Tuesday , December 19 2017
Home / ہندوستان / موبائیل کو آدھار سے مربوط نہ کرنے ممتاکا فیصلہ

موبائیل کو آدھار سے مربوط نہ کرنے ممتاکا فیصلہ

مرکز پر آمرانہ حکمرانی کا الزام ، بی جے پی کو اقتدار سے بیدخل کرنے کا عہد
کولکتہ ۔ 25 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) مغربی بنگال کی چیف منسٹر ممتابنرجی نے موبائیل فون کو آدھار سے مربوط کرنے کی مخالفت کرتے ہوئے آج کہاکہ حتیٰ کہ ان کے فون کا کنکشن مسدود کردیا جائے تو بھی وہ اس طریقہ کار پر عمل نہیں کریں گی۔ ترنمول کانگریس (ٹی ایم سی) سربراہ نے مرکزی حکومت پر ’’آمرانہ حکمرانی‘‘ کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ان کی پارٹی کو اب اپنارول ادا کرنا ہوگا تاکہ بی جے پی کو اقتدار سے بیدخل کیا جائے۔ ممتابنرجی نے ٹی ایم سی کی اساسی کمیٹی کے توسیعی اجلاس سے کہا کہ ’’وہ (مرکز) عوامی حقوق اور رازداری میں دخل اندازی کررہے ہیں۔ آدھار نمبر کو کسی کے موبائیل فون سے مربوط نہیں کرنا چاہئے۔ میں میرے موبائیل سے اپنا آدھار نمبر مربوط نہیں کروں گی خواہ میرا فون کنکشن ہی کیوں نہ مسدود ہوجائے‘‘۔ ممتابنرجی نے الزام عائد کیا کہ ’’وہ (مرکز) سارے ملک پر آمرانہ حکمرانی مسلط کررہی ہے اور چاہتا ہیکہ اس کے خلاف کوئی آواز نہ اٹھائے ورنہ انکم ٹیکس، انفورسمنٹ ڈائرکٹریٹ اور سی بی آئی کو استعمال کیا کرتا ہے‘‘۔ ممتابنرجی نے کہاکہ ٹی ایم سی کے تمام قائدین کو بھی جیل بھیج دیا جائے تو بھی وہ (ٹی ایم سی) اپنا احتجاج جاری رکھے گی۔ ’’ہم بزدل نہیں ہیں‘‘۔ محکمہ ٹیلی کام نے 23 مارچ کو اعلامیہ جاری کرتے ہوئے موبائیل نمبرس کو آدھار سے مربوط کرنے کی ہدایت کی تھی۔ ممتابنرجی نے کہا کہ ٹی ایم سی، دہلی اقتدار نہیں چاہتی لیکن ’’مرکز سے بی جے پی کو ہٹانے کیلئے ہمیں اپنا رول ادا کرنا ہوگا‘‘۔ ٹی ایم سی کی سربراہ نے جو نوٹ بندی کی پرزور مذمت کرتی رہی ہیں، الزام عائد کیا کہ’’یہ (نوٹ بندی) سب سے بڑا اسکام ہے‘‘۔ انہوں نے کہاکہ ’’اس (نوٹ بندی) کی تحقیقات ہونا چاہئے۔ منموہن سنگھ، یشونت سنہا ہر کوئی نوٹ بندی کی مذمت کررہے ہیں۔ کیا یہ سب کے سب غلط ہیں؟‘‘

TOPPOPULARRECENT