Monday , December 18 2017
Home / ہندوستان / مودی دورحکومت میں قبائیلی علاقوں کی ہمہ جہتی ترقی

مودی دورحکومت میں قبائیلی علاقوں کی ہمہ جہتی ترقی

قومی صدر بی جے پی امیت شاہ کا ادعا، سابقہ حکومتوں پر قبائیلیوں کو نظرانداز کرنے کا الزام
نئی دہلی ۔ 6 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) سابقہ حکومتوں کی زمین کھسکنے کی پالیسیوں کے نتیجہ میں قبائیلی علاقہ کے افراد ترقی میں پیچھے رہ گئے۔ بی جے پی کے قومی صدر امیت شاہ نے کہا کہ اب وقت آ گیا ہیکہ وہ لوگ ’’خود حکمرانی‘‘ کریں۔ اس کا مطلب یہ ہیکہ مودی حکومت میں ان کی ہمہ جہتی ترقی ہوسکتی ہے۔ اپنے بلاگ میں انہوں نے کہاکہ بی جے پی حکومت نے 2014ء میں قبائیلیوں کیلئے فلاحی اسکیموں کا آغاز کیا اور بعدازاں ایک قانون بنایا تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جاسکے کہ آمدنی کا 10 فیصد منافع معدنیات سے حاصل کیا جاسکے۔ معدنیات زیادہ تر ان علاقوں میں دستیاب ہیں جہاں درج فہرست قبائل سکونت رکھتے ہیں۔ یہ ان مقامات کو ترقی دینے پر خرچ کیا جائے گا۔ 9100 کروڑ روپئے سے زیادہ رقم ضلعی معدنی فاونڈیشن میں جمع کروائی گئی ہے جو اسی مقصد سے تشکیل دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ رقم مقامی علاقوں کی ترقی پر خرچ کی جائے گی۔ اپنی آبائی ریاست گجرات میں جہاں بی جے پی 20 سال سے زیادہ عرصہ سے برسراقتدار ہے، بجٹ کا 14.75 فیصد قبائیلیوں کی ترقی پر خرچ کیا جاتا ہے جن کی 14 اضلاع میں قابل لحاظ تعداد ہے۔ امیت شاہ نے کہا کہ بی جے پی حکومت کی کوششوں کی وجہ سے گجرات کے قبائیلی علاقے دیگر علاقوں کی بنسبت ترقی کے لحاظ سے پسماندہ نہیں ہیں۔ گجرات جاریہ سال کے اواخر میں اسمبلی انتخابات کا سامنا کرے گا۔ ملک کے باقی علاقوں کی طرح قبائیلی علاقے بھی 1947ء میں برطانویوں کے جانے کے بعد خود حکمرانی نہیں کررہے تھے، لیکن ان کیلئے بھی اب وقت آ گیا ہیکہ وہ حقیقی خودحکمرانی حاصل کریں۔ بی جے پی اور مودی حکومت اس جہت کی پابند ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس پس منظر میں حالیہ تین روزہ دورہ جھارکھنڈ جہاں انہوں نے قبائیلی افسانوی دیہات میں وقت گذارا اور مجاہد آزادی برسا منڈا کے کارناموں سے واقفیت حاصل کی۔ ریاست میں بی جے پی حکومت ہمہ جہتی ترقی کیلئے شہیدوں کے دیہات کیلئے ایک پروگرام تیار کرچکی ہے۔

جی ایس ٹی جمہوریت کیلئے اچھا :نائیڈو
نئی دہلی ۔ 6 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) نائب صدر جمہوریہ ہند ایم وینکیا نائیڈو نے آج کہا کہ معیشت اور جی ایس ٹی کے بارے میں تبادلہ خیال جاری رہنا چاہئے۔ انہوں نے پرزور انداز میں کہاکہ ایسے مباحث جمہوریت کیلئے ہمیشہ اچھے ہوتے ہیں۔ طویل مدتی بنیادپر جی ایس ٹی تمام کیلئے فائدہ بخش ثابت ہوگا۔ نائب صدر جمہوریہ نے کہاکہ ملک، اس کی معیشت اور جی ایس ٹی کے بارے میں مباحث جاری ہیں۔ یہ اچھی بات ہے۔ انہوں نے کہاکہ ٹیکنالوجی کی ریلوے اور میٹرو پراجکٹس میں ترقی کے موضوع پر بین الاقوامی چوٹی کانفرنس ہونے والی ہے۔ انہوں نے ایک ایسے دن اپنا خیال ظاہر کیاہے جبکہ جی ایس ٹی کونسل کا دہلی میں اجلاس منعقد ہورہا ہے۔
نائب صدر کہا کہ عوام کو سمجھنا چاہئے کہ ایک انقلابی تبدیلی اور اصلاح کیلئے ابتداء میں بعض رکاوٹیں درپیش ہوتی ہیںلیکن آخرکار وزیراعظم کے اصلاحات کا منصب کامیاب ہوگا اور حقیقی معنوں میں انقلابی تبدیلی آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ جی ایس ٹی ہندوستان کا انتہائی انقلابی ٹیکس اصلاحات اقدام ہے۔

 

TOPPOPULARRECENT