Wednesday , October 17 2018
Home / Top Stories / مودی نے ترقی کا ایجنڈہ فراموش کردیا ، صرف خود سے متعلق باتیں

مودی نے ترقی کا ایجنڈہ فراموش کردیا ، صرف خود سے متعلق باتیں

’’پہلے رائٹ ٹرن پھر لیفٹ ٹرن اور اب بریک ہی لگا دیا، کوئی موضوع باقی نہیں رہا ‘‘: راہول گاندھی

ڈاکور۔ 10 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی نے وزیراعظم نریندر مودی پر گجرات کی انتخابی مہم میں ترقی کے ایجنڈہ کو ترک کرتے ہوئے صرف اپنے ہی بارے میں باتیں کرنے کا الزام عائد کیا۔ راہول نے رنچوڑ رائے جی مندر کے درشن کے ساتھ دوسرے مرحلیل کی انتخابی مہم کا آغاز کیا۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ مودی وقفہ وقفہ سے اپنے انتخابی موضوعات تبدیل کرتے رہے ہیں اور اب ان کے پاس بدلنے کیلئے کچھ باقی نہیں رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے نرمدا کے مسئلہ پر اپنی مہم کا آغاز کیا تھا جس کے چار پانچ دن بعد عوام نے کہا کہ انہیں اب دریا سے پانی نہیں مل رہا ہے‘‘۔ چنانچہ بی جے پی نے ’’رائٹ ٹرن‘‘ لے لیا اور کہا کہ نرمدا کے موضوع پر الیکشن نہیں لڑا جاسکتا، چلو اب دیگر پسماندہ طبقات (او بی سی) کے موضوع پر انتخاب لڑتے ہیں، لیکن او بی سی افراد نے کہا کہ بی جے پی حکومت نے ان کے لئے کچھ نہیں کیا تو انہوں (بی جے پی) نے ایک بڑا ’’لیفٹ ٹرن‘‘ لیتے ہوئے ترقی جلوس نکالا اور اپنی 22 سالہ حکمرانی میں ترقی کی بات کی لیکن یہ بھی نہیں چل سکا۔ راہول نے کہا کہ کل انہوں نے وزیراعظم کے تقریر کی سماعت کی جس میں مودی جی تقریباً 90% وقت تک مودی جی کے بارے میں ہی باتیں کرتے رہے، یعنی پہلے ’رائٹ‘ پھر ’لفٹ‘ اور پھر ’بریک‘ ہی لگا دیئے گئے‘‘۔ راہول نے کہا کہ ’’یہ انتخابات نہ تو مودی کے بارے میں ہیں اور نہ ہی میرے بارے میں ہیں اور نہ یہ (انتخابات) کانگریس یا بی جے پی کے بارے میں ہیں بلکہ یہ انتخابات تو گجرات کے عوام کے مستقبل کے بارے میں ہیں‘‘۔ راہول گاندھی نے بشمول پٹیلوں، دلتوں، آنگن واڑی ورکرس اور دیگر کئی طبقات کے ایجی ٹیشنوں پر وزیراعظم نریندر مودی کی خاموشی کا سوال اٹھایا اور کہا کہ سچائی بی جے پی کو پکڑ چکی ہے اور اب وہ (بی جے پی) جہاں بھی جائیں گی، یہ مسائل ان کا پیچھا کریں گے۔ راہول نے کہا کہ 60 تا 70 منٹ مودی جی بس اپنے ہی بارے میں بولتے رہے، ’’نوٹ بندی‘‘ اور ’’گبر سنگھ ٹیکس‘‘ کے بارے میں ایک لفظ بھی نہیں کہا۔ میں ایک چائے کی دوکان میں بیٹھا تھا، چائے والے نے کہا کہ راہول جی، جی ایس ٹی سے پہلے میں 100 روپئے کماتا تھا لیکن اب 50 روپئے ہی کما پا رہا ہوں۔ انہوں (مودی) نے میرا 50% نقصان کیا ہے‘‘۔

TOPPOPULARRECENT