مودی کی سدارامیا کے آبائی قصبہ میں اُن پر تنقید

کانگریس بھی تنقید کا نشانہ ، کرناٹک میں اندرون 15 دن وزیراعظم کا دوسرا انتخابی جلسہ
میسورو ۔19 فبروری ۔(سیاست ڈاٹ کام) چیف منسٹر کرناٹک سدارامیا پر جعلسازی کیلئے اپنی تنقید جاری رکھتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ نئے اسکامس ، بدعنوانیوں کے الزامات اور تازہ الزامات اُن کے دورے اقتدار میں ہر روز منظرعام پر آرہے ہیں ۔ لڑائی کو سدارامیا کے آبائی وطن تک پہونچاتے ہوئے نریندر مودی نے ایک جلسہ عام سے خطاب کیا اور کہا کہ وہ قبل ازیں اپنے انتظامیہ کو اس ’’10 فیصد حکومت ‘‘ کے بارے میں خبردار کرچکے ہیں ، لیکن بعد ازاں اُنھیں علم ہوا کہ اطلاعات درست نہیں تھیں اور حقیقت اس سے کہیں زیادہ ہے۔ اپنے دوسرے جلسۂ عام میں جو پندرہ دن کے اندر انتخابات والی ریاست کرناٹک میں منعقد کیا گیا تھا ، مودی نے سدارامیا کو بدعونانیوں کے سلسلے میں تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ کیا آپ کرناٹک کی بدعنوانیوں کے لئے حکومت کا ایک کمیشن چاہتے ہیں یا ایک مقتدی حکومت ۔ اُنھوں نے بنگلورو میں ’’10 فیصد کمیشن کا کاروبار ‘‘ کے زیرعنوان تبصرہ کیا تھا جس پر کئی لوگ برہم ہوگئے تھے ۔ بعض نے اُنھیں ٹیلی فون بھی کیا تھا ،بعض نے پیغامات روانہ کئے تھے اور دیگر نے بے چینی ظاہر کی تھی ۔ انھوں نے کہاتھا کہ یہ اطلاعات درست نہیں ہے ۔ یہ 10فیصد نہیں بلکہ اس سے کہیں زیادہ ہے ۔ روزانہ ایک نیا اسکام ، ایک نئی بدعنوانی اور ایک نیا الزام کسی نہ کسی لیڈر کے خلاف منظرعام پر آرہا ہے ۔ حکومت کے کوئی نہ کوئی پروگرام پر کرناٹک کے کسی نہ کسی حصہ میں الزام عائد کیا جاتا ہے ۔ مودی نے کہاکہ مرکزی حکومت کے فنڈس مختلف اسکیموں کے لئے ہیں اور یہ اسکیمیں غریب اور اوسط طبقہ کے عوام کے لئے ہیں۔ لیکن ریاست میں ان کا مناسب استعمال نہیں ہورہا ہے ۔ انھوں نے کہاکہ سیاسی وابستگی کو ترجیح دی جاتی ہے ،(دہلی ہائی کمان کو ) خوش رکھا جاتاہے اور اُن کی ہر ضرورت کی تکمیل کی جاتی ہے تاکہ وہ خوش رہیں۔ وہ پارٹی کے عہدیداروں کو خوش رکھتے ہیں ، چنانچہ اُن کی نشستیں محفوظ ہیں ۔ انھوں نے کہاکہ کوئی بھی ریاست اس طرح کارکرد نہیں رہ سکتی ۔انھوں نے کہاکہ انھیں عوام کی پرواہ نہیں ہے اور نہ اُن کے جذبات و احساسات کی ہے۔ ایسی حکومتیں ، ایسی قیادت اور ایسی شخصیت کبھی بھی جمہوری نظام کو مستحکم نہیں کرسکتی ۔ سدارامیا پر طنز کرتے ہوئے مودی نے کہاکہ میسورو ایسی سرزمین ہے جس نے سماجی اتحاد کا پیغام پھیلایا ہے ۔ میسورو طاقت اور جوانی کی سرزمین نہیں ہے ۔ انھوں نے کہاکہ بلکہ یہ ایک ایسے شخص کی سرزمین ہے جو لوگوں کو برائی کی راہ سے روکنا چاہتا تھا ۔ انھوں نے خود کو عوام سے وابستہ کرتے ہوئے کہا کہ میسورو نے انھیں جو کچھ سبق دیا ہے ، اُسے مکمل طورپر بُھلادیا گیا ہے اور پورا کرناٹک تباہی کی راہ پر ہے ۔ مودی نے کانگریس پر بھی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وہ بار بار جھوٹ بولتی ہے اور عوام سے کہتی ہے کہ اپنا ریکارڈ درست کرلیں ۔

TOPPOPULARRECENT