Saturday , September 22 2018
Home / سیاسیات / مودی کیلئے وارانسی میں مسلم راشٹریہ منچ کی مہم

مودی کیلئے وارانسی میں مسلم راشٹریہ منچ کی مہم

ودودرہ 6 مئی (سیاست ڈاٹ کام) مسلم راشٹریہ منچ (ایم آر ایم) کی گجرات یونٹ کے کم سے کم 75 ارکان کل یہاں سے روانہ ہوئے جو اترپردیش کے حلقہ لوک سبھا وارانسی پہونچ کر بی جے پی وزارت عظمیٰ کے امیدوار نریندر مودی کے حق میں ووٹ دینے کیلئے اقلیتی طبقہ کے رائے دہندوں سے اپیل کریں گے۔ حلقہ ورانسی سے نریندر مودی مقابلہ کررہے ہیں جہاں 12 مئی کو رائے

ودودرہ 6 مئی (سیاست ڈاٹ کام) مسلم راشٹریہ منچ (ایم آر ایم) کی گجرات یونٹ کے کم سے کم 75 ارکان کل یہاں سے روانہ ہوئے جو اترپردیش کے حلقہ لوک سبھا وارانسی پہونچ کر بی جے پی وزارت عظمیٰ کے امیدوار نریندر مودی کے حق میں ووٹ دینے کیلئے اقلیتی طبقہ کے رائے دہندوں سے اپیل کریں گے۔ حلقہ ورانسی سے نریندر مودی مقابلہ کررہے ہیں جہاں 12 مئی کو رائے دہی ہوگی۔ ایم آر ایم گجرات یونٹ کے چیف کنوینر عبدالغنی عبداللہ بھائی قریشی نے گزشتہ روز وارانسی روانہ ہونے سے قبل پی ٹی آئی سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ ’’وارانسی کے 3.48 لاکھ مسلم رائے دہندوں تک رسائی اور مرکز میں بی جے پی کے حصول اقتدار میں مدد کے طور پر مودی کو ووٹ دینے کی درخواست کرنا ہمارا منصوبہ ہے‘‘۔

اُنھوں نے کہاکہ مودی کیلئے سرگرم مہم چلانے کے مقصد سے گودھرا، ودودرہ، دوہاڈ، نوساری، ولساڈ، احمدآباد اور دیگر مقامات کے ایم آر ایم ارکان وارانسی روانہ ہورہے ہیں۔ عبدالغنی قریشی نے کہاکہ گجرات کے ایم آر ایم ارکان ورانسی کے مسلمانوں پر زور دیں گے کہ وہ ووٹ بینک سیاست کا شکار نہ بنیں۔ ورانسی کے مسلمانوں کو بتایا جائے گا کہ 2001 ء میں نریندر مودی کے برسر اقتدار آنے کے بعد سے گجرات کی ترقی کے ماڈل سے اس ریاست کے مسلمانوں کو کس طرح فائدہ پہونچ رہا ہے اور اس بنیاد پر مودی کو ووٹ دینے کی اپیل کی جائے گی‘‘۔ 2002 ء میں مابعد گودھرا واقعات سے پھوٹ پڑنے والے فسادات کے ضمن میں مودی کے خلاف عائد الزامات کے بارے میں گجرات اقلیتی بورڈ کے سابق صدرنشین عبدالغنی قریشی نے کہاکہ ’’اگر مودی ان فسادات میں ملوث ہوتے تو گجرات پولیس 1200 راؤنڈس فائرنگ نہ کرتی اور 200 فسادیوں کو ہلاک نہ کیا جاتا تھا۔

یہ عدالت نے اُنھیں (مودی کو) بری کردیا ہے اور گجرات میں گزشتہ 13 سال کے دوران فساد کا ایک واقعہ بھی رونما نہیں ہوا‘‘۔ اُنھوں نے کہاکہ ’’مودی کو ملک کا آئندہ وزیراعظم بنانے کیلئے ایم آر ایم نے ملک گیر مہم شروع کی ہے جس کے ایک حصہ کے طور پر ہمارے ورکرس شعور بیداری پروگراموں کے ذریعہ گھر پہونچ کر مہم چلارہے ہیں اور بڑے جلسے منعقد کئے جارہے ہیں‘‘۔ عبدالغنی قریشی نے کہاکہ ’’ملک کے مسلمان آزادی کے بعد سے ان کے ساتھ روا رکھے جانے والے سلوک کے بارے میںسوچ رہے ہیں۔ مسلم برادری میں قیادت کا فقدان ہے اور ایم آر ایم اس طبقہ کو ترقی دلانے میں مدد کرے گی۔

TOPPOPULARRECENT