Wednesday , September 26 2018
Home / Top Stories / مودی سے ڈرنا چھوڑ دیں، آر پار کی لڑائی کی تیاری کریں

مودی سے ڈرنا چھوڑ دیں، آر پار کی لڑائی کی تیاری کریں

11/10/2014 - Hyderabad: Shabbir Ali, Congress Party MLC - Deccan Chronicle Photo. [Telangana, Mug shot]

۔12% تحفظات
چیف منسٹر کو کانگریس کا مشورہ، ماضی کے بیانات یاد دلانے کی کوشش

حیدرآباد ۔ 20 ۔ فروری : ( سیاست نیوز ) : قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل محمد علی شبیر نے 12 فیصد مسلم تحفظات کے مسئلہ پر وزیراعظم نریندر مودی سے خائف ہونے کا چیف منسٹر کے سی آر پر الزام عائد کیا ۔ اگر مرکز کی جانب سے تحفظات کے بلز لوٹا دئیے گئے ہیں تو وعدے کے مطابق سپریم کورٹ سے رجوع ہونے اور جنتر منتر پر احتجاجی دھرنا منظم کرنے کا مطالبہ کیا ۔ آج سی ایل پی کے میڈیا ہال میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے محمد علی شبیر نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت نے ایک مرتبہ پھر تلنگانہ کے عوام کو مایوس کردیا ہے ۔ 16 اپریل 2017 کو اسمبلی و کونسل کا خصوصی اجلاس طلب کرتے ہوئے مسلمانوں کو 12 فیصد اور قبائلیوں کو 10 فیصد تحفظات بلز منطور کرتے ہوئے مرکز کو روانہ کردیا تھا ۔ میڈیا سے رپورٹس وصول ہورہی ہے کہ مرکز نے ان بلز کو صدر جمہوریہ کے پاس روانہ کرنے سے انکار کرتے ہوئے ریاست تلنگانہ کو واپس کرتے ہوئے حکومت کی سفارش کو مسترد کردیا ۔ کانگریس پارٹی چیف منسٹر کے سی آر سے مطالبہ کرتی ہے کہ وہ عوام سے وضاحت کریں کہ میڈیا کی رپورٹس صحیح ہے یا غلط ، کیوں کہ ریاست کے عوام بالخصوص مسلمانوں اور قبائلیوں میں مایوسی پیدا ہوگئی ہے ۔ محمد علی شبیر نے چیف منسٹر سے استسفار کیا کہ وہ آخر نریندر مودی سے خائف کیوں ہیں ۔ جب کہ ٹی آر ایس این ڈی اے کی حلیف بھی نہیں ہے ۔ انتخابی منشور میں ٹی آر ایس نے مسلمانوں اور قبائلی طبقہ سے جو وعدہ کیا تھا اس کو پورا کرنے کا وقت آگیا ہے ۔ تعجب اس بات کا ہے کہ مرکزی حکومت نے تحفظات سے متعلق بلز کو بڑی حقارت سے لوٹا دیا ہے اور چیف منسٹر خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔کے سی آر نے مرکز سے مثبت ردعمل حاصل نہ ہونے پر سپریم کورٹ جانے اور جنترمنتر پر احتجاجی دھرنا منظم کرنے کے علاوہ آر پار کی لڑائی لڑنے کا اعلان کیا تھا ۔ حکومت کو تلنگانہ سے مرکز کی ناانصافیوں اور حق تلفیوں کے خلاف واضح موقف اختیار کرنے کا وقت آگیا ہے ۔ چیف منسٹر اپنے ارکان پارلیمنٹ کو دونوں ایوانوں کی کارروائی روکنے کی ہدایت دیں ۔اس معاملے میں کے سی آر اگر کانگریس کی تائید چاہتے ہیں تو کانگریس پارٹی تحفظات کے معاملے میں مودی کے خلاف ٹی آر ایس کی مکمل تائید وحمایت کرنے تیار ہے ۔ محمد علی شبیر نے کہا کہ اس معاملے میں ٹی آر ایس کی خاموشی اس کے لیے مہنگی ثابت ہوگی ۔ ریاست میں جب بھی انتخابات منعقد ہوں گے کانگریس کی سونامی آئے گی جس میں ٹی آر ایس بہہ جائے گی ۔ قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل نے حکومت ہند کے مشیر محکمہ فینانس اروند سبرامنین کی چیف منسٹر سے ملاقات اور ریاست کے اسکیمات کی ستائش کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایسی تعریفوں اور ستائش کا کیا فائدہ جب کہ وہ ریاست کو مرکز سے زیادہ سے زیادہ فنڈز دلانے میں ناکام ہورہے ہیں ۔ سبرامنین ریاست تلنگانہ کی اسکیمات کو مرکز سے فنڈز دلائیں اور کالیشورم پراجکٹ کو قومی پراجکٹ قرار دینے کی سفارش کریں ۔ تقسیم آندھرا پردیش بل میں تلنگانہ سے جو وعدے کئے گئے ہیں اس پر عمل آوری کو یقینی بنائے ۔ ریاست کے بنکوں اور اے ٹی ایم میں فنڈز کی قلت ہے اس کو دور کرنے کے اقدامات کریں ۔۔

TOPPOPULARRECENT