Wednesday , October 17 2018
Home / Top Stories / مودی حکومت کے پاس عوام کی فلاح و بہبود کا کوئی ایجنڈا نہیں :ممتابنرجی

مودی حکومت کے پاس عوام کی فلاح و بہبود کا کوئی ایجنڈا نہیں :ممتابنرجی

کلکتہ19ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام )مغربی بنگال کی وزیرا علیٰ ممتا بنرجی اس وقت بنگال میں سرمایہ کاری کیلئے صنعت کاروں کو راغب کرنے کیلئے یورپ کے دو ممالک جرمن اور اٹلی کے دورے پرہیں ۔نے نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے مودی کی قیادت والی مرکزی حکومت کو عوام مخالف قرار دیتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت عوام کی فلاح وبہبود کیلئے کچھ بھی نہیں کررہی ہے۔ دوسری جانب اشتہارات پر کروڑوں روپے خرچ کررہی ہے۔ ملک کے بیشتر عوام مرکزی حکومت کے خلاف ہیں۔ اگلے انتخابات میں مودی کی شکست یقینی ہے۔ جرمن میڈیا سے بات کرتے ہوئے ممتا بنرجی نے کہا کہ اگلے سال ہونے والے پارلیمانی انتخابات مودی حکومت کے خلاف ریفرینڈم ہوگا۔ عوام یہ جاننے کی کوشش کررہی ہے کہ پانچ سالوں میں مودی حکومت نے کیا ہے۔ اگر مودی دوبارہ اقتدار میں آتے ہیں تو ملک بربادی کے دہانے پر آجائے گا۔عوام کو بھی احساس ہے کہ مودی حکومت کی واپسی کی صورت میں ملک کا متحد رہنا مشکل ہوجائے گا۔ وزیرا علیٰ نے کہا کہ یہ ریفرنڈم ہی ہوگا کیوں کہ ملک کا ہر ایک باشندہ بی جے پی کے خلاف ہے ۔2019میں مودی کو اقتدار سے بے دخل کرنے کیلئے ملک کے عوام متحد ہیں ۔اگر انتخابات بیلٹ پیپر سے ہوتے ہیں تو بی جے پی کو شکست سے کوئی نہیں بچا سکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگلے انتخابات کے بعد ملک کو مستحکم حکومت ملے گی اور اس سوال پر کہ مودی کے مقابلے میں وزیر اعظم کا امیدوارکون ہوگا؟ ممتا بنرجی نے کہا کہ اس کا فیصلے انتخابات کے بعد کیا جائے گا۔ باگری مارکیٹ میں آتشزدگی اورماجر ہاٹ فلائی اوور حادثہ سے متعلق ممتا بنرجی نے کہا کہ ہم حادثہ پر سیاست نہیں کرتے ہیں ۔ایسے وقت میں عوام کی زیادہ سے زیادہ مدد ہماری ترجحات ہوتی ہے ۔تاہم ممتابنرجی نے یہ مارکیٹ اورفلائی اوور ہمارے دور اقتدار میں تعمیر نہیں ہوئی ہے ۔کلکتہ میں سیکڑوں میں غیر قانونی عمارت ہیں جو کئی دہائی قبل تعمیر ہوئے ہیں ۔ممتا بنرجی نے کہا کہ باگری مارکیٹ کی انتظامیہ اور دوکانداروں نے رہنمااصول و قوانین کی پابندی نہیں کی ہے ۔فائر بریگیڈ عملہ کو عمارت میں داخل ہونے کیلئے کوئی جگہ نہیں تھا ۔اگر ان کے خلاف کارروائی کی جاتی تو یہ لوگ عدالت میں چلے جاتے ہیں ۔وزیرا علیٰ نے کہا کہ ہم بہر صورت کوشش کررہے ہیں ۔ماجر ہاٹ فلائی اوور سے متعلق وزیرا علیٰ نے کہا کہ فلائی اوور کسی بھی صورت میں تعمیر ہوگا۔ وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے کہا کہ بنگال ہمارا گھر ہے ، بنگال کی ترقی اور فلاح و بہبود کیلئے ہم مسلسل اپنے کام کو انجام دیتے ہیں ۔ہم نے گزشتہ سات سالوں میں بنگال کی صورت حال کو تبدیل کردیا ہے ۔اب ہمیں کئی ممالک سے دعوت آتے ہیں ۔مگر بنگال میں ہمارے پاس بہت ہی زیادہ کام ہوتے ہیں اس لیے ہم سال میں ایک ہی مرتبہ بیرون ملک کا دورہ کرتے ہیں اور اس کا مقصد بھی ریاست کی فلاح و بہبود ہے ۔ ممتابنرجی نے کہا کہ بنگال میں چھوٹے اور درمیانی درجے کے کارو بار کے معاملے میں ملک بھر میں سرفہرست ہے ۔یہاں کئی بڑی کمپنیوں نے سرماییہ کاری کی ہے ۔سیلکون ویلی نے راجر ہاٹ میں ہب قائم کیا ہے ۔بنگال گلوبل بزنس سمٹ میں کئی ممالک کے صنعت کار شریک ہوتے ہیں ۔ممتا بنرجی نے کہا کہ جرمن اور اٹلی کا دورہ بہت ہی کامیاب ثابت ہونے کی امید ہے ۔فرینکفرٹ کے بعدہم میلن جائیں گے اور ان دونوں جگہوں پر ہم صنعت کاروں سے ملاقات کریں گے ۔اس کے علاوہ ہم میلن کے گورنر سے بھی ملاقات کریں گے ۔ہمارے ساتھ بنگال کے کئی بڑے صنعت کار آئے ہیں ۔ان میں سے کئی افراد ان ممالک کی کمپنیوں کے ساتھ کام کرتے ہیں ۔
وزیر اعلیٰ نے کہا کہ جرمن مینوفیکچرنگ کیلئے پوری دنیا میں مشہور ہے ۔ہم جرمن کے صنعتکاروں کا بنگال میں استقبال کرنے کو تیار ہیں ۔ہم جرمن کے صنعتکاروں سے سیکھنے کی کوشش کررہے ہیں ۔بنگال میں چھوٹے اور بڑے کارخانے ہیں ۔بنگال کے چمڑے کے کارخانے ہیں ۔ہم بنگال کی شاندار ماضی کو واپس لانے کیلئے کوشش کررہے ہیں ۔ہماری کوشش ہے کہ بنگال کے جوانوں کوزیادہ سے روزگار کے مواقع ملیں ۔
وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے کہا کہ ”بنگال گلوبل بزنس سمٹ کا بہت ہی رول رہا ہے اور اس سمٹ کی وجہ سے بنگال میں بڑے بڑے صنعت کار سرمایہ کاری کیلئے رضامند ہوئے ہیں ۔کئی بڑے صنعتکاروں نے یہاں سرمایہ کاری کی ہے جس کی وجہ سے جوانوں کو روزگار ملیں ہے ۔یہ کوئی مذاق نہیں ہے کہ 35سے 40ممالک کے نمائندے اس سمٹ میں شریک ہوتے ہیں ۔
ممتا بنرجی نے کہا کہ بنگال کی اپوزیشن جماعتوں کا رویہ ہمیشہ سے منفی رہا ہے ۔یہ لوگ یہ نہیں بتاسکتے ہیں وہ حکومت سے کیا چاہتے ہیں ۔یہ لوگ اچھے کاموں میں ہماری کوئی مدد نہیں کرتے ہیں۔انہیں عوام کی فکرنہیں ہے مگر ہم ہمیشہ عوام کے فلاح و بہود کیلئے کام کرتے ہیں اورہ مارا مقصد عوام کو فائدہ پہنچانا ہے ۔عوام ہمارے لیے بہت ہی اہم اور ہم عوام کیلئے جد وجہد کرتے ہیں ۔وزیر اعلیٰ بنے کا مقصد صرف اقتدار نہیں تھا ۔ہم نے تبدیلی لانے کیلئے بنگال کے اقتدار کو اپنے ہاتھ میں لیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT