Saturday , January 20 2018
Home / Top Stories / مودی حکومت آنے کے بعد ’’رشوت‘‘ کا زیرلب بھی تذکرہ نہیں

مودی حکومت آنے کے بعد ’’رشوت‘‘ کا زیرلب بھی تذکرہ نہیں

ڈاؤس 22 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) رشوت ستانی کے خاتمہ کیلئے کئے گئے اقدامات میں کامیابی ملنے کا پرزور اعلان کرتے ہوئے وزیر فینانس ارون جیٹلی نے آج کہاکہ مرکز میں نئی حکومت کے برسر اقتدار آنے کے بعد سے لفظ ’’کرپشن‘‘ کا زیرلب بھی تذکرہ نہیں ہورہا ہے۔ کرپشن نہ صرف تجارت کے لئے نقصان دہ ہے بلکہ اس کی وجہ سے ملک کا وقار اور اعتبار متاثر ہ

ڈاؤس 22 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) رشوت ستانی کے خاتمہ کیلئے کئے گئے اقدامات میں کامیابی ملنے کا پرزور اعلان کرتے ہوئے وزیر فینانس ارون جیٹلی نے آج کہاکہ مرکز میں نئی حکومت کے برسر اقتدار آنے کے بعد سے لفظ ’’کرپشن‘‘ کا زیرلب بھی تذکرہ نہیں ہورہا ہے۔ کرپشن نہ صرف تجارت کے لئے نقصان دہ ہے بلکہ اس کی وجہ سے ملک کا وقار اور اعتبار متاثر ہوتا ہے۔ اس بات کی تصدیق کرتے ہوئے کہ ہندوستان کو کرپشن کے باعث کئی شدید نقصانات سے دوچار ہونا پڑا ہے، وزیر فینانس جیٹلی نے کہاکہ وزیراعظم نریندر مودی زیرقیادت حکومت نے نئے قوانین کے ذریعہ اس طرح کے مسائل کو سختی سے نمٹا ہے۔ ارون جیٹلی یہاں بیرونی سرمایہ کاروں کے ایک گروپ کی جانب سے کئے جانے والے سوالات کا جواب دے رہے تھے۔ ان کا کہنا ہے کہ ایک یوروپی سی ای او نے ان سے کہا تھا کہ ان کی کمپنی نے رشوت کے باعث ہندوستان میں سرمایہ کاری کا منصوبہ ترک کردیا تھا۔ میں اس جنٹلمین کو مورد الزام نہیں ٹھہراتا جس نے یہ بیان دیا ہے۔ ہم تو کرپشن کی وجہ سے ہی بدنام ہوئے ہیں۔ اس رشوت ستانی سے نہ صرف تجارت پر منفی اثر پڑتا ہے بلکہ اس سے ہندوستان کا اعتبار بھی مشکوک ہوجاتا ہے۔ اس لعنت کو ختم کرنے کے لئے بے شمار کام کئے جارہے ہیں۔ وہ یہاں منعقدہ سی آئی آئی، بی سی جی کی ناشتہ پر ہوئی ملاقات کے دوران تقریر کررہے تھے۔ اس اجلاس کا عنوان تھا کہ وزیراعظم نریندر مودی ہندوستان کو کس اونچی سطح پر لے جانا چاہتے ہیں۔ ارون جیٹلی نے ہندوستان میں عالمی سطح کی سرمایہ کاری کی جانب زور دیتے ہوئے کہاکہ ہندوستان میں اب ایسے مواقع پیدا کئے جارہے ہیں کہ بیرونی سرمایہ کاری طمانیت کے ساتھ سرمایہ کاری کرسکیں۔ ہندوستان کو بہت جلد ایک حقیقی سرمایہ کاری کا مرکز بنایا جائے گا۔ ڈبلیو ای ایف کی سالانہ کانفرنس میں شریک مختلف ممالک کے سرمایہ کاروں اور حکومت کے نمائندوں کے اجلاس کے ایجنڈہ میں تھا کہ ہندوستان میں سرمایہ کاری کے کیا مواقع ہیں۔ اس خصوص میں سرمایہ کاروں نے مختلف اُمور کا جائزہ لیا ہے۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ ڈاؤس میں ہندوستان کی عظمت رفتہ بحال ہونے پر نئی حکومت کس حد تک اس کا سہرا اپنے سر لے گی، ارون جیٹلی نے کہاکہ مجھے بے حد خوشی ہے کہ اب ہندوستان ساری دنیا میں توجہ کا مرکز بن گیا ہے۔ کئی سال پہلے یہ رجحان چل رہا تھا لیکن اچانک اس میں گراوٹ درج کی گئی۔ اب مجھے خوشی ہورہی ہے کہ ہندوستان پھر ایک بار ساری دنیا کی توجہ کا مرکز بن گیا ہے۔ اور اس سال سے ساری دنیا کی سوچ میں خوشگوار تبدیلی آئی ہے۔ سرمایہ کاروں نے ہندوستان کی نئی پالیسیوں کو پسندیدگی کا مقام بخشا ہے۔ 30 سال بعد ہندوستان پھر ایک بار ساری دنیا میں اپنا لوہا منوارہا ہے۔ حکومت کو قطعی اکثریت حاصل ہونے کی وجہ سے وزیراعظم کی زیرقیادت یہ حکومت ٹھوس فیصلہ کرپارہی ہے۔ مختلف ملکوں نے بھی دیکھا ہے کہ یہ حکومت اصلاحات کا عملی مظاہرہ کررہی ہے لہذا ہندوستان سرمایہ کاری کے لئے درست مقام ہے۔ارون جیٹلی نے ڈبلیو ای ایف کے موقع پر باہمی ملاقاتوں کا سلسلہ جاری رکھا ہے۔

TOPPOPULARRECENT