Sunday , September 23 2018
Home / دنیا / منڈیلا کے سابق بااعتماد ساتھی کی وجہ سے جنوبی افریقہ میں نسلی تنازعہ

منڈیلا کے سابق بااعتماد ساتھی کی وجہ سے جنوبی افریقہ میں نسلی تنازعہ

کیپ ٹاؤن۔ 18؍جنوری (سیاست ڈاٹ کام)۔ نیلسن منڈیلا کے سابق پرسنل اسسٹنٹ زیلڈا لاگرینج نے جنوبی افریقہ میں آن لائن نسلی تنازعہ پیدا کرنے کے بعد معذرت خواہی کرلی۔ انھوں نے اپنے ایک تبصرہ میں تحریر کیا تھا کہ سفید فام افراد کا جنوبی افریقہ میں خیرمقدم نہیں کیا جائے گا۔ لاگرینج جنھوں نے گزشتہ سال ’گڈ مارننگ مسٹر منڈیلا‘ پروگرام کا آغ

کیپ ٹاؤن۔ 18؍جنوری (سیاست ڈاٹ کام)۔ نیلسن منڈیلا کے سابق پرسنل اسسٹنٹ زیلڈا لاگرینج نے جنوبی افریقہ میں آن لائن نسلی تنازعہ پیدا کرنے کے بعد معذرت خواہی کرلی۔ انھوں نے اپنے ایک تبصرہ میں تحریر کیا تھا کہ سفید فام افراد کا جنوبی افریقہ میں خیرمقدم نہیں کیا جائے گا۔ لاگرینج جنھوں نے گزشتہ سال ’گڈ مارننگ مسٹر منڈیلا‘ پروگرام کا آغاز کیا تھا جو مخالف نسل پرستی آنجہانی قائد کے ساتھ اپنے قریبی تعلقات کے تذکرہ پر مشتمل تھا، صدر جیکب زوما پر الزام عائد کیا تھا کہ سفید فاموں کے لئے جنوبی افریقہ میں تمام مسائل کے وہی ذمہ دار ہیں۔ انھوں نے اپنے تبصرہ میں چند ماہ میں بار بار تحریر کیا تھا کہ ہم ایک دوسرے کو نقصان پہنچائے بغیر بقائے باہم کے تحت زندگی کیوں نہیں گزار سکتے؟ جیکب زوما پر بیمار معیشت اور سرکاری بدانتظامی کے لئے سخت تنقید ہورہی ہے۔ انھوں نے برسراقتدار افریقی نیشنل کانگریس کے ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ کیپ ٹاؤن میں مسائل کا آغاز 1652ء میں ہوا تھا جب کہ جان وان ریبیک کیپ ٹاؤن پہنچا تھا۔ لاگرینج نے قدامت پرست رکن کی حیثیت سے یہ مسئلہ اُٹھایا تھا کہ افریقہ میں ولندیزی نوآبادکار پہنچے تھے، اس کے بعد سے ہی اس ملک میں نسل پرستی کے جذبات پیدا ہوئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT