Monday , July 16 2018
Home / Top Stories / مودی حکومت کا تحریک عدم اعتماد کاسامنا کرنے سے فرار

مودی حکومت کا تحریک عدم اعتماد کاسامنا کرنے سے فرار

دوست جماعتوں سے ایوان میں احتجاج کروایا جا رہا ہے ۔ تلگودیشم لیڈر وائی رام کرشنوڈو کا بیان
امراوتی ( اے پی ) 20 مارچ ( پی ٹی آئی ) تلگودیشم پارٹی نے آج ایک بار پھر مرکزی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ مودی حکومت لوک سبھا میں تحریک عدم اعتماد کا سامنا کرنے سے فرار اختیار کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ سیاسی خود کشی ہے ۔ وزیر فینانس آندھرا پردیش و پولیٹ بیورو رکن تلگودیشم وائی رام کرشنوڈو نے کہا کہ تحریک عدم اعتماد کا سامنا کرنے سے فرار اختیار کرنا سیاسی خود کشی کرنے کے برابر ہے ۔ ایسی تحریک پر مباحث سے گریز کرنا پارلیمانی روایات سے انحراف ہے ۔ وائی رام کرشنوڈو پہلے آندھرا پردیش اسمبلی کے اسپیکر رہ چکے ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ اسپیکر لوک سبھا کو تحریک عدم اعتماد کو مسترد کرنے کا کوئی اختیار نہیں ہے جبکہ اس کی نوٹس ایوان میں پیش کردی گئی ہو۔ انہوں نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ اسپیکر کیلئے تحریک عدم اعتماد کو مسترد کرنا اور اس کیلئے ایوان میں نظم کے فقدان کو وجہ قرار دینا مناسب نہیں ہے ۔ یہ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ ایوان کو نظم و ضبط سے چلائے ۔ قبل ازیں آج دن میں اسپیکر لوک سبھا سمترا مہاجن نے کہا کہ وہ آج بھی ایوان میں تحریک عدم اعتماد پر مباحث کروانے سے قاصر ہیں کیونکہ ایوان میں نظم نہیں ہے اور ارکان کی جانب سے ہنگامہ آرائی کا سلسلہ جاری ہے ۔ وائی رام کرشنوڈو نے سوال کیا کہ لوک سبھا میں ایوان کے وسط میں پہونچ کر ہنگامہ کرنے والی آل انڈیا انا ڈی ایم کے پارٹی حکومت کی حلیف یا دوست نہیںہے ؟ ۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت ہی اپنی دوست جماعتوں سے ایسے احتجاج کو حوصلہ دے رہی ہے اور اس کا مقصد تحریک عدم اعتماد کا سامنا کرنے سے فرار اختیار کرنا ہے ۔ ایوان میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ اس بات کا ثبوت ہے ۔ اس دوران چیف منسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے کہا کہ بی جے پی نے آندھرا پردیش سے انصاف کرنے کے موقع کو چار سال سے مسلسل گنوادیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT