Sunday , December 17 2017
Home / سیاسیات / موروثی سیاست پر راہول کے تبصرہ سے نتیش کمار متفق نہیں

موروثی سیاست پر راہول کے تبصرہ سے نتیش کمار متفق نہیں

پٹنہ 18 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) چیف منسٹر بہار نتیش کمار نے آج راہول گاندھی کے اِس ریمارک سے عدم اتفاق کیاکہ ہندوستان میں موروثی سیاست اور حکمرانی زندگی کی حقیقت ہے، اور کہاکہ وہ اِس طرح کی سیاست کے شخصی طور پر مخالف ہیں، جو کانگریس کی ’پیداوار‘ ہے۔ نتیش کمار نے عوام سے ملاقات کے اپنے ہفت روزہ پروگرام کے بعد میڈیا والوں سے گفتگو میں کہاکہ راہول کا گزشتہ ہفتہ امریکہ میں تبصرہ کہ موروثی نظام ہندوستان میں عام بات ہے، اِس ملک کے لئے ناقابل قبول ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ خاندانی حکمرانی کو ہندوستانی سیاست میں قابل قبول بتانا صحیح نہیں ہے۔ ایسا کہنا کہ کوئی شخص جو سیاسی خاندان میں جنم لے اُسے حکمرانی کا اختیار یا حق حاصل ہوجاتا ہے، غلط بات ہے۔ اگر تقابل کیا جائے کہ معلوم ہوگا کہ اعلیٰ منصبوں پر موروثی حکمرانوں سے تعلق نہ رکھنے والوں نے بہتر کارگذاری پیش کی ہے۔ نتیش کمار نے مختلف سوالات کے جواب میں کہاکہ کانگریس نے ہندوستان میں موروثی سیاست کی داغ بیل ڈالی جو دھیرے دھیرے دیگر پارٹیوں تک پھیل گئی۔ ’’شخصی طور پر میں موروثی سیاست کا مخالف ہوں‘‘۔ اُنھوں نے کہاکہ بہار میں ایسی کئی مثالیں ہیں جیسے لالو پرساد کی آر جے ڈی لیکن نہ اُن (نتیش کمار) کا بیٹا اور نہ اُن کی فیملی سے کوئی دیگر فرد سیاست میں ہے۔ 12 ستمبر کو برکلی کی یونیورسٹی آف کیلیفورنیا میں خطاب کرتے ہوئے راہول نے کہا تھا ، ’’ہندوستان میں زیادہ تر پارٹیوں کے ساتھ ایک مسئلہ ہے۔ مسٹر اکھلیش یادو موروثی سیاست دان ہیں۔ مسٹر اسٹالن (ڈی ایم کے میں ایم کروناندھی کے فرزند) موروثی سیاستدان ہیں۔ حتیٰ کہ ابھیشک بچن بھی موروثی ایکٹر ہیں۔ لہذا ہندوستان میں ایسا ہی کچھ ہے۔ اِس لئے مجھے تنگ نہ کیجئے کہ میرا تعلق بھی موروثی سیاست سے ہے کیوں کہ ہندوستان میں معاملہ ہی کچھ ایسا ہے‘‘۔ ملک میں مقننہ جات کے بہ وقت انتخابات کے موضوع پر نتیش نے کہاکہ لوک سبھا، ریاستی اسمبلیوں، شہری مجالس مقامی اور پنچایتوں کے بہ وقت الیکشن ہونا بہتر رہے گا۔

TOPPOPULARRECENT