Friday , September 21 2018
Home / سیاسیات / مودی، مسلمانوں کے قتل عام کی اخلاقی ذمہ داری سے فرار نہیں ہوسکتے

مودی، مسلمانوں کے قتل عام کی اخلاقی ذمہ داری سے فرار نہیں ہوسکتے

نئی دہلی ۔ 19 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) این سی پی صدر شردپوار نے آج کہا کہ چیف منسٹر گجرات نریندر مودی سال 2002ء گجرات مسلم کش فسادات کیلئے اپنی اخلاقی ذمہ داری سے راہ فرار اختیار نہیں کرسکے۔ ایک عدالت کی جانب سے انہیں ’’کلین چٹ‘‘ دیئے جانے کے باوجود گجرات کے مسلمانوں کے قتل کا سچ برقرار رہے گا۔ شردپوار نے یہ بھی کہا کہ وہ عدالت کے فیصلہ کا

نئی دہلی ۔ 19 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) این سی پی صدر شردپوار نے آج کہا کہ چیف منسٹر گجرات نریندر مودی سال 2002ء گجرات مسلم کش فسادات کیلئے اپنی اخلاقی ذمہ داری سے راہ فرار اختیار نہیں کرسکے۔ ایک عدالت کی جانب سے انہیں ’’کلین چٹ‘‘ دیئے جانے کے باوجود گجرات کے مسلمانوں کے قتل کا سچ برقرار رہے گا۔ شردپوار نے یہ بھی کہا کہ وہ عدالت کے فیصلہ کا احترام کرتے ہیں، جس نے گجرات فرقہ وارانہ فسادات کیس میں بی جے پی وزارت عظمیٰ کے امیدوار کو بری کردیا تھا۔ عدالت نے جو کہا ہے اس کا ہم کو احترام کرنا ہوگا لیکن یہ بھی کہنتا ہوں کہ اگر میں ایک ریاست کا چیف منسٹر ہوں اور اس طرح کے (مسلم کش فسادات) جیسے واقعات رونما ہوتے ہیں تو میں اپنی ذمہ داری سے پہلوتہی نہیں کرسکتا۔

اخلاقی ذمہ داری سے راہ فرار اختیار نہیں کرسکتا۔ مرکزی وزیر زراعت شردپوار نے سی این این آئی بی این کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ نریندر مودی مسلم کش فسادات کی ذمہ داری قبول کریں یا نہ کریں مگر فسادات کے وقت وہ بھی چیف منسٹر تھے۔ اس بارے میں خصوصی طور پر سوال کرنے پر کہ آیا ان کا ایقان ہے کہ مودی کو اخلاقی ذمہ داری قبول کرنا چاہئے۔ جب گجرات میں فسادات بھڑک اٹھے تھے تو وہ چیف منسٹر تھے پوار نے جواب دیا کہ نریندر مودی کے بشمول کسی بھی چیف منسٹر کی یہ ذمہ داری ہوتی ہیکہ وہ عوام کا تحفظ کرے۔ اپنے قبل ازیں دیئے گئے بیان میں انہوں نے کہا تھا کہ نریندر مودی کو فرقہ وارانہ فسادات کے لئے طویل مدت تک ذمہ دار ٹھہرایا جانا چاہئے کیونکہ عدالت نے انہیں بری کردیا ہے۔ عدالت کے فیصلہ کا احترام کیا جانا چاہئے۔ نریندر مودی پر گجرات فسادات کے حوالہ سے حال ہی میں کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی نے بھی شدید تنقید کی تھی اور کہا تھا کہ مودی اپنے گناہوں سے نہیں بچ سکتے۔

TOPPOPULARRECENT