوں کے خلاف مرکزی وزراء کے غیرذمہ دارانہ بیانات پر شدید احتجاج کیا اور کہا کہ 2011 ء میں دیا گیا ایوارڈ اور نقد رقم و بطور احتجاج واپس کررہے ہیں ۔ کاشی ناتھ سنگھ  بنارس ہندو یونیورسٹی کے سابق پروفیسر ہیں ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT