Tuesday , November 21 2017
Home / Top Stories / مودی حکومت، میک ان انڈیا کے نام پر ہندوستان کو تباہ کررہی ہے

مودی حکومت، میک ان انڈیا کے نام پر ہندوستان کو تباہ کررہی ہے

دفاعی شعبہ میںایف ڈی آئی اصلاحات قومی سلامتی کیلئے خطرہ، روزگار اور معیشت پر منفی اثر پڑے گا، مختلف قائدین کی رائے

نئی دہلی ۔ 21 جون (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان کو ترقی دینے کے بجائے مودی حکومت اس ملک کو توڑپھوڑ کی نذر کررہی ہے۔ مختلف شعبوں میں صدفیصد ایف ڈی آئی اصلاحات کے نام پر ہندوستان کو تباہ کیا جارہا ہے۔ ایف ڈی آئی مسئلہ پر آج مختلف قائدین نے حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا۔ کانگریس کے سینئر لیڈر سابق وزیردفاع اے کے انٹونی نے کہا کہ دفاعی شعبہ میں ایف ڈی آئی کو 100 فیصد کی اجازت دینا قومی سلامتی کیلئے خطرہ ہے۔ پیر کے دن سے ہندوستان میں تقریباً شعبوں میں بیرونی سرمایہ کاروں کو 100 فیصد سرمایہ کاری کی اجازت دی گئی ہے۔ حکومت کی تیزی سے روبہ عمل لائی جانے والی فراخدلانہ پالیسیوں کے نتیجہ میں بہت کچھ نقصانات ہونے والے ہیں۔ ترنمول کانگریس کے ترجمان ڈیرک اوبرائن نے کہا کہ اس ایف ڈی آئی اصلاحات کا روزگار، معیشت پر منفی اثر پڑے گا اور ہندوستانی مارکٹ بھی متاثر ہوگی۔ میک ان انڈیا کے نام پر بریکنگ انڈیا (ہندوستان کو توڑ دینے) کا کام ہورہا ہے۔ ایس جے ایم لیڈر اشونی مہاجن نے کہا کہ وسائل کے اصول کو نرم بنانے کی پالیسی بہتر ہے اور یہ اندرون ملک معاشی شعبہ کا تحفظ کرے گی۔ کانگریس کے ایک اور لیڈر آنند شرما نے کہا کہ یو پی اے حکومت دوم کے دور میں ایف ڈی آئی کو 49  فیصد کی اجازت دی جاچکی ہے۔

سی سی ایس نے 49  فیصد سے زائد ایف ڈی آئی کی اجازت دی تھی اور یہی ہندوستان کی کمپنیوں کیلئے محفوظ عمل تھا مگر حکومت نے اس میں اصلاحات لاکر 100 فیصد ایف ڈی آئی کی اجازت دینے سے معاشی ابتری کا اندیشہ ہے۔ حکومت نے غذائی اشیاء میں 100 فیصد ایف ڈی آئی کی اجازت دی ہے۔ اس شعبہ کے تحت تجارتی راستوں کو وسعت دینا اور ای کامرس کے ذریعہ غذائی اشیاء کو ہندوستانی مارکٹ میں پھیلانا ہے۔ فارماسیوٹیکل شعبہ میں بھی حکومت نے 100 فیصد ایف ڈی آئی کی اجازت دی ہے۔ سرکاری فارما میں 74 فیصد ایف ڈی آئی ہوگی۔ شہری ہوا بازی میں بھی ایف ڈی آئی کو وسعت دے کر خودکار راستوں کے تحت 100 فیصد ایف ڈی آئی کی راہ ہموارکی گئی ہے۔ اس کے تحت ایرپورٹس کی تعمیر اور موجودہ ایرپورٹس کی تعمیر نو کے کام بھی انجام دیئے جائیں گے۔ دفاعی شعبہ میں 49 فیصد ایف ڈی آئی دی جارہی ہے۔ اب حکومت نے اس سے زائد کی منظوری دی ہے۔ اس کے تحت عصری ٹیکنالوجی کی مدد سے ہتھیار تیار کئے جائیں گے۔ ایف ڈی آئی کی اجازت سے ہندوستان میں مالیاتی سال 2015-16ء کے دورن سب سے زیادہ 55.46 بلین ڈالر کی سرمایہ کاری ہوتی ہے۔ سابق وزیردفاع انٹونی نے دفاعی شعبہ میں 100 فیصد ایف ڈی آئی کی مخالفت کی ہے اور خبردار کیا ہیکہ اس سے ملک کی آزادانہ خارجہ پالیسی سے سمجھوتہ کرنا پڑے گا۔ حکومت پر الزام عائد کرتے ہوئے کہ وہ امریکہ کے دباؤ میں آ کر کام کررہی ہے۔ انٹونی نے کہا کہ وزیراعظم نے حالیہ دورہ امریکہ اور اس ایف ڈی آئی میں تیزی سے تبدیلی کا راست تعلق ہے۔ اوباما اور مودی کا مشترکہ بیان کہ خلیجی ملکوں اور مغربی ایشیاء کی سلامتی کو یقینی بنایا جائے گا تو اس طرح کے بیان میں کوئی توازن نظر نہیں آتا۔

TOPPOPULARRECENT