Monday , November 19 2018
Home / Top Stories / مودی اور وسندھرا حکومت ہر شعبہ میں ناکام:کانگریس

مودی اور وسندھرا حکومت ہر شعبہ میں ناکام:کانگریس

جے پور3نومبر (سیاست ڈاٹ کام ) راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر اور کانگریس کے جنرل سکریٹری غلام نبی آزاد نے مرکز کی مودی اور راجستھان کی وسندھرا راجے حکومت پر بدعنوانی، عوام کے ساتھ وعدہ خلافی اور دھوکہ دہی کا الزام لگاتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں حکومتیں پوری طرح ناکام رہی ہیں۔مسٹر غلام نبی آزاد نے آج یہاں نامہ نگاروں سے کہا کہ وزیراعظم نریندر مودی کی قیادت والی مرکزی حکومت نے گزشتہ ساڑھے چار برسوں میں انتخابات کے وقت اور اس کے بعد عوام کے ساتھ کئے گئے وعدوں کو پورانہیں کیا اور دنیا میں سب سے زیادہ بدعنوانی کے واقعات بی جے پی کی زیر قیادت حکومت کے ان ساڑھے چار برسوں میں ہوئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کانگریس نے پارلیمنٹ اور اس سے باہر کئی ذرائع سے جنگی طیارے رافیل سودے معاملے ، کالا دھن، بدعنوانی سمیت کئی مسائل کو انہوں نے اٹھایا لیکن مودی حکومت نے کسی بھی سوال کا اب تک کوئی جواب نہیں دیا۔مسٹر غلام نبی آزاد نے مزید کہا کہ کانگریس نے رافیل معاملے میں جانچ کا مطالبہ کیا لیکن مسٹر مودی نے کوئی جواب نہیں دیا۔ انہوںنے کہا کہ ملک کی تاریخ میں پہلی مرتبہ ایسا ہوا ہے پارلیمنٹ میں وزیراعظم پر الزام لگے لیکن انہوں نے یہ بھی نہیں کہا کہ یہ غلط ہے ، نہ جانچ کی بات مانی اور نہ کوئی جواب دیا۔مرکزی جانچ بیورو ( سی بی آئی) کے ڈائرکٹر نے اپنی سطح پر جانچ شروع کردی تو انہیں رات میں ہی ہٹادیا گیا ۔انہوں نے کہا کہ کانگریس کی زیر قیادت حکومت کے وقت سی بی آئی اپنے حساب سے کام کرتی تھی لیکن اب تو قانون بنائے جارہے ہیں جو ان کے لئے فائدہ مند ہو۔ انہوں نے کہا کہ یہ حکومت پارلیمنٹ اور سپریم کورٹ کو رافیل کی قیمت نہیں بتائے گی تو کسے بتائے گی۔ وہ عدالت کو جھوٹ بتاسکتی ہے اس سے بڑا جھوٹ کیا ہوسکتا ہے ۔ا نہوں نے کہا کہ ملک میں ٹھیک نہیں چل رہا ہے ۔مسٹر غلام نبی آزاد نے کہا کہ مسٹر مودی گزشتہ 70 برسوں میں سب سے زیادہ چار برسوں میں دنیا میں گھومنے والے وزیراعظم ہیں۔ اچھی بات ہے کہ اس کا فائدہ ملک کو ملنا چاہئے لیکن ملک کے ہزاروں کروڑ روپے لے کر بیرون ملک فرار ہوگئے ۔
اور بلیک منی واپس لانے کی بات کرنے والے ایک بھی شخص کو بیرون ملک سے واپس نہیں لایا جاسکا۔ ملک گھومنے کا کیا فائدہ۔ انہوں نے کہا کہ میہول چوکسی، وجے مالیہ اور نیرو مودی کسان، مزدور سمیت سبھی کا پیسہ لے کر چلے گئے لیکن کچھ نہیں ہوا۔ انہوں نے کہا کہ بلیک منی تو واپس آئی نہیں بلکہ وہائٹ منی لے کر اور چلے گئے ۔

انہوں نے کہا کہ مسٹر مودی نے دس کروڑ لوگوں کو روزگار دینے کا وعدہ کیا تھا لیکن گزشتہ ساڑھے چار برسوں میں صرف بیس لاکھ لوگوں کو روزگار دیا گیا جبکہ اب تک 9 کروڑ لوگوں کو روزگار دیا جانا تھا اس طرح ریاست کی وزیراعلی وسندھرا راجے نے پندرہ لاکھ لوگوں کو نوکری دینے کا وعدہ کیا جبکہ دسمبر 2017 تک بے روزگاروں کی تعداد بیس لاکھ ہے ، اس سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ ریاست میں کسی کو بھی نوکری نہیں ملی۔

TOPPOPULARRECENT