Sunday , November 19 2017
Home / سیاسیات / مودی۔ مفتی جگل بندی سے مذاکرات سبوتاج : عمر عبداللہ

مودی۔ مفتی جگل بندی سے مذاکرات سبوتاج : عمر عبداللہ

سرینگر۔/22اگسٹ ، ( سیاست ڈاٹ کام ) سابق چیف منسٹر جموں و کشمیر عمر عبداللہ نے مرکز اور ریاستی حکومت پر قومی سلامتی مشیر سطح کے مذاکرات کو سبوتاج کرنے کا الزام عائد کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے قومی سلامتی مشیر سرتاج عزیز سے ملاقات سے عین قبل علحدگی پسند قائدین کو حراست میں لے لیا گیا۔ انہوں نے ٹوئٹر پر لکھاکہ مفتی سعید۔ نریندر مودی جگل بندی۔ پہلے میں ( مودی ) کوحراست میں لونگا پھر تم ( مفتی سعید ) انہیں حراست میں رکھنا اور ہم دونوں ملکر اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ یہ مذاکرات بالکل نہ ہوں۔واہ! عمر عبداللہ نے چیف منسٹر جموں و کشمیر پر شدید تنقید کی اور کہا کہ سرینگر ۔ مظفر آباد راستہ کی کشادگی اور ہند ۔ پاک جنگ بندی کے ان کے دعوے جھوٹے ثابت ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر میں حکمرانی کیلئے پی ڈی پی اور بی جے پی کے مابین ’’ اتحاد کا ایجنڈہ ‘‘ آج بکھرچکا ہے۔ اس سے پہلے عمر عبداللہ نے ہند۔ پاک قومی سلامتی مشیر سطح کے مذاکرات کا مقام دہلی سے اسلام آباد منتقل کرنے کی تجویز پیش کی تاکہ پاکستان کے بلند بانگ دعوؤں کا موثر جواب دیا جاسکے۔
انہوں نے کہا کہ جب دونوں فریق مذاکرات کے سلسلہ میں اتنے سنجیدہ ہیں تو پھر پاکستان کے دعوؤں کو بے نقاب کرنے کیلئے ایک بہترین تجویز یہ ہے کہ مذاکرات کے مقام کو اسلام آباد تبدیل کردیا جائے۔

TOPPOPULARRECENT