Saturday , September 22 2018
Home / دنیا / مودی کے 13 ویں ترمیم اطلاق پر ہندوستان میں ملاجُلاء ردعمل

مودی کے 13 ویں ترمیم اطلاق پر ہندوستان میں ملاجُلاء ردعمل

کولمبو ۔ 16 مارچ۔(سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی کے دریعہ 13 ویں ترمیم کی جلد از جلد اور مکمل طورپر اطلاق اور اُس سے بھی آگے جاتے ہوئے تامل اقلیتوں کے ساتھ مصالحت کے موضوع پر لب کشائی کرنے کے بعد جو انھوں نے اپنے حالیہ دورۂ سری لنکا کے دوران کیا تھا ، سیاسی حلقوں سے ملا جُلا ردعمل سامنے آیا ہے۔ نہ صرف تامل باشندوں بلکہ سب کیلئے ایک ایسی زندگی جس میں انصاف ہو ، مساوات ہو ، امن ہو اور عزت و توقیر ہو ، وزیراعظم نریندر مودی نے کہاکہ مندرجہ بالا تمام اقدار کے حصول کیلئے 13 ویں ترمیم کے عاجلانہ اور مکمل اطلاق کیا جانا ضروری ہے ۔ مذکورہ ریمارکس مودی نے سری لنکائی صدر میتھری پالا سری سینا سے ملاقات کے دوران کئے تھے ۔ اس موقع پر ڈیموکریٹک پیپلز فرنٹ (DPF) کے متوگنیشن نے کہاکہ سری لنکا نے مسئلہ کی یکسوئی کیلئے 13 ویں ترمیم کو قبول کیا ہے ۔ گنیشن نے جو عام طورپر غیرشمالی مشرقی تامل شہریوں کی نمائندگی کرتے ہیں ، نریندر مودی سے گزشتہ ہفتہ ملاقات کی تھی ۔ دوسری طرف ایک سنہالا سیاستداں وکرم بابو کرونا رتنے ہیں جو مارکسسٹ سوشلسٹ نظریات کے حامل ہیں ، نے کہا مودی نے جو کچھ بھی کہا ہے وہ بالکل بروقت ہے ۔ ہماری پارٹی نے 13 ویں ترمیم کی اُس وقت بھی تائید کی تھی جب 1987 ء میں اسے متعارف کیا گیا تھالہذا ہمارا ایقان ہے کہ یہی مسئلہ کا حل ہوسکتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT