Thursday , December 14 2017
Home / سیاسیات / مودی سے تعلقات میں کشیدگی پر نتیش کا لب کشائی سے گریز

مودی سے تعلقات میں کشیدگی پر نتیش کا لب کشائی سے گریز

راہول کو صدر نامزد کرنا کانگریس کا داخلی مسئلہ ۔ اسکام کی تحقیقات سے بچنے این ڈی اے میں واپسی کی تردید : چیف منسٹر بہار
پٹنہ ۔ 16 اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) چیف منسٹر بہار نتیش کمار نے ‘ وزیر اعظم نریندر مودی سے تعلقات میں کشیدگی سے متعلق سوالات پر اظہار خیال سے آج گریز کیا ۔ واضح رہے کہ وزیر اعظم نے نتیش کمی کی جانب سے پٹنہ یونیورسٹی کو سنٹرل یونیورسٹی کا درجہ دینے کے مطالبہ کو تسلیم نہیں کیا تھا ۔ نتیش کمار جنتادل یو کے صدر بھی ہیں۔ ان سے ہفتہ وار لوک سمواد پروگرام کے بعد جب میڈیا نے اس تعلق سے سوال کیا تو نتیش کمار نے کہا کہ میڈیا اور لوگ جو چاہیں قیاس کرسکتے ہیں۔ بذات خود انہیں اس پرکچھ کہنا نہیں ہے ۔ پٹنہ یونیورسٹی کی 100 سالہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ہفتہ کو نتیش کمار نے کہا تھا کہ عوام کے جذباتر کو دیکھتے ہوئے اس یونیورسٹی کو مرکزی یونیورسٹی کا موقف دیا جانا چاہئے۔ تاہم کمار کی اس اپیل پر مودی نے کہا تھا کہ وہ پٹنہ یونیورسٹی اور دوسری تمام یونیورسٹیز کو یہ دعوت دینے آئے ہیں کہ وہ ان کو درپیش چیلنجس سے نمٹنے آگے آئیں۔ مودی نے اس موقع پر کہا تھا کہ وہ 20 یونیورسٹیز کو 10 ہزار کروڑ روپئے فراہم کرینگے تاکہ وہ عالمی سطح پر مسابقت کریں۔ مودی نے کہا تھا کہ اس اقدام سے یونیورسٹیز کو مرکزی موقف سے زیادہ فائدہ ہوسکتا ہے۔ کئی گوشوں میں مودی کے اس بیان کو نتیش کمار کے مطالبہ کا استرداد سمجھا جا رہا ہے اور یہ قیاس کیا جارہا ہے کہ دونوں قائدین کے مابین تعلقات میں کشیدگی پیدا ہوگئی ہے ۔ نریندر مودی ‘ نتیش کمار کی جانب سے عظیم اتحاد سے علیحدگی اور این ڈی اے میں واپسی کے بعد پہلی مرتبہ بہار آئے تھے ۔ علاوہ ازیں جنتادل یو کے ترجمان پون ورما نے گجرات اسمبلی انتخابات کی تواریخ کے اعلان پر بھی ایک ٹوئٹ کرتے ہوئے اختلافی رائے ظاہر کی تھی اور اس کو بھی جے ڈی یو اور بی جے پی کے تعلقات میں کشیدگی سے تعبیر کیا جا رہا ہے ۔ ان دونوں جماعتوں کے مابین چار سال بعد قربتیں بڑھی تھیں۔ اپوزیشن جماعتوں نے بھی گجرات اسمبلی انتخابات کی تواریخ کے عدم اعلان پر الیکشن کمیشن اور مرکزی حکومت کو نشانہ بنایا تھا اور اس ٹوئٹ کے ساتھ پون ورما بھی اپوزیشن کی صفوںمیں شمار کئے جانے لگے ہیں۔ اپوزیشن کا الزام ہے کہ بی جے پی کی جانب سے الیکشن کمیشن پر دباؤ ڈالا جا رہا ہے کہ وہ گجرات انتخابات کی تواریخ کے اعلان کو موخر کرے تاکہ گجرات میں عوام کو رجھانے سرکاری اسکیمات کا اعلان کیا جاسکے ۔ نتیش کمار نے تاہم اس تنازعہ سے خود کو الگ کیا ہے اور کہا کہ انہوں نے ابھی پون ورما کا ٹوئٹ نہیں دیکھا ہے اس لئے وہ اس پر کوئی تبصرہ نہیں کرسکتے ۔ راہول گاندھی کو کانگریس صدر بنائے جانے سے متعلق سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ وہ بہرحال عملی طور پر پارٹی لیڈر ہی ہیں۔

 

TOPPOPULARRECENT