Monday , September 24 2018
Home / سیاسیات / مودی فرقہ پرستوں وکارپوریٹس کے امیدوار

مودی فرقہ پرستوں وکارپوریٹس کے امیدوار

بی جے پی اور آر ایس ایس نفرت کا ایجنڈہ : پرکاش کرت

بی جے پی اور آر ایس ایس نفرت کا ایجنڈہ : پرکاش کرت
وارناسی 17 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) نریندر مودی کو تمام کارپوریٹ اداروں اور فرقہ پرستوں کا مشترکہ امیدوار قرار دیتے ہوئے سی پی ایم کے جنرل سکریٹری پرکاش کرت نے آج کہا کہ تمام غیر کانگریسی جماعتوں کو چاہئے تھا کہ وہ نریندر مودی کے خلاف کوئی ایک متفقہ امیدوار نامزد کرتے ۔ کرت نے کہا کہ کچھ وقت پہلے کئی لوگوں نے ان سے کہا کہ مودی کے خلاف ایک مشترکہ امیدوار ہونا چاہئے جس کیلئے انہوں نے کہا کہ اگر تمام غیر کانگریسی جماعتیں اگر مشترکہ امیدوار نامزد کرنے تیار ہوجائیں تو ہم بھی اپنا امیدوار دستبردار کرنے تیار ہیں۔ ہم چاہتے ہیں کہ بی جے پی سے مقابلہ کیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ سیاسی جماعتیں اس مسئلہ پر کسی اتفاق رائے پر نہیں پہونچ سکیں۔

انہوںنے کہا کہ اب صرف بائیں بازو کا امیدوار ہی سرمایہ دار اور فرقہ پرست طاقتوں کے امیدوار کا مقابلہ کرسکتا ہے ۔ سی پی ایم نے ہیرا لال یادو کو وارناسی حلقہ سے امیدوار بنایا ہے جہاں سے بی جے پی کے نریندر مودی کے مقابلہ میں عام آدمی پارٹی کے کنوینر اروند کجریوال اور کانگریس کے اجئے رائے میدان میں ہیں ۔ مودی پر سرمایہ داروں اور فرقہ پرست طاقتوں کا مشترکہ امیدوار ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے مسٹر کرت نے ادعا کیا کہ یہ پہلی مرتبہ ہے کہ ہندوستان میں تمام کارپوریٹ ادارے ایک فرد واحد کی تائید کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اب تک کانگریس حکومت کارپوریٹس کے مفادات کیلئے کام کر رہی تھی تاہم اب کارپوریٹ ادارے مودی کی تائید میں اتر آئے ہیں کیونکہ ملک میں معاشی سست روی آگئی ہے ۔ 1991 کے انتخابات کی یاد دہانی کرواتے ہوئے کرت نے کہا کہ بائیں بازو نے راج کشور کو امیدوار بنایا تھا اور عین پولنگ سے قبل فسادات ہوگئے تھے ۔ اس سال بی جے پی نے پہلی مرتبہ وارناسی سے کامیابی حاصل کی تھی ۔ انہوں نے کہا کہ جب سے بی جے پی نے وارناسی سے نریندر مودی کو امیدوار بنایا ہے اس نے یہاں اپنے فرقہ پرست ایجنڈہ پر کام شروع کردیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT