Wednesday , September 19 2018
Home / کھیل کی خبریں / مودی صدر منتخب ، بی سی سی آئی نے آر سی اے کو معطل کردیا

مودی صدر منتخب ، بی سی سی آئی نے آر سی اے کو معطل کردیا

جئے پور ۔ 6 مئی ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) انڈین پریمیر لیگ کے سابق اور متنازعہ کمشنر للت مودی جوکہ خود پر تاحیات پابندی کے بعد بیرون ملک رہائش اختیار کرنے پر مجبور ہوئے تھے آج وہ راجستھان کرکٹ اسوسی ایشن ( آر سی اے ) کے صدر منتخب ہوئے ہیں لیکن ان کے صدر منتخب ہونے کے فوری بعد بی سی سی آئی نے آر سی اے کو ہی معطل کردیا ہے ۔ مودی نے توقعات کے مطابق آ

جئے پور ۔ 6 مئی ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) انڈین پریمیر لیگ کے سابق اور متنازعہ کمشنر للت مودی جوکہ خود پر تاحیات پابندی کے بعد بیرون ملک رہائش اختیار کرنے پر مجبور ہوئے تھے آج وہ راجستھان کرکٹ اسوسی ایشن ( آر سی اے ) کے صدر منتخب ہوئے ہیں لیکن ان کے صدر منتخب ہونے کے فوری بعد بی سی سی آئی نے آر سی اے کو ہی معطل کردیا ہے ۔ مودی نے توقعات کے مطابق آر سی اے کے انتخابات میں ایک شاندار کامیابی حاصل کی ہے ، جیسا کہ سپریم کورٹ نے آج انتخابات کے نتائج کے اعلان کے لئے ہری جھنڈی دکھا دی تھی جس کے بعد انتخابات کے اعلان میں مودی نے 24-5 ووٹوں کے ساتھ ایک شاندار کامیابی حاصل کی ہے جبکہ یہ انتخابات تقریباً 4 ماہ قبل منعقد ہوئے تھے ۔ انتخابات کا اعلان عدالت کی جانب سے منتخب مبصر جسٹس (سبکدوش ) این ایم کسلیوال نے یہاں آج کیا ہے۔ اعلان کے ساتھ ہی جیسا کہ امید کی جارہی تھی کہ بی سی سی آئی اور للت مودی کے درمیان ایک اور قانونی جنگ کا آغاز ہوگا ایسا ہی اعلان کے بعد ہوا ہے کیونکہ جہاں ایک جانب مودی نے آر سی اے انتخابات میں ایک شاندار کامیابی حاصل کی وہیں اس کامیابی کے فوراً بعد بی سی سی آئی نے آر سی اے پر ہی پابندی عائد کردی ہے ۔ صدر کے عہدہ کے لئے جملہ 33 ووٹوں میں للت مودی کے حریف امیدوار رام پال شرما کو صرف 5 ووٹ حاصل ہوئے ہیں ۔ آر سی اے کے انتخابات کے نتائج کے اعلان کے چند گھنٹوں میں ہی بی سی سی آئی نے آر سی اے کو غیرمعینہ مدت کیلئے معطل کرتے ہوئے ایک اڈھاک کمیٹی تشکیل دی ہے جوکہ بورڈ کے سرگرمیوں کو انجام دے گی ۔

بی سی سی آئی کے سکریٹری سنجے پٹیل نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ملک کی باوقار عدالت سپریم کورٹ کے اعلان مورخہ 30 اپریل 2014 ء جس میں کہا گیا ہے کہ اگر کوئی شخص بی سی سی آئی کے قانون قواعد و ضوابط کے خلاف کوئی عمل کرتا ہے تو اس کے خلاف بی سی سی آئی کو یہ اختیار رہے گا کہ وہ اُس کے خلاف کارروائی کرے ۔ اسی ضمن میں بی سی سی آئی نے اپنے قواعد کے مطابق آر سی اے کو معطل کرتے ہوئے اڈھاک کمیٹی تشکیل دی ہے ۔ بی سی سی آئی سے جاری کردہ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ملک میں کرکٹ کے مفادات کو ذہن میں رکھتے ہوئے اور اس کی بقاء کیلئے بی سی سی آئی نے یہ اقدام کیا ہے اور مستقبل میں اس قسم کے واقعات کے سدباب کے لئے سخت اقدامات کرتے ہوئے اڈھاک کمیٹی کا اعلان کردیا ہے

جس کی تشکیل عنقریب عمل میں آئے گی ۔ دریں اثناء بی سی سی آئی کی جانب سے آر سی اے پر عائد پابندی کے خلاف قانونی کارروائی کا حوالہ دیتے ہوئے آر سی اے کے نومنتخب ڈپٹی صدر محمود عابدی نے آج کہا ہے کہ بی سی سی آئی کے فیصلے کو کورٹ میں چیلنج کیا جائے گا ۔ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد جیسے ہی آر سی اے کے انتخابات کا اعلان کیا گیا اس کے چند گھنٹوں میں ہی بی سی سی آئی نے آر سی اے پر پابندی عائد کردی ہے اور ہم اس پابندی کے خلاف عدالت میں چیلنج کریں گے ۔ محمود عابدی نے مزید کہا کہ بی سی سی آئی کا فیصلہ صحیح نہیں ہے ، جس کے خلاف آر سی اے تمام ممکنہ قانونی کارروائی کو یقینی بنائے گا ۔ عابدی نے کہا کہ بی سی سی آئی کے فیصلے سے کافی مایوسی ہوئی ہے اور ہم اس فیصلے کے خلاف ہائیکورٹ میں اپنی درخواست داخل کریں گے ۔

TOPPOPULARRECENT