مودی حکومت دستوری فرائض انجام دینے میں ناکام ہندوستانی مسلمان بیدار ہوجائیں

شریعت میں مداخلت ،مسلمانوں کی قوم پرستی کو مشکوک بنانے کی کوشش ، پٹنہ میں دین بچاؤ دیش بچاؤ کانفرنس

پٹنہ ۔ /15 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) مرکز کی بی جے پی حکومت میں مسلمانوں کے شرعی مسائل کو نشانہ بناتے ہوئے شرانگیزی کے واقعات میں اضافہ سے احساس عدم تحفظ پیدا ہوتا جارہا ہے ۔ مسلمانان ہند کے اندر پیدا ہونے والے ان احساسات کا حل تلاش کرنے کی غرض سے بہار کے دارالحکومت پٹنہ کے گاندھی میدان میں امارات شرعیہ پھلواری شریعت کے زیراہتمام ’’دین بچاؤ دیش بچاؤ‘‘ کانفرنس کا انعقاد عمل میں لایا گیا ۔ آج یہاں منعقدہ کانفرنس میں لاکھوں مسلمانوں نے شرکت کی اور اپنے ملی اتحاد کا مظاہرہ کیا ۔ اس کانفرنس میں مسلمانوں کی بڑی تعداد کی شرکت سے اندازہ ہورہا ہے کہ مسلمانان ہند اپنے عائلی ، دینی اور معاشرتی مسائل حل کرنے کے لئے مضطرب ہیں ۔ حالیہ برسوں میں یہ پہلا موقع ہے کہ مسلمانوں کی کثیر تعداد نے امارت شرعیہ کی آواز پر اکٹھا ہوکر اپنے اتحاد کا مظاہرہ کیا ہے ۔ مسلمان اپنے دین اور وطن کو عزیز رکھتے ہیں اور قوم پرستی کے ساتھ دین پرستی کا ثبوت دینے کے لئے سڑکوں پر اتر آئے ہیں ۔ اس تنظیم کے ذریعہ مسلمانوں کے عائلی دینی اور معاشرتی مسائل حل کرنا چاہتے ہیں ۔ امارات شرعیہ جھارکھنڈ و اوڈیشہ کا 1921 ء میں قیام عمل میں آیا تھا جس کا مقصد مسلمانوں کے شرعی مسائل کو حل کرنا ہے ۔ بورڈ کے چیف سکریٹری امیر شریعت مولانا ولی رحمانی نے کہا کہ مرکز کی مودی حکومت نے ملک کی باگ ڈور سنبھالنے کے بعد آئینی طریقہ سے حکومت نہیں چلایا ۔ دستوری فرائض انجام دینے میں ناکام رہی ہے ۔ یہ سمجھا جارہا ہے کہ مودی حکومت دستور ہند کے تحت حکمرانی کرے گی لیکن جیسے جیسے دن گزرتے گئے اس حکومت نے مسلمانوں کے شرعی امور میں مداخلت کرتے ہوئے ان کے ساتھ چھیڑ چھاڑ ، ظلم و زیادتی کا عمل شروع کیا ۔اس کانفرنس میں شریک مسلمانوں اور سارے ہندوستانی مسلمانوں کے سامنے یہ بات واضح طور پر رکھی گئی کہ اس وقت ملک پر مختلف قسم کے خطرات منڈلارہے ہیں ۔ ان میں دین اسلام کو بھی خطرہ لاحق ہے ۔ اب وقت آگیا ہے کہ تمام مسلمان ’’دین بچاؤ دیش بچاؤ‘‘ کے تحت یکجا ہوکر کام کریں ۔ اس کانفرنس کا مقصد کسی سیاسی مفادات کا حصول نہیں بلکہ مسلمانوں میں ایمانی جذبہ پیدا کرنا ایمانی بصیرت ، بلند حوصلہ ، ایمانی غیرت ، اسلامی حمیت اور حضور اکرم ﷺ کی پاکیزہ شریعت اور وطن سے محبت کے حوالے سے بیداری اور ان میں شعور و آگہی پیدا کرنا ہے ۔ کانفرنس میں ملک بھر سے ہزاروں مسلمانوں نے شرکت کی ۔ آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے تعاون سے منعقدہ اس کانفرنس میں مسلمانوں سے بیدار ہوجانے کی اپیل کی گئی ۔ آر ایس ایس ایجنڈہ پر کام کرتے ہوئے یہ حکومت مسلمانوں کے خلاف پالیسیاں بنارہی ہے ۔ گاندھی میدان پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے ۔ تقریباً 300 مجسٹریٹس ، 350 پولیس آفیسرس اور ہزاروں سکیورٹی جوان تعینات کئے ۔ ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ کمار روی نے بتایا کہ کانفرنس میں شریک ہونے والوں کے لئے ڈاکٹروں کی ٹیم کو بھی ایمبولینس کے ساتھ تیار رکھا گیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT