Thursday , December 14 2017
Home / سیاسیات / مودی حکومت کے دو سال، کل سے 21 روزہ تشہیری پروگرام

مودی حکومت کے دو سال، کل سے 21 روزہ تشہیری پروگرام

لوک سبھا، راجیہ سبھا کے این ڈی اے اراکین، بی جے پی کے عہدیداروں کو ملک بھر کے 200 منتخب مراکز پر مشغول رکھا جائیگا
نئی دہلی ۔ 24 مئی (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی زیرقیادت این ڈی اے حکومت جو اقتدار کے دو سال کی تکمیل کررہی ہے، اس نے حکومتی کارہائے نمایاں کو اجاگر کرنے کیلئے ملک بھر میں 200 ’’کلیدی مراکز‘‘ منتخب کر رکھے ہیں۔ ایک داخلی پیام کے مطابق بی جے پی 26 مئی سے 15 جون تک 21 روزہ ’’وکاس پروو‘‘ منائے گی، جس کے دوران 33 ٹیمیں 6 تا 7 منتخب ’’اہم مراکز‘‘ کا دورہ کرتے ہوئے حکومت کے کارہائے نمایاں کو اجاگر کریں گے۔ ہر ٹیم ایک کابینی وزیر، ایک مملکتی وزیر کے ساتھ ساتھ ایک قومی اور ایک ریاستی سطح کے پارٹی عہدہ دار پر مشتمل رہے گی۔ تمام وزراء اور شعبہ جاتی سربراہان کو ارسال کردہ داخلی نوٹ میں بیان کیا گیا ہیکہ اہم قانون سازیوں کو منظور نہ کرانے اور ترقی کی راہ میں رکاوٹیں پیدا کرتے ہوئے اپوزیشن کی خلل اندازی سے عوام کو واقف کرانا بھی ضروری ہے تاکہ عوام الناس مختصر مدت کے اندرون حکومت کے کارہائے نمایاں سے روشناس ہوجائیں حالانکہ سابقہ حکومتوں کی وجہ سے مشکلات درپیش ہیں اور ان کی خامیوں کو بھگتنا پڑ رہا ہے۔ مودی حکومت 26 مئی کو اقتدار کے دو سال کی تکمیل کرلے گی۔ عوام تک رسائی اور ذرائع ابلاغ کی توجہ حاصل کرنے کیلئے متعدد اقدامات کا منصوبہ ہے جن میں مرکزی حکومت کی مختلف بہبودی اسکیمات کے استفادہ کنندگان کے ساتھ سمیلن کا انعقاد، صنعتی اداروں، کسانوں اور خواتین کی تنظیموں، وکلاء اور ڈاکٹروں کی اسوسی ایشنس کے ساتھ غیرسیاسی اجلاسوں کا بھی انعقاد شامل ہے۔ علاوہ ازیں اس منصوبے میں پریس کانفرنسوں کا انعقاد، خصوصی انٹرویوز اور سرکاری پروگراموں کا اہتمام بھی شامل ہے۔  این ڈی اے سے تعلق رکھنے والے لوک سبھا ایم پیز سے کہہ دیا گیا ہیکہ اپنے پارلیمانی حلقہ کے تحت ہر اسمبلی گوشہ میں کم از کم دو دن اور ایک رات گزاریں اور عوام کے ساتھ ملاقاتوں کا اہتمام کرتے ہوئے شکایات کی یکسوئی کریں۔ ایسی میٹنگ کے دوران عوام کی آسانی کیلئے ترقیاتی تجویز کو آسان طریقے سے سمجھا جائے گا۔ اس موقع پر متعلقہ ویلفیر اسکیم کے بارے میں وزیراعظم کا پیام پس منظر میں دکھایا جائے گا۔ کٹ آؤٹس اور بیانرز کے ذریعہ اسکیم واری سطح پر ضروری وضاحتیں پیش کی جائے گی۔ ہر ایم پی اور ٹیم کے ارکان سے کہا گیا ہیکہ اس مہم کی جھلکیوں کو سوشل میڈیا کے ذریعہ پھیلائیں۔ این ڈی اے سے تعلق رکھنے والے راجیہ سبھا ایم پیز سے بھی اپنے انتخاب والی ریاست کے اضلاع کا دورہ کرنے کیلئے کہا گیا ہے۔ وہ اس مہم کے تحت 15 تا 20 یوم تمام متعلقہ اسمبلی حلقوں کا دورہ کرتے ہوئے حکومتی کارہائے نمایاں کو اجاگر کریں گے۔ اس کے علاوہ بی جے پی کے آٹھ چیف منسٹرز اور ایک ڈپٹی چیف منسٹر اپنے آبائی ٹاؤن کے اندرون کم از کم دو یوم اور بیرون ریاست دو یوم گذارتے ہوئے حکومت کے نمایاں پراجکٹوں، پالیسیوں اور بہبودی اسکیمات سے عوام کو واقف کرائیں گے۔ مزید یہ کہ پارٹی کے عہدیدار بھی ہر بلاک کا دورہ کرتے ہوئے مقامی میڈیا کو راغب کریں گے اور ان کے ذریعہ مختلف ویلفیر اسکیموں کے ساتھ استفادہ کنندگان کی تعداد اور متعلقہ پہلوؤں کی تشہیرکریں گے۔ اسٹیٹ پارٹی کے عہدیدار ہر منڈل کا دورہ کریں گے اور بڑے دیہات میں راتوں میں توقف کرتے ہوئے دیہاتیوں سے شخصی تال میل بڑھائیںگے۔ مودی حکومت اپنے کارہائے نمایاں کو اجاگر کرنے کیلئے کیبل ٹی وی کے بڑے پیمانے پر استعمال کا جائزہ بھی لے رہی ہے۔

قومی ترانہ کے وقت کھڑے نہ ہونے پر دو صحافیوں کو واپس کردیا گیا
سرینگر ۔ /24 مئی (سیاست ڈاٹ کام) جموں و کشمیر کے ایک فوجی پروگرام میں قومی ترانہ پڑھنے کے دوران کھڑنے نہ ہونے پر فوجی عہدیدار نے دو مقامی صحافیوں کو وہاں سے چلے جانے کی ہدایت دی ۔ یہ دو صحافی مقامی روزنامہ اخبارات سے وابستہ ہے ۔ کشمیر ریڈر کے نمائندے جنید نبی بزاز نے بتایا کہ فوج نے اس پروگرام کے کوریج کیلئے انہیں مدعو کیا تھا، حصہ لینے کیلئے نہیں۔ جس وقت قومی ترانہ پڑھا جارہا تھا وہ نیوز تیار کرنے میں مصروف تھے ۔ انہوں نے کہا کہ ایک فوجی نے ہمیں یہاں سے چلے جانے کیلئے کہا ۔

TOPPOPULARRECENT